یورپی سیاح کے ’کی کی‘ چیلنج پر پی آئی اے کو مشکل کا سامنا

ای میل

پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائنز (پی آئی اے) کی جانب سے یوم آزادی کا جشن منفرد انداز سے منانے کی کوشش اس وقت مہنگی پڑگئی جب قومی احتساب بیورو (نیب) نے فضائی کمپنی کی جانب سے یورپی سیاح کے اشتراک سے بننے والی ویڈیو کا نوٹس لے لیا۔

نیب کا ماننا ہے کہ اس سیاح خاتون نے نہ صرف پشت پر قومی پرچم کو لپیٹ کر اس کی توہین کی بلکہ قومی فضائی کمپنیوں اور ائیرپورٹ کے حوالے سے سیکیورٹی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی بھی کی۔

نیب کے ترجمان نے ڈان کو بتایا ' ہم جاننا چاہتے ہیں کہ خاتون کو خالی طیارے میں جانے اور ائیرپورٹ پر رقص کرنے کی اجازت کس نے دی'۔

اس سے قبل شام کو پولش نژاد برطانوی سیاح ایوا بیانکا زو بک پاکستان کے یوم آزادی کے حوالے سے ایک ویڈیو فیس بک اور انسٹاگرام پر پوسٹ کی تھی جو تیزی سے وائرل ہوئی۔

مزید پڑھیں : ایک امریکی خاتون کو پاکستان کیسا لگا؟

اس پوسٹ کے مطابق درحقیقت انہوں نے دنیا کا پہلا 'ائیرپلین کی کی چیلنج' پی آئی اے کی ائیرہوسٹس کے انداز سے کیا ہے۔

فیس بک اور انسٹاگرام پر شیئر اس ویڈیو کے کیپشن میں انہوں نے لکھا کہ پاکستان کے یوم آزادی کے جشن کو پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائنز کے ساتھ کی کی اسٹائل میں گزارنے کا فیصلہ کیا۔

یہ بھی پڑھیں : یہ 'کی کی چیلنج' کیا ہے اور یہ اتنا خطرناک کیوں؟

ان کا کہنا تھا کہ کی کی کار جمپ اب پرانی ہوچکی، تو یہ ہے کہ پہلا حقیقی ائیرپلیس ورژن۔

تاہم لوگوں کی جانب سے قومی پرچم کی مبینہ توہین پر احتجاج کے بعد پوسٹس کو ڈیلیٹ کردیا گیا تھا۔

ایوا نے یہ ویڈیو پی آئی اے کے اشتراک سے تیار کی تھی جس کا پرومو قومی فضائی کمپنی نے گزشتہ روز اپنے ٹوئیٹ پر جاری کیا تھا۔

بعد ازاں خاتون سیاح نے فیس بک اور انسٹاگرام پر انہوں نے ایک پوسٹ کرکے اس حوالے سے وضاحت بھی پیش کی۔

خاتون کی اس سے قبل بھی کے ٹو بیک کیمپ ٹریکنگ کی ویڈیو بھی وائرل ہوئی تھی جبکہ شمالی علاقہ جات میں ان کی کئی ویڈیوز بھی انٹرنیٹ پر گردش کرتی رہیں۔

ایوا کی پیدائش پولینڈ کی ہے مگر ان کی زندگی کا بیشتر حصہ برطانیہ میں گزرا، مگر اب وہ دنیا کی سیاحت پر نکلی ہوئی ہیں اور اس حوالے سے ان کا اپنا بلاگ بھی ہے۔

وہ گلگت بلتستان کی خوبصورتی سے بہت زیادہ متاثر ہوئیں

کراچی میں گھڑسواری کرتے ہوئے

کچھ عرصے پہلے ایک انٹرویو کے دوران انہوں نے بتایا تھا ' پاکستان آنے سے پہلے مجھے ہر ایک کہتا تھا کہ وہاں خیال رکھنا، وہ بہت خطرناک ملک ہے خصوصاً خواتین کے لیے، لہذا مجھے کسی اور جگہ چلے جانا چاہئے، مگر میں نے یہاں کی جو تصاویر دیکھیں وہ انتہائی زبردست تھین اور میرا خیال تھا کہ یہ اپنی طرز کا منفرد تجربہ ہوگا، یہ سچ ہے کہ اکیلے آتے ہوئے میں کچھ نروس تھی اور مجھے اندازہ نہیں تھا کہ یہاں کیسے حالات کا سامنا ہوگا'۔

Content creation can be a rollercoaster. And over the last couple of days, I’ve seen my fellow creators struggle with their creativity - myself included. . Here’s my recent struggle: the other day, I was hit by creative block - or, more specifically, creative laziness. I couldn’t bring myself to look at my latest YouTube video in progress, feeling it wasn’t good for anything. I reached out to you for help, and you told me all about how you overcome creative block: from running, to eating ice cream, to listening to music and speaking to friends. That was inspiring to read. . Sometimes, content creators struggle with their voice. Earlier today, @safaaintransit went live on Instagram to talk about being real and (re)discovering her voice through her content. That, rather than obsessing over likes and people-pleasing. . Yesterday, @heradventureswithhim did a Story about originality in content. She was frustrated with how her work - her originality - had been copied without acknowledgment. We talked about it and realised that it’s sometimes difficult to even confront the person copying your work. Sadly. . And @doseoflifecom told me over coffee this morning about the difficulties of being a content creator in an extremely saturated market: travel, and more specifically, Thailand, where they’re based. It can be tough to be original and cover “new” places in a country so widely covered across media. We talked about the importance of a “unique selling point” in everything we do. . But despite these struggles, every single one of these exchanges ended on an optimistic note. A unanimous “We’re gonna keep going!” . And that’s what I love about creativity. It’s a sentiment filled with ups and downs, but ultimately, it CREATES. It makes, it produces, it gives life to something new and beautiful. . And whether it’s a new dinner recipe, a new trick we teach to our dog, a drawing or a new route we take to work - let’s keep creating 🙌

A post shared by Eva zu Beck (@evazubeck) on

سوات کی سیاحت کرتے ہوئے

۔

تاہم یہاں آمد کے بعد پاکستان کے بارے میں ان کے خیالات مکمل طور پر بدل کر رہ گئے 'یہاں آنے کا فیصلہ بطور سیاح کیے جانے والے چند بہترین فیصلوں میں سے ایک ثابت ہوا، مجھے یہاں کے لوگوں اور میڈیا کے بارے میں جو کچھ بتایا گیا تھا وہ سب غلط نکلا، یہاں کی قدرتی خوبصورتی، تاریخ اور لوگوں نے مجھے متاثر کیا، مجھے خوشی ہے کہ میں انہیں دنیا کے سامنے پیش کرسکی اور پلیٹ فارمز جیسے انسٹاگرام اور یوٹیوب وغیرہ سے اس کے بارے میں تصور بدلنے میں مدد کرنے لگی'۔

لاہور کی سیر بھی کرچکی ہیں