اسٹاک ایکسچینج میں زبردست تیزی، انڈیکس پہلی بار 60 ہزار پوائنٹس کی نفسیاتی حد عبور کر گیا

اپ ڈیٹ 28 نومبر 2023
24 نومبر کو بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 59 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کر گیا تھا— فائل فوٹو: آن لائن
24 نومبر کو بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 59 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کر گیا تھا— فائل فوٹو: آن لائن

پاکستان اسٹاک ایکسچینج (پی ایس ایکس) میں آج بھی زبردست تیزی کا رجحان دیکھا جارہا ہے، بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 919 پوائنٹس اضافے کے بعد تاریخ میں پہلی بار 60 ہزار کی نفسیاتی حد بھی عبور کر گیا۔

پی ایس ایکس ویب سائٹ کے مطابق تقریبا کے ایس ای-100 انڈیکس 918.92 یا 1.54 فیصد اضافے کے بعد 60 ہزار 730 پوائنٹس پر پہنچ گیا، جو گزشتہ روز 59 ہزار 811 پوائنٹس پر بند ہوا تھا۔

میٹس گلوبل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ایکس پر بتایا کہ اضافے کی وجوہات آئی ایم ایف پروگرام کے تحت دوسری قسط وصول ہونے کی توقعات، شرح سود میں کمی اور بہتر سیاسی صورتحال جیسی مثبت خبریں ہیں۔

ٹاپ لائن سیکیورٹیز کے چیف ایگزیکٹیو محمد سہیل نے کہا کہ یہ اضافہ حیران کن نہیں ہے، کے ایس ای-100 انڈیکس صرف 5 ماہ میں 50 فیصد اضافے سے 40 ہزار پوائنٹس سے 60 ہزار پوائنٹس تک پہنچ گیا۔

انہوں نے کہا کہ 2004 کے بعد سے 50 فیصد بڑھنے کا تیز رفتار اضافہ ہے، مزید بتایا کہ جب ویلیوایشن ناقابل یقین حد تک کم ہو، تو ایسی بحالی کسی بھی صورت میں حیران کن نہیں ہوتی۔

خیال رہے کہ 24 نومبر کو بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 59 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کرنے کے بعد 187 پوائنٹس اضافے کے ساتھ بند ہوا تھا۔

22 نومبر کو کے ایس ای-100 انڈیکس 827 پوائنٹس اضافے کے بعد 58 ہزار کی بلند ترین سطح عبور کر گیا تھا۔

اسی طرح 16 نومبر کو کے ایس ای-100 انڈیکس 418 پوائنٹس اضافے کے بعد 57 ہزار کی نئی بُلند ترین سطح پر پہنچ گیا تھا۔

اس سے قبل 13 نومبر کو بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 1132 پوائنٹس اضافے کے بعد 56 ہزار کی نئی بلند ترین سطح عبور کرگیا تھا، اس سے قبل 10 نومبر کو 55 ہزار، 8 نومبر کو 54 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کر گیا تھا۔

3 نومبر کو صدر مملکت اور چیف الیکشن کمشنر کے درمیان عام انتخابات کی تاریخ پر اتفاق ہونے کے بعد پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں ساڑھے 6 سال بعد انڈیکس 53 ہزار پوائنٹس کی حد عبور کر گیا تھا۔

انٹر مارکیٹ سیکورٹیز کے ہیڈ آف ایکویٹی رضا جعفری نے گزشتہ روز بتایا تھا کہ بینکنگ سیکٹر میں زیادہ دلچسپی دیکھی گئی کیونکہ معیشت مستحکم ہو رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بینکس اچھے ڈیونڈز کی پیش کش کر رہے ہیں اور ان کی ویلیوایشن بھی متاثرکن ہے، روایتی طور پر یہ سیکٹر غیر ملکی سرمایہ کاروں کے لیے پسندیدہ رہا ہے، اور ممکن ہے کہ یہ دوبارہ بینکنگ سیکٹر کے حصص خریدیں۔

تبصرے (0) بند ہیں