اسٹیٹ بینک نے کرنسی نوٹوں کے نئے ڈیزائن کی رپورٹس کو مسترد کردیا

اپ ڈیٹ 09 نومبر 2021
اسٹیٹ بینک نے 2010 میں 500 روپے کا نیانوٹ جاری کیا تھا—فائل/فوٹو: اے ایف پی
اسٹیٹ بینک نے 2010 میں 500 روپے کا نیانوٹ جاری کیا تھا—فائل/فوٹو: اے ایف پی

اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) نے سوشل میڈیا میں گردش کرنے والی ان رپورٹس کو مسترد کردیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ کرنسی نوٹوں کا ڈیزائن تیار کیا جارہا ہے۔

اسٹیٹ بینک نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بیان میں کہا کہ ‘سوشل میڈیا پر کرنسی نوٹوں کے نئے ڈیزائن کے حوالے سے جعلی خبریں چل رہی ہیں’۔

یہ بھی پڑھیں: معیشت کو نقصان پہنچانے والے 5 ہزار کے نوٹ کیا پاکستان میں بند ہوسکتے ہیں؟

بیان میں کہا گیا کہ ‘اسٹیٹ بینک اس خبر کی سختی سے تردید کرتا ہے اور واضح کرتاہے کہ اس وقت اس حوالے سے کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے’۔

اسٹیٹ بینک کی جانب سے ڈیزائن کی تصاویر بھی دی گئیں جس میں جعلی کا لفظ واضح طور لکھا گیا ہے۔

یاد رہے کہ اسٹیٹ بینک نے ایک دہائی قبل پاکستانی کرنسی کا ڈیزائن تبدیل کیا تھا اور 25 جنوری 2010 کو 500 کا نوٹ جاری کیا گیا تھا جو سائز میں قدرے چھوٹا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: اسٹیٹ بینک کا پالیسی ریٹ کم کرنے سے متعلق درخواست سماعت کیلئے مقرر

اس سے قبل فروری 2007 میں ایک ہزار کا نیا نوٹ جاری کیا گیا تھا اور اسی طرح مئی 2006 میں 5 ہزار کا نیا نوٹ متعارف کروایا گیا تھا، نومبر 2006 میں 100 روپے کا نیا نوٹ بھی جاری کیا گیا تھا۔

اسٹیٹ بینک نے جولائی 2008 میں 50 روپے کا نیا نوٹ بھی جاری کیا تھا اور اس سے قبل مارچ 2008 میں 20 روپے کا نوٹ اور مئی 2006 میں 10 روپے کا نیا نوٹ جاری کیا تھا۔

ضرور پڑھیں

وزیراعظم کا انتخاب کس طرح ہوتا ہے؟

وزیراعظم کا انتخاب کس طرح ہوتا ہے؟

وزارت عظمیٰ کے لیے اگر کوئی بھی امیدوار ووٹ کی مطلوبہ تعداد حاصل کرنے میں ناکام رہا تو ایوان زیریں کی تمام کارروائی دوبارہ سے شروع کی جائے گی۔

تبصرے (0) بند ہیں