ہواوے کا پہلا فولڈایبل فون آخرکار فروخت کے لیے پیش

17 نومبر 2019

ای میل

ہواوے میٹ ایکس — رائٹرز فوٹو
ہواوے میٹ ایکس — رائٹرز فوٹو

ہواوے نے اپنا پہلا فولڈ ایبل فون میٹ ایکس چین میں فروخت کے لیے پیش کردیا ہے۔

اس فون کو رواں سال فروری میں موبائل ورلڈ کانگریس کے دوران پیش کیا گیا تھا اور جون میں اسے فروخت کے لیے پیش کرنا تھا، مگر پھر اسے ستمبر اور پھر اکتوبر میں متعارف کرانے کا اعلان کیا گیا، مگر اب جاکر یہ صارفین کو دستیاب ہوا ہے۔

ہواوے کا پہلا فولڈ ایبل اسمارٹ فون گوگل ایپس کے بغیر صارفین کو پیش کیا گیا ہے۔

جمعے کو ہواوے نے چین میں اپنے آن لائن اسٹور میں یہ فون فروخت کے لیے پیش کیا جس کی قیمت 16 ہزار 999 چینی یوآن (3 لاکھ 76 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) رکھی گئی۔

یہ فون فولڈ شکل میں فرنٹ پر 6.6 انچ اور بیک پر 6.38 انچ اسکرین کے ساتھ ہوتا ہے جبکہ جب اسے ان فولڈ کیا جاتا ہے تو اسکرین کا حجم 8 انجچ ہوجاتا ہے۔

یہ فون 5 جی سے لیس ہے جبکہ کمپنی کا اپنا کیرین 980 پراسیسر اور ڈوئل سیل 4500 ایم اے ایچ بیٹری اس میں دی گئی ہے۔

اس فون میں گرپ بار نامی ایک فیچر دیا گیا ہے جو ایک ہاتھ سے بھی اس ڈیوائس کو پکڑنے میں مدد دیتا ہے۔

اس فون میں بالون 5000 فائیو جی موڈیم، 8 جی بی ریم اور 256 جی بی اسٹوریج دی گئی ہے۔

فروری میں کمپنی کا دعویٰ تھا کہ فائیو جی موڈیم بہت تیز ہے اور اس کی ڈا?ن لوڈ اسپیڈ 4.6 جی بی پی ایس ہے یعنی بیشتر 4 جی موڈیم سے 10 گنا تیز جبکہ کوالکوم ایکس 50 فائیو جی موڈیم سے دوگنا تیز۔

اس میں ڈا?ن لوڈنگ رفتار اتنی تیز ہے کہ کمپنی کے مطابق صارفین ایک جی بی فلم محض 3 سیکنڈ میں ڈاﺅن لوڈ کرسکتے ہیں۔

اس کا پاور بٹن فنگرپرنٹ ریڈر کے طور پر بھی کام کرتا ہے۔

فون میں لائیسا ڈیزائن کیمرے اور یو ایس بی پورٹ سی بھی موجود ہے۔

ابھی یہ واضح نہیں کہ یہ فون دیگر ممالک میں کب تک دریافت ہوگا تاہم کمپنی کی جانب سے اکتوبر میں کیا گیا تھا کہ اس فون کی دستیابی کا انحصار دیگر ممالک میں فائیو جی ٹیکنالوجی پر ہوگا۔