پاکستان میں پولیو کے خاتمے کیلئے جاپان 46 لاکھ ڈالر امداد دے گا

19 نومبر 2018

ای میل

یونیسیف پاکستان کے نمائندے اور جاپانی سفیر نے معاہدے پر دستخط کیے—فوٹو: جاپانی سفارتخانہ
یونیسیف پاکستان کے نمائندے اور جاپانی سفیر نے معاہدے پر دستخط کیے—فوٹو: جاپانی سفارتخانہ

جاپان نے 19-2018 کی پولیو ویکسین مہمات میں مدد فراہم کرنے کے لیے پاکستان کو 46 لاکھ ڈالر (61 کروڑ 43 لاکھ روپے سے زائد) کی امداد دینے کا اعلان کردیا۔

اسلام آباد میں جاپان کی حکومت، جاپان انٹرنیشنل کارپوریشن ایجنسی (جے آئی سی اے) اور اقوام متحدہ کے بچوں کے فنڈ کے ادارے (یونیسیف) کے درمیان معاہدے پر دستخط کیے گئے۔

مزید پڑھیں: اسلام آباد: پولیو ٹیم بچوں کا جعلی اندراج اور ویکسین ضائع کرتے ہوئے پکڑی گئی

یہ امداد ڈھائی کروڑ اورل پولیو ویکسین(او پی وی) کی خریداری میں مدد فراہم کرے گی، جو پاکستان کے انتہائی حساس اضلاع میں 5 سال تک کے بچوں کو ویکسین کرنے کے لیے کافی ہوگی، اس کے علاوہ یہ امداد مدافعتی خلا کو پورا کرنے کے پروگرام کو شروع کرنے میں بھی مدد کرے گی۔

جاپانی حکومت کے اس عزم کو سراہتے ہوئے انسداد پولیو پر وزیر اعظم کے فوکل پرسن بابر بن عطا کا کہنا تھا کہ حکومت اور جاپان کے عوام برسوں سے پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیں، یہاں تک کہ مشکل حالات میں بھی انہوں نے ہمارا ساتھ دیا۔

انہوں نے کہا کہ آج پاکستان کے پولیو کا خاتمے کے پروگرام کی دنیا بھر میں بہترین عوامی خدمات کی فراہمی کے اقدامات میں درجہ بندی کی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم ابھی تک اپنی کامیابیوں پر فخر کرتے ہیں اور اس موسم کے درمیان پولیو وائرس کو روکنے کے اپنے مقصد کو حاصل کرنے کے خواہاں ہیں۔

فوکل پرسن کا کہنا تھا کہ ’میں جاپان کی حکومت، عوام اور ان تمام شراکت داروں کا شکریہ ادا کرتا ہوں، جنہوں نے برسوں سے ہماری مدد کی، جس کے باعث آج ہم یہاں موجود ہیں‘۔

معاہدے کی تقریب کے موقع پر شرکا سے خطاب میں نیشنل ہیلتھ سروسز کے وزیر عامر محمود کیانی کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان کی حکومت ملک سے پولیو کے خاتمے کے لیے پرعزم ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ملک میں پولیو کیسز کی سالانہ شرح 20 ہزار سے گھٹ کر 4 ہوگئی

انہوں نے کہا کہ پولیو کا خاتمہ ہماری وزارت کی اولین ترجیح ہے اور پولیو سے پاک پاکستان کے مقصد کو حاصل کرنے کے لیے کوئی کثر نہیں چھوڑی جائے گی‘۔

اس موقع پر جاپانی سفیر تاکاسی کورائی کا کہنا تھا کہ ’عوامی صحت کے لیے یقیناً پولیو ایک عالمی چیلنج ہے لیکن ویکسین کے ذریعے اسے روکا جاسکتا ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں پولیو کے خاتمے میں جاپان مدد جاری رکھے گا اور مجھے امید ہے کہ بہت جلد پاکستان سے اس بیماری کے خاتمے کے مقصد کو حاصل کرلیں گے‘۔