سابقہ بیوی کو ہراساں کرنے پر ڈی آئی جی گلگت بلتستان برطرف

اسلام آباد: سابقہ بیوی کو ہراساں کرنے پر ڈی آئی جی گلگت بلتستان جنید ارشد کو ملازمت سے فارغ کردیا گیا۔

جنید ارشد کی سابقہ بیوی عائشہ سبحانی کی درخواست پر وفاقی محتسب برائے حقوق خواتین نے فیصلہ سناتے ہوئے ڈی آئی جی کو ملازمت سے برطرف کرنے اور 10 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی۔

وفاقی محتسب کے فیصلے کے بعد اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے ڈی آئی جی جنید ارشد کی برطرفی کا نوٹی فکیشن جاری کر دیا۔

عائشہ سبحانی نے اپنے سابق شوہر کے خلاف وفاقی محتسب برائے حقوق خواتین شکایت درج کروائی تھی۔

واضح رہے کہ ستمبر 2018 میں سپریم کورٹ نے سابقہ اہلیہ کی نازیبا تصاویر سوشل میڈیا پر ڈالنے سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران جنید ارشد کو فوری گرفتار کرنے اور ان کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈالنے کا حکم دیا تھا۔

مزید پڑھیں: ڈی آئی جی گلگت بلتستان کی فوری گرفتاری کا حکم

عائشہ سبحانی نے سابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کو معاملے سے متعلق درخواست دی تھی۔

درخواست میں ان کا کہنا تھا کہ 'میرے سابق شوہر نے میری غیر اخلاقی تصاویر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کیں، جبکہ ٹرائل کورٹ سے ضمانت خارج ہونے کے باوجود جنید ارشد کو گرفتار نہیں کیا گیا۔'

خیال رہے کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے سائبر کرائم سیل نے ڈی آئی جی گلگت بلتستان جنید ارشد کے خلاف معاملے کا مقدمہ درج کیا تھا۔

مقدمے میں ان پر الزام عائد کیا گیا کہ انہوں نے اپنے دوست کے ساتھ مل کر اپنی سابقہ بیوی کو بلیک میل کیا اور ان کی نازیبا تصاویر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کیں۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں