پاک-انگلینڈ پہلا ٹیسٹ شروع کرنے کا فیصلہ کل ہوگا، پی سی بی

اپ ڈیٹ 30 نومبر 2022
<p>پی سی بی نے کہا کہ انگلینڈ کے کھلاڑی مکمل صحت یاب نہ ہوئے تو میچ جمعے کو شروع ہوگا—فوٹو: پی سی بی</p>

پی سی بی نے کہا کہ انگلینڈ کے کھلاڑی مکمل صحت یاب نہ ہوئے تو میچ جمعے کو شروع ہوگا—فوٹو: پی سی بی

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے کہا ہے کہ انگلینڈ کے کھلاڑیوں کی طبیعت کی خرابی کے باعث سیریز کا پہلا میچ مقررہ وقت پر شروع کرنے کے لیے فیصلہ صبح تک مؤخر کردیا گیا ہے۔

پی سی بی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ’پی سی بی اور انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ نے انگلینڈ کی ٹیم کے کیمپ میں وائرل انفکیشن کے بارے میں تبادلہ خیال کیا‘۔

بیان میں کہا گیا کہ ’اس دوران پہلا ٹیسٹ میچ شروع کرنے کا فیصلہ تاخیر سے جمعرات کو صبح 7:30 بجے تک کرنے پر اتفاق کرلیا گیا‘۔

پی سی بی نے کہا کہ ’دونوں بورڈز نے انگلینڈ کے ڈاکٹروں کے مشورے کی بنیاد پر فیصلہ کیا ہے جو کھلاڑیوں کے صحت اور بہتری کے حوالے سے ہے تاکہ انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم آئی سی سی ورلڈ ٹیسٹ چمپیئن شپ میچز میں شامل پہلے ٹیسٹ کے لیے اپنی 11 رکنی ٹیم کا انتخاب کرپائے‘۔

انگلینڈ اور پاکستان کے درمیان سیریز کا پہلا ٹیسٹ راولپندی کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلا جائے گا۔

پی سی بی نے کہا کہ دونوں بورڈز نے اتفاق کرلیا ہے کہ انگلینڈ کے کھلاڑی جمعرات کو صبح تک کھیلنے کے لیے تیار نہیں ہوتے ہیں تو پھر ٹیسٹ جمعے کو شروع ہوگا اور 5 روزہ میچ ہوگا۔

بورڈ نے بتایا کہ اس صورت میں ملتان اور کراچی میں شیڈول بالترتیب دوسرے اور تیسرے ٹیسٹ پر کوئی فرق نہیں پڑے گا اور شیڈول کے مطابق کھیلے جائیں گے۔

ملتان میں دوسرا ٹیسٹ 9 سے 13 دسمبر اور کراچی میں تیسرا ٹیسٹ 17 سے 21 دسمبر تک شیڈول ہے۔

پی سی بی نے پہلے ٹیسٹ کے ٹکٹوں کے حوالے سے بھی وضاحت نہیں کی اور بتایا کہ جمعرات کو صبح اس حوالے سے آگاہ کیا جائے گا۔

اس سے قبل انگلینڈ کی ٹیسٹ ٹیم کے کپتان بین اسٹوکس سمیت متعدد کھلاڑی پیٹ کے انفیکشن کا شکار ہو گئے تھے اور پہلا ٹیسٹ میچ ایک سے دو دن ملتوی ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا تھا۔

ٹیسٹ سیریز کے لیے ٹرافی کی تقریب رونمائی بھی آج طے تھی لیکن بین اسٹوکس کی صحت یابی تک ملتوی کردی گئی۔

خبر ایجنسی ’اے ایف پی‘ نے رپورٹ کیا تھا کہ انگلش کپتان بین اسٹوکس سمیت دیگر کھلاڑی اور عملے کے متعدد اراکین بھی پیٹ کے انفیکشن کا شکار ہو گئے ہیں۔

انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کی جانب سے بیان میں کہا گیا تھا کہ متعدد کھلاڑیوں کی طبیعت خراب ہے اور انہیں ہوٹل میں رہ کر آرام کرنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

انگلش بلے باز جو روٹ نے راولپنڈی میں پریس کانفرنس کے دوران کھلاڑیوں کی فوڈ پوائزننگ یا کھانے سے منسلک کسی بیماری کے شکار ہونے کی افواہوں کی تردید کیا تھا۔

انہوں نے انگلینڈ کے کھلاڑیوں کے بیمار ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ جہاں تک میری معلومات ہیں، کچھ کھلاڑیوں کی طبیعت ٹھیک نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں کل کچھ اچھا محسوس نہیں کر رہا تھا لیکن آج صبح میری طبیعت قدرے بہتر تھی تو شاید یہ 24 گھنٹے کا وائرس ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ میرا نہیں خیال وہ فوڈ پوائزننگ یا کوویڈ-19 کا شکار ہوئے ہیں، بس ہمارے کھلاڑی بدقسمتی سے کسی وائرس کا شکار ہوگئے، تاہم انگلش بلے باز نے واضح کیا کہ اس بیماری کا کھلاڑیوں کے کھانے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان تین میچوں کی سیریز کا پہلا میچ راولپنڈی میں کھیلا جائے گا جس کے بعد مہمان ٹیم 9 دسمبر سے شروع ہونے والے دوسرے میچ کے لیے ملتان کا رخ کرے گی جبکہ سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میچ کی میزبانی 17 دسمبر سے کراچی کا نیشنل اسٹیڈیم کرے گا۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں