بھارتی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ عالیہ بھٹ ، کترینہ کیف اور پریانکا چوپڑا سمیت بولی وڈ کی نامور اداکاراؤں کی آرٹیفشل انٹیلی جنس (اے آئی) یعنی مصنوعی ذہانت کی مدد سے تیار کردہ جعلی ویڈیو وائرل ہورہی ہیں

بولی وڈ شخصیات کی نامناسب ویڈیوز وائرل ہونے پر مداح انہیں سخت تنقید کا بھی نشانہ بنارہے ہیں۔

بھارتی میڈیا انڈیا ٹوڈے کے مطابق حال ہی میں اداکارہ پریانکا چوپڑا بھی جعلی ویڈیو کی زد میں آئی ہیں جو سوشل میڈیا پر کافی وائرل ہورہی ہے، دیگر جعلی ویڈیوز کے برعکس پریانکا چوپڑا کی ویڈیو میں صرف ان کی آواز کو تبدیل کیا گیا ہے جس میں وہ مخصوص برینڈ کی تشہیر کررہی ہیں اور اپنی سالانہ آمدنی کا بھی ذکر کررہی ہیں۔

قبل ازیں بولی وڈ اداکارہ رشمیکا مندانا کی جعلی ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں انہیں لفٹ سے باہر نکلتے ہوئے دیکھا گیا اور انتہائی تنگ اور مختصر لباس پہن رکھا تھا۔

ویڈیو وائرل ہونے پر اداکارہ نے انسٹاگرام اسٹوری کے ذریعے واضح کیا کہ وائرل ہونے والی ویڈیو ان کی نہیں ہے بلکہ اسے ایڈٹ کرکے ان کی ویڈیو بتاکر شیئر کیا گیا۔

ان کے مطابق ویڈیو میں نظر آنے والی خاتون کے چہرے کو ان کے چہرے سے تبدیل کیا گیا۔

اداکارہ نے مطالبہ کیا تھا کہ اس طرح کی جعلی ویڈیوز بنانے والوں کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے تاکہ ایسے لوگ کسی بھی لڑکی یا خاتون کی جعلی ویڈیوز بناکر انہیں پریشان نہ کرسکیں۔

ڈیپ فیک ویڈیوز پر بولی وڈ ’بگ بی‘ امیتابھ بچن نے بھی کہا تھا کہ جعلی ویڈیوز بنانے والوں کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔

اس کے علاوہ اداکارہ عالیہ بھٹ کی بھی ڈیپ فیک ویڈیو وائرل ہوئی تھی، ویڈیو میں خاتون کا چہرہ اے آئی کی مدد سے عالیہ بھٹ کے چہرے سے تبدیل کیا گیا۔

ویڈیو میں خاتون کو بیڈ پر بیٹھے دیکھا جا سکتا ہے، خاتون نے نیلے رنگ کے پھولوں کے پرنٹ والی شرٹ پہن رکھی اور کیمرے کی طرف نامناسب انداز میں اشارے کررہی ہیں۔

ویڈیو وائرل ہونے پر مداحوں نے عالیہ بھٹ کو شدید تنقید کا بھی نشانہ بنایا تاہم صحافیوں اور فیکٹ چیکرز نے سوشل میڈیا صارفین کو بتایا کہ مذکورہ ویڈیو عالیہ بھٹ کی نہیں بلکہ وہ کسی اور کی ویڈیو ہے، جسے اس قدر ایڈٹ کرکے بنایا گیا کہ اسے دیکھتے ہی ویڈیو کے اصلی ہونے کا گمان ہوتا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق اسی طرح کتریہ کیف اور کاجول کی بھی ویڈیوز وائرل ہوئی تھیں تاہم اداکاروں اپنی جعلی ویڈیو وائرل ہونے ہر ابھی تک کوئی ردعمل نہیں دیا۔

بولی وڈ شخصیات کی ڈیپ فیک اور غیر اخلاقی جعلی ویڈیو وائرل ہونے پر حکومت نے سوشل میڈیا کے لیے ایڈوائزری جاری کی ہے۔

بھارتی وزارت الیکٹرونکس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی جانب سے سوشل میڈیا کے لیے جاری نئی ہدایات میں کہا گیا تھا کہ سوشل میڈیا کے جو بھی پلیٹ فارمز ’ڈیپ فیک ویڈیوز‘ (جعلی ویڈیوز) بنائیں گے یا پھیلائیں گے ان کو قانونی کارروائی اور جرمانوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

بھارت کے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے وزیر راجیو چندر شیکھر نے پیر کو ایکس پر لکھا کہ اس طرح کی جعلی ویڈیوز اور غلط معلومات ’خطرناک اور نقصان دہ‘ صورت اختیار کرسکتی ہیں۔

ڈیپ فیک اسکیم یا ویڈیوز کیا ہیں؟

ڈیپ فیک ویڈیو مصنوعی ذہانت اور مشین لرننگ تکنیک کا استعمال کرتے ہوئے مصنوعی میڈیا کی ایک قسم ہے جو اصل ویڈیوز میں کسی بھی شخص کا چہرہ یا آواز تبدیل کرسکتا ہے۔

ان ویڈیوز میں چہرے یا آواز کو تبدیل کرکے دوسرے شخص کا چہرہ اور اس سے ملتی جلتی آواز کو شامل کیا جاتا ہے جو بظاہر اصل دکھائی یا سنائی دیتی ہے۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں