پاکستان میں پہلی بار ’خواجہ سراؤں‘ کے اسکول کا قیام

اپ ڈیٹ 06 اپريل 2018

ای میل

— فوٹو: بشکریہ دی جینڈر گارڈین
— فوٹو: بشکریہ دی جینڈر گارڈین

پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار خواجہ سرا کمیونٹی کی تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت کے لیے قائم کیے جانے والے اسکول کا لاہور میں 15 اپریل سے آغاز ہوگا۔

’دی جینڈر گارڈین‘ نامی اس اسکول میں خواجہ سراؤں کو پرائمری سے انٹرمیڈیٹ تک کی 12 سالہ تعلیم دی جائے گی۔

اس کے علاوہ خواجہ سرا برادری کے افراد اسکول سے ٹیکنکل تعلیم یعنی فیشن ڈیزائننگ، بیوٹیشن، ہیئر اسٹائلنگ، کڑھائی، موبائل و کمپیوٹر ریپئرنگ، گرافکس ڈیزائننگ، کمپیوٹر بیسک ایپلیکیشن اور دیگر کورسز کی تعلیم بھی حاصل کر سکیں گے۔

اسکول کے بانی آصف شہزاد نے ڈان نیوز سے گفتگو کے دوران بتایا کہ یہ اسکول ’ایکسپلورنگ فیوچر ایجوکیشن‘ نامی غیر سرکاری تنظیم (این جی او) کے اشتراک سے بنایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان کی پہلی خواجہ سرا نیوز کاسٹر

خواجہ سراؤں کے اس اسکول کی پہلی برانچ ماڈل ٹاﺅن لاہور میں، دوسری برانچ اسلام آباد میں اور تیسری برانچ کراچی میں بنائی جائیں گی۔

انتظامیہ کے مطابق خواجہ سرا برادری کے 40 سے زائد خواہشمند طلبہ اسکول کے آغاز سے قبل ہی اپنی رجسٹریشن کرا چکے ہیں۔

اسکول کی افتتاحی تقریب قذافی اسٹیڈیم لاہور کے الحمرا ہال میں منعقد ہوگی جس میں ملک کے نامور فنکار شرکت کریں گے۔