چلنے پھرنے سے قاصر نوجوان علاج کے لیے مسیحا کا منتظر

اپ ڈیٹ 21 ستمبر 2019

ای میل

چلنے پھرنے سے قاصر بے بسی کی تصویر بنا کراچی کا 21 سالہ نوجوان علاج کیلئے کسی مسیحا کا منتظر ہے۔

مچھر کالونی کا رہائشی جنید والدین کا اکلوتا چشم و چراغ اور چھوٹی بہن کا واحد سہارا ہے۔

نوجوان اپنے گھر والوں کا پیٹ پالنے کے لیے مزدہ چلاتا تھا، مگر ایک حادثے نے اس سے چلنے پھرنے کی صلاحیت چھین لی۔

بستر سے لگتے ہی جنید کو مختلف بیماریوں نے گھیر لیا اور اب قوت سماعت اور گویائی سے بھی محروم ہوگیا۔

جنید کے والد سبزی فروش ہیں جن کی آمدنی سے 3 وقت کی روٹی مشکل سے پوری ہوتی ہے۔

بیٹے کے علاج کے لیے پیسے نہ ہونے کے باعث بوڑھا باپ اپنے جواں سال بیٹے کو سسکتا دیکھ کر غم سے نڈھال ہے۔

جنید کے والد نے بتایا کہ 'میں غریب آدمی ہوں میرے پاس کچھ بھی نہیں ہے میں بچے کا علاج چاہتا ہوں میں بھوکا رہنے کے لیے تیار ہوں لیکن میرے بیٹے کا علاج ہوجائے'۔

نوجوان کی والدہ گھروں میں صفائی ستھرائی کا کام کرکے اپنے خاندان کی کفالت کرتی ہیں۔

جنید کی چھوٹی بہن نے بھی اپنے بھائی کی حالت دیکھ کر آنکھوں میں آنسو لیے علاج کے لیے مدد کی اپیل کی ہے۔

کرائے پر ایک کمرے میں زندگی کاٹنے والا یہ خاندان کسی مسیحا کا منتظر ہے جو ان کی تمام مشکلات حل کرکے انہیں اس پریشانی سے باہر نکال سکے۔