— اے ایف پی فائل فوٹو
— اے ایف پی فائل فوٹو

دودھ صحت کے لیے بہت فائدہ مند مشروب ہے مگر اس صورت میں اگر وہ خالص ہو، اس میں ملاوٹ نہ صرف معیار ناقص کرتی ہے بلکہ یہ صحت کے لیے نقصان دہ بھی ثابت ہوسکتا ہے۔

دودھ میں پانی کے ساتھ ساتھ ڈیٹرجنٹ، یوریا، سینیتھک ملک اور مختلف کیمیکلز کو ملایا جاسکتا ہے یا ملایا جاتا ہے۔

ان میں سے بیشتر کیمیکلز دودھ میں شامل ہونے کے بعد طویل المعیاد بنیادوں پر صحت پر نقصان دہ اثرات مرتب کرسکتے ہیں۔

اگر دودھ میں ڈیٹرجنٹ ملا ہوا ہو تو وہ فوڈ پوائزننگ اور معدے کی دیگر پچیدگیوں کا باعث بن سکتا ہے جبکہ دیگر کیمیکلز سے امراض قلب، کینسر اور جان لیوا امراض کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

تاہم دودھ خالص ہے یا ملاوٹ شدہ، اس کو جانچنے کے کئی طریقے موجود ہیں۔

نیچے موجود ویڈیو میں بھارت کے محکمہ خوراک نے دودھ کے خالص ہونے یا نہ ہونے کا آسان طریقہ بتایا ہے۔

اور یہ آپ کو علم ہی ہوگا کہ صحت کے لیے نقصان دہ ہونے کے باوجود موجودہ دور میں ملاوٹ شدہ دودھ کتنا عام ہوتا جارہا ہے۔

تو اس ویڈیو میں دیا گیا طریقہ جانیں اور اس خطرے سے خود کو محفوظ رکھیں۔

زیادہ پڑھی جاٰنے والی خبریں

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران

انوکھا روپ سب کی توجہ کا مرکز

انوکھا روپ سب کی توجہ کا مرکز
فلم ’رابطہ‘ کے ٹریلر کو تو شائقین کا ملا جھلا ردعمل موصول ہوا، تاہم ایک کردار کے انوکھے روپ نے سب کو حیران کیا۔
اپ ڈیٹ اپريل 22, 2017 01:20pm

LARGE_RECTANGLE_BOTTOM - /1029551/Dawn_ASA_Unit_670x280


تبصرے (0) بند ہیں