پیرس اولمپکس: ایتھلیٹس ولیج میں حجاب پہننے پر کوئی پابندی نہیں ہو گی، آئی او سی

29 ستمبر 2023
پیرس آئندہ سال 26 جولائی سے 11 اگست تک اولمپکس کی میزبانی کرے گا— فائل فوٹو: اے ایف پی
پیرس آئندہ سال 26 جولائی سے 11 اگست تک اولمپکس کی میزبانی کرے گا— فائل فوٹو: اے ایف پی

انٹرنیشنل اولمپکس کمیٹی نے کہا ہے کہ پیرس 2024 کے اولمپک گیمز کے ایتھلیٹس ولیج میں ایتھلیٹس کسی پابندی کے بغیر حجاب پہن سکیں گے۔

غیرملکی خبرایجنسی رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق اولمپکس کی انتظامیہ کی جانب سے یہ بیان ایک ایسے موقع پر جاری کیا گیا جب چند دن قبل ہی فرانس کے وزیر کھیل نے کہا تھا کہ پیرس اولمپکس پر فرانسیسی ایتھلیٹس کے حجاب پہننے پر پابندی ہوگی۔

انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے کہا کہ ہمیں فرانس کی صورتحال کو بہتر طور پر سمجھنے کی ضرورت ہے اور ہم اس سلسلے میں فرانسیسی اولمپکس کمیٹی کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

فرانسیسی وزیر کھیل ایمیلی اوڈیا کاسٹیرا نے اتوار کو کہا تھا کہ سیکولرازم کے اصولوں کے احترام کے لیے فرانسیسی ایتھلیٹس کو پیرس گیمز کے دوران حجاب پہننے سے روک دیا جائے گا۔

تاہم انٹرنیشنل اولمپکس کمیٹی کا کہنا ہے کہ اولمپک ولیج میں آئی او سی کے قوانین لاگو ہوتے ہیں لہٰذا حجاب یا کوئی اور مذہبی یا ثقافتی لباس پہننے پر کوئی پابندی نہیں ہے۔

اولمپک گیمز میں شرکت کرنے والے تقریباً 10ہزار ایتھلیٹس میں سے اکثر اولمپک ولیج کے اپارٹمنٹس میں رہتے ہیں اور ڈائننگ ہالز اور تفریحی مقامات سمیت کئی جگہوں کو ایک ساتھ بانٹتے ہیں۔

انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی کے ترجمان نے کہا کہ جب مقابلوں کی بات آتی ہے تو متعلقہ بین الاقوامی فیڈریشن کے مقرر کردہ ضوابط لاگو ہوتے ہیں۔

اولمپکس میں کھیلوں کے مقابلوں کا اہتمام اور نگرانی انفرادی بین الاقوامی کھیلوں کی فیڈریشنز کرتی ہیں۔

پیرس گیمز کے پروگرام میں 32 کھیل شامل ہیں۔

ترجمان نے کہا کہ چونکہ فرانسیسی ضابطے کا تعلق صرف فرانسیسی ٹیم کے ارکان سے ہے، اس لیے ہم فرانسیسی کھلاڑیوں کے حوالے سے صورتحال کو مزید سمجھنے کے لیے فرنچ اولمپک کمیٹی کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

یورپ میں سب سے بڑی تعداد میں مسلم اقلیت فرانس میں موجود ہے اور یہی وجہ ہے کہ فرانس نے سیکولرازم کے تحفظ کے لیے بنائے گئے قوانین کو نافذ کیا ہے جس کے بارے میں صدر ایمانوئیل میکرون نے کہا ہے کہ انہیں اسلام پسندی سے خطرہ ہے۔

کچھ مسلم انجمنوں اور انسانی حقوق کے گروپوں نے الزام لگایا ہے کہ ان قوانین کے ذریعے مسلمانوں کو نشانہ بناتے ہوئے جمہوری تحفظات کو چھین لیا گیا ہے اور بدسلوکی کا نشانہ بنایا ہے۔

فرانس کے اپنے کھلاڑیوں کو حجاب پہننے سے روکنے کے فیصلے کو اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے دفتر نے تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

پیرس آئندہ سال 26 جولائی سے 11 اگست تک اولمپکس کی میزبانی کرے گا۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں