ہارٹ اٹیک یا فالج کا خطرہ ظاہر کرنے والا ٹیسٹ

26 جنوری 2018

ای میل

یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا— شٹر اسٹاک فوٹو
یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا— شٹر اسٹاک فوٹو

امراض قلب یا خون کی شریانوں میں پیچیدگیاں دنیا بھر میں اموات کی بڑی وجوہات میں سے ایک ہے اور عام طور پر انہیں پکڑنا آسان نہیں ہوتا۔

مگر ایک معمولی سی کوشش سے آپ خون کی شریانوں کے امراض کے خطرے کا اندازہ لگاسکتے ہیں اور اچھی بات یہ ہے کہ اس کے لیے آپ کو بس ایک سے دو منٹ کا وقت درکار ہوتا ہے جبکہ خرچہ بھی کوئی نہیں ہوتا۔

مزید پڑھیں : ایک عام ٹیسٹ جو فالج کے خطرے کی نشاندہی کرے

یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

نارتھ ٹیکساس یونیورسٹی کی تحقیق میں یہ طریقہ کار بتایا گیا۔

تحقیق کے مطابق فرش پر بیٹھ جائیں جبکہ کمر اور سر کو دیوار سے لگالیں۔

اس کے بعد آگے کی جانب جھکیں اور اپنی انگلیوں سے پیروں کو چھونے کی کوشش کریں۔

اگر تو آپ کی انگلیاں پیروں کو چھونے میں ناکام رہے بلکہ بہت دور رہیں تو یہ خون کی شریانوں کے مسائل کے خطرے کی گھنٹی ہے۔

تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ لچکدار جسم لچکدار شریانوں کی پیشگوئی ثابت ہوتا ہے جبکہ غیرلچکدار ہونا خطرے کی علامت ہے۔

یہ بھی پڑھیں : کیا آپ یہ 10 فٹنس ٹیسٹ پاس کرسکتے ہیں؟

تحقیق میں بتایا گیا کہ جسمانی طور پر لچک سے محروم یا اس ٹیسٹ میں اپنے پیروں کو چھونے میں ناکام رہنے والے افراد کی شریانیں اکڑن کا شکار ہوتی ہیں۔

جب شریانیں لچکدار ہوتی ہیں تو ان میں خون کا بہاﺅ آسانی سے ہوتا ہے جبکہ اکڑن کی شکار شریانیں جو جسمانی طور پر سرگرم نہ رہنے یا تمباکو نوشی جیسی نقصان دہ عادات کا نتیجہ ہوسکتا ہے، دل کے لیے خون کو پمپ کرنا مشکل بنا دیتا ہے۔

تحقیق کے مطابق جب دل کو اپنے کام کرنے میں مشکل کا سامان ہو تو ہارٹ اٹیک یا فالج کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔