• KHI: Fajr 4:14am Sunrise 5:43am
  • LHR: Fajr 3:18am Sunrise 4:58am
  • ISB: Fajr 3:13am Sunrise 4:57am
  • KHI: Fajr 4:14am Sunrise 5:43am
  • LHR: Fajr 3:18am Sunrise 4:58am
  • ISB: Fajr 3:13am Sunrise 4:57am

جلد ہی جموں و کشمیر کو ریاست کا درجہ دیا جائے گا، نریندر مودی

شائع April 12, 2024
—فوٹو: بی جے پی ٹوئٹر
—فوٹو: بی جے پی ٹوئٹر

بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ جلد ہی جموں و کشمیر کو ریاست کا درجہ دے کر وہاں ریاستی انتخابات بھی کرائے جائیں گے۔

نریندر مودی کی جانب سے جموں و کشمیر کو ریاست کا درجہ دینے کا اعلان آرٹیکل 370 کی خلاف ورزی ہے، جسے مودی کی حکومت نے 5 اگست 2019 کو ختم کردیا تھا۔

بھارتی آئین کے آرٹیکل 370 کے تحت جموں و کشمیر نیم خود مختار ریاست ہے اور اسے خصوصی اختیارات حاصل ہیں لیکن نریندر مودی نے مقبوضہ کشمیر کی مذکورہ خصوصی حیثیت کو 5 اگست کو 2019 کو ختم کردیا تھا۔

نریندر مودی کی جانب سے آرٹیکل 370 کے خاتمے کے بعد وہاں ریاستی انتخابات بھی نہیں ہوئے اور اب بھارتی وزیر اعظم نے مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت کو تبدیل کرنے کا اعلان کردیا۔

بھارتی اخبار انڈیا ٹوڈے کے مطابق نریندر مودی نے مقبوضہ کشمیر کے ادھم پور میں سیاسی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جلد ہی جموں و کشمیر کو ریاست کا درجہ دیا جائے گا۔

انہوں نے آرٹیکل 370 پر بھی بات کی اور کہا کہ مذکورہ آرٹیکل کو سیاسی فوائد کے لیے نافذ کیا گیا تھا اور اس کے خاتمے کے بعد مقبوضہ کشمیر کی حالت تبدیل ہوئی ہے۔

نریندر مودی نے کہا کہ آخری 10 سال میں مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی ترقی پوری فلم کا ٹریلر ہے، اگلے چند سال میں یہاں بہت کچھ تبدیل ہوگا۔

انہوں نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے وعدہ کیا کہ جلد ہی مقبوضہ کشمیر کو ریاست کا درجہ دے کر وہاں ریاستی انتخابات بھی کرائے جائیں گے۔

خیال رہے کہ بھارت میں 19 اپریل سے لوک سبھا کے انتخابات شروع ہو رہے ہیں جو چھ ہفتوں یعنی یکم جون تک جاری رہیں گے اور مختلف ریاستوں میں مرحلہ وار پولنگ ہوگی، وہاں 97 کروڑ افراد ووٹ کا استعمال کریں گے۔

کارٹون

کارٹون : 16 جون 2024
کارٹون : 15 جون 2024