الیکشن کمیشن نے انتخابات میں دھاندلی کے الزامات کو مسترد کردیا ہے۔

ڈان نیوز کے مطابق الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ کمیشن اکا دکا واقعات سے انکار نہیں کرتا لیکن تدارک کے لیے متعلقہ فورمز موجود ہیں، الیکشن کمیشن کی جانب سے شکایات پر فوری فیصلے کیے جارہے ہیں۔

اس میں کہا گیا ہے کہ مشکلات اور مسائل کے باوجود 8 فروری کو انتخابی عمل پر امن اور منظم رکھنے میں کامیاب رہے، انتخابات ایک بہت بڑا آپریشن تھا جسے کامیابی سے پایہ تکمیل تک پہنچایا گیا، الیکشن منیجمنٹ سسٹم (ای ایم ایس) نے ریٹرننگ افسران (آر اوز) کے دفاتر میں تسلی بخش کام کیا۔

اعلامیے کے مطابق موبائل سروس کی بندش سے پریزائیڈنگ افسران الیکٹرانک ڈیٹا بھیجنے سے قاصر رہے، معمول کی کوارڈینیشن اور نقل و حمل کو موبائل سروسز کی بندش نے بری طرح متاثر کیا۔

اس میں مزید بتایا گیا کہ 2018 میں انتخابات کا پہلا نتیجہ اگلے روز صبح 4 بجے موصول ہوا تھا، اس مرتبہ پہلا نتیجہ رات 2 بجے موصول ہوا، کچھ حلقوں کے علاوہ انتخابات کے نتائج ڈیڑھ دن میں مکمل کیے گئے۔

اعلامیے میں کہا گیا کہ 2018 کے انتخابات میں نتائج کی تکمیل میں 3 روز لگے تھے، کچھ حلقوں میں نتائج کی تاخیر سے کسی مخصوص سیاسی جماعت کو فائدہ یا نقصان نہیں پہنچا ہے۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں