تائیوان کے دارالحکومت تائی پے میں 25 سالہ ملکی تاریخ کا شدید ترین زلزلہ ریکارڈ کیا گیا، درجنوں عمارتیں زمین بوس ہونے سے 4 افراد ہلاک اور 700 سے زائد زخمی ہوگئے۔

خبر رساں ادارے ’اے ایف پی‘ کے مطابق زلزلے کے بعد جاپان اور فلپائن میں سونامی کی وارننگ جاری کی گئی تھیں، جسے بعد میں واپس لے لیا گیا۔

زلزلہ مقامی وقت کے مطابق صبح 8 بجے آیا، امریکی جیولوجیکل سینٹر کا کہنا ہے کہ تائیوان میں آج صبح 7.4 شدت کا زلزلہ تائیوان کے مشرقی ساحل کے قریب آیا، جبکہ گہرائی 18 کلو میٹر ریکارڈ کی گئی۔

زبردست زلزلے کے بعد تائیوان اور جاپان سمیت فلپائن میں سونامی کی وارننگ جاری کردی گئیں۔

تائیوان میں حکام نے ٹیکسٹ میسج کے ذریعے سونامی کی وارننگ جاری کی ہے ’ساحلی علاقوں میں لوگوں کو چوکس رہنے اور سخت احتیاط برتنے اور لہروں میں اچانک اضافے سے پیدا ہونے والے خطرات کے حوالے سے بھی خبردار کیا۔‘

ابتدائی طور پر زلزلے کے جھٹکے پورے تائیوان میں محسوس کیے گئے، بعدازاں کم از کم 58 آفٹر شاکس آئے اور ان میں سے دو کی شدت 6 سے زیادہ تھی۔

فوٹو: رائٹرز
فوٹو: رائٹرز

ابتدائی اطلاعات کے مطابق زلزلے کے نتیجے میں کئی عمارتیں زمین بوس ہوگئیں، تائیوان حکومت کی جانب سے جاری اعدادوشمار کے مطابق اب تک 4 افراد ہلاک ہوچکے ہیں، 711 افراد زخمی ہوگئے ہیں جب کہ 77 افراد ملبے تلے پھنسے ہوئے ہیں۔

زلزلے کے بعد تائیوان کے دارالحکومت تائی پے کے متعدد علاقے بجلی سے محروم ہو گئے، لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے، زلزلے کے جھٹکوں کے باعث شہری خوفزدہ ہوکر گھروں سے باہر نکل آئے، جبکہ متعدد عمارتیں ایک جانب جھک گئیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ یہ زلزلہ 1999 کے زلزلے کے بعد 25 سالوں میں سب سے زیادہ طاقتور زلزلہ ہے، زلزلےکے بعد شدید متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیوں کا آغاز کر دیا گیا۔

یاد رہے کہ ستمبر 1999 میں تائیوان میں 7.6 شدت کا زلزلہ آیا تھا، جس میں جزیرے کی تاریخ کی سب سے مہلک قدرتی آفت میں لگ بھگ 2 ہزار 400 افراد ہلاک ہوئے۔

زلزلے کے بعد کی تصاویر

فوٹو: رائٹرز
فوٹو: رائٹرز

فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی

فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی

فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی

فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی

فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی

تبصرے (0) بند ہیں