آر کیلی جنسی جرائم کیس، گلوکار کے تین دوستوں پر متاثرین کو دھمکانے کا الزام

اپ ڈیٹ 13 اگست 2020

ای میل

آر کیلی ایک سال سے زائد عرصے سے جیل میں ہیں—فائل فوٹو: اے پی
آر کیلی ایک سال سے زائد عرصے سے جیل میں ہیں—فائل فوٹو: اے پی

متعدد نابالغ اور کم عمر لڑکیوں سمیت خواتین کو جنسی تشدد کا نشانہ بنانے، ریپ اور انہیں جنسی لذت کے لیے ایک سے دوسری جگہ منتقل کرنے کے الزام میں قید امریکی گلوکار رابرٹ سلویسٹر کیلی (آر کیلی) کے کیس میں پراسیکیوٹرز نے ان کے تین دوستوں پر بھی الزامات عائد کردیے۔

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق نیویارک کے وفاقی پراسیکیوٹرز نے جاری بیان میں تصدیق کی کہ گلوکار کے تین قریبی دوستوں پر متاثرہ خواتین اور ان کے اہل خانہ کو دھمکانے اور بلیک میل کرنے کے الزامات عائد کردیے گئے۔

پراسیکیوٹرز نے آر کیلی کے تین دوستوں رچرڈ ارلائن، جونیئر ڈونیل رسل اور مائیکل ولیمز پر گلوکار پر مقدمے کرنے والی خواتین کو دھمکانے، پیسوں کے عوض مقدمات واپس لینے اور انہیں بدنام کرنے کی دھمکیوں کے الزامات عائد کیے۔

گلوکار کے تینوں دوستوں پر الزام ہے کہ انہوں نے گلوکار کو بچانے کے لیے اپنے دوست پر الزام لگانے والی خواتین میں سے ایک کو مقدمہ واپس لینے کے لیے 5 لاکھ امریکی ڈالر کی پیش کش کی۔

آر کیلی کا نشانہ بننے والی زیادہ تر لڑکیاں نابالغ یا نوجوان ہیں—فائل فوٹو: ڈیلی بیسٹ
آر کیلی کا نشانہ بننے والی زیادہ تر لڑکیاں نابالغ یا نوجوان ہیں—فائل فوٹو: ڈیلی بیسٹ

جب کہ ان کے دوستوں میں سے ایک نے ایک اور خاتون کو مقدمہ واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے انہیں ان کی برہنہ ویڈیوز اور تصاویر وائرل کرنے کی دھمکی بھی دی۔

یہ بھی پڑھیں: ایوارڈ یافتہ گلوکار آر کیلی جنسی جرائم کے الزامات میں گرفتار

علاوہ ازیں گلوکار کے دوستوں میں سے ایک نے آر کیلی پر مقدمہ دائر کرنے والی ایک خاتون کو گاڑی کو آگ لگا کر انہیں قتل کا خوف دے کر مقدمہ واپس لینے کی دھمکی بھی دی۔

اسی طرح گلوکار کے دوستوں نے مقدمہ کرنے والی دیگر چند خواتین اور ان کے اہل خانہ کو بھی آر کیلی کے خلاف دائر کیا گیا مقدمہ واپس لینے کے لیے دباؤ ڈالا اور ساتھ ہی انہیں دھمکیاں بھی دیں۔

پراسیکیوٹرز کی جانب سے آر کیلی کے دوستوں پر الزامات عائد کرنے پر گلوکار کے وکلا نے کہا ہے کہ انہیں پہلے سے اس حوالے سے کوئی علم نہیں تھا اور اب انہیں پراسیکیوٹرز کی جانب سے جاری بیان سے معاملے کا پتا چلا ہے۔

آر کیلی پر 2018 سے امریکا کی تین مختلف ریاستوں کی 4 عدالتوں میں جنسی جرائم، نابالغ اور کم عمر لڑکیوں کے ریپ اور جنسی استحصال سمیت خواتین کو جنسی لذت کے لیے ایک سے دوسری جگہ منتقل کرنے جیسے الزامات زیر سماعت ہیں۔

عدالت نے آر کیلی کی ضمانت کی ضمانت مسترد کردی تھی—فوٹو: اے پی
عدالت نے آر کیلی کی ضمانت کی ضمانت مسترد کردی تھی—فوٹو: اے پی

آر کیلی گزشتہ برس جون سے جیل میں ہیں، عدالت نے انہیں ضمانت دینے سے انکار کردیا تھا۔

جون سے قبل بھی اگرچہ آر کیلی کو فروری 2019 میں گرفتار کیا گیا تھا تاہم انہیں اس وقت ضمانت پر رہا کردیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں: جنسی جرائم کیس: ایک بار پھر آر کیلی کی ضمانت مسترد

آر کیلی پر کم عمر لڑکی سے شادی کرنے سمیت دوسری اہلیہ پر بدترین جنسی تشدد کرنے کے الزامات بھی ہیں، جب کہ ان پر زیادہ تر سیاہ فام کم عمر لڑکیوں کے جنسی استحصال کے الزامات عائد ہیں۔

کچھ کیسز میں ان پر فرد جرم بھی عائد کی جا چکی ہے تاہم انہوں نے زیادہ تر کیسز میں خود پر لگے الزامات کو مسترد کردیا تھا۔

آر کیلی نے عدالت میں دعوے کیے کہ انہوں نے تمام خواتین سے باہمی رضامندی کے ساتھ جنسی تعلقات استوار کیے اور انہوں نے کسی پر جنسی تشدد نہیں کیا۔

آر کیلی پر مجموعی طور پر 100 کے قریب خواتین بشمول نابالغ اور کم عمر لڑکیوں کے ریپ اور ان پر بدترین جنسی تشدد کے الزامات ہیں۔

آر کیلی پر دوسری بیوی اینڈریا کیلی نے بھی بدترین جنسی تشدد کے الزام عائد کر رکھے ہیں—فوٹو: دی سورسز
آر کیلی پر دوسری بیوی اینڈریا کیلی نے بھی بدترین جنسی تشدد کے الزام عائد کر رکھے ہیں—فوٹو: دی سورسز

اگر آر کیلی پر جرم ثابت ہوجاتا ہے تو انہیں 10 سے 20 سال قید اور جرمانے کی سزا ہوسکتی ہے۔

ان پر الزام ہے کہ انہوں نے 1990 سے 2010 تک مختلف مواقع پر نابالغ لڑکیوں اور نوجوان خواتین کو نشہ دے کر ریپ کا نشانہ بنانے سمیت بدترین جنسی تشدد کا نشانہ بنایا۔

ان پر نیویارک اور ریاست الینوائے سمیت ایک اور ریاست کی 4 مختلف عدالتوں میں کیسز زیر التوا ہیں اور ان کے خلاف نیویارک کی عدالت میں دائر مقدمے کا ٹرائل رواں برس مئی میں ہونا تھا مگر کورونا کی وبا کے باعث ایسا نہ ہوسکا۔

اب نیویارک کی عدالت میں رواں برس ستمبر میں ان کے ٹرائل کا ممکنہ آغاز ہوگا تاہم زیادہ تر امکان یہی ہے کہ کورونا کی وبا کے باعث ان کا ٹرائل مزید چند ماہ تک مؤخر کردیا جائے گا۔

اسی طرح ان پر دیگر عدالتوں میں زیر سماعت ٹرائلز بھی کورونا کے باعث مؤخر ہوسکتے ہیں اور وہ اس ٹرائل کے باقائدہ آغاز تک جیل میں ہی رہیں گے۔

آر کیلی پر پہلی شادی 15 سالہ عالیہ سے کرنے کا الزام بھی ہے—فائل فوٹو: مس ڈمپلز
آر کیلی پر پہلی شادی 15 سالہ عالیہ سے کرنے کا الزام بھی ہے—فائل فوٹو: مس ڈمپلز