• KHI: Asr 5:11pm Maghrib 7:16pm
  • LHR: Asr 4:54pm Maghrib 7:01pm
  • ISB: Asr 5:03pm Maghrib 7:11pm
  • KHI: Asr 5:11pm Maghrib 7:16pm
  • LHR: Asr 4:54pm Maghrib 7:01pm
  • ISB: Asr 5:03pm Maghrib 7:11pm

'کیا سیاستدان اپنی عزت چوک پر رکھ کر اسمبلی آئیں کہ ہر کوئی چھتر مارے'

شائع January 6, 2020
اب ہم پر یو ٹیوب چینلز کی بلا نازل ہوگئی ہے، وفاقی وزیر — فوٹو: ڈان نیوز
اب ہم پر یو ٹیوب چینلز کی بلا نازل ہوگئی ہے، وفاقی وزیر — فوٹو: ڈان نیوز

وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ یہ الیکشن لڑ کر اسمبلی میں آنے کی شرط یہ ہے کہ ہم اپنی عزت چوک پر رکھ کر آئیں کہ آتا جاتا آدمی ہمیں چھتر مارے۔

اسپیکر قومی اسمبلی کی صدارت میں قومی اسمبلی کا اجلاس وقفے کے بعد دوبارہ شروع ہوا تو وزیر مملکت پارلیمانی امور علی محمد خان نے رولز معطل کرنے کی تحریک پیش کی جو منظور کرلی گئی۔

فواد چوہدری نے ایک ٹی وی اینکر کو تھپڑ رسید کرنے کے معاملے کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ 'پہلے ٹی وی چینلز کے درمیان ریٹنگ کی دوڑ لگی ہوئی تھی، اب ہم پر یو ٹیوب چینلز کی بلا نازل ہوگئی ہے، دو دن پہلے ایک اینکر نے اپنے یو ٹیوب چینل پر پروگرام کیا اور میرے اور دیگر کے بارے میں الزامات لگائے، میں نے پوچھا کہ آپ ویڈیو دکھائیں تو اینکر نے کہا کہ ویڈیو میرے پاس نہیں کسی اور کے پاس ہے۔'

انہوں نے کہا کہ 'یہ ایک بڑا مسئلہ ہے، میں نے اس اینکر سے کہا کہ شاید آپ کے اپنے گھر میں آپ کی ماں، بہنوں کا احترام نہ ہو لیکن ہمارے گھروں میں ہے، جب آپ ریٹنگز کے لیے کسی کی پگڑی اچھا لیں گے اور اس کا کوئی مداوا نہیں ہوگا تو کیا یہ الیکشن لڑنے کی شرط ہے کہ ہم اپنی عزت چوک پر رکھ کر آئیں کہ آتا جاتا آدمی ہمیں چھتر مارے۔'

فواد چوہدری نے اسپیکر سے درخواست کی کہ اس معاملے کا نوٹس لیا جائے، ایوان کی ایک خصوصی کمیٹی تشکیل دی جائے جس میں اپوزیشن اراکین بھی شامل ہوں، کمیٹی یہ دیکھے کہ میڈیا سے متعلق قوانین پر عملدرامد کیوں نہیں ہو رہا، پی ٹی اے، ایف آئی اے کا سائبر کرائم وِنگ کیوں نوٹس نہیں لے رہا، عدالتیں اپنے معاملات میں فوری توہین کا نوٹس لیتی ہیں لیکن اراکین اسمبلیوں کی بھی عزت و وقار ہے۔'

فواد چوہدری نے جو بویا آج وہی کاٹ رہے ہیں، خواجہ آصف

— فوٹو: ڈان نیوز
— فوٹو: ڈان نیوز

مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ آصف نے معاملے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ 'یہ گلہ ہمیں میڈیا یا کسی اور ادارے سے نہیں بلکہ اپنے آپ سے کرنا چاہیے، ہم اپنی عزت کی نیلامی میں خود تلے ہوتے ہیں، یہاں ایوان میں جو ہوتا ہے ہم خود پگڑی اچھلواتے ہیں جبکہ ہم خود اداروں کو ایک دوسرے کے خلاف استعمال کرتے ہیں۔'

انہوں نے کہا کہ 'ڈیڑھ سال میں بے دردی سے قوانین اور اداروں کا ایک دوسرے کے خلاف استعمال کیا گیا، ایک دوسرے کے خلاف قوانین سے پگڑی اچھالنے کا موقع ملتا ہے، کسی ادارے کے خلاف بات ہو تو پیمرا فوری حرکت میں آتا ہے لیکن سیاسی مخالفین کی بات ہو تو پیمرا بلکل حرکت میں نہیں آتا، ہم نے اپنے گریبان خود ان کے ہاتھوں میں دیے ہیں، حکومتی رکن کی تشویش میں ان کے ساتھ ہوں لیکن کوئی پارٹی ان کی زبان سے محفوظ نہیں رہی۔'

مزید پڑھیں: فواد چوہدری نے غنڈوں کے ساتھ حملہ کیا، مبشر لقمان کی مقدمے کیلئے درخواست

ان کا کہنا تھا کہ 'یہ فصل انہوں نے خود بوئی ہے جسے یہ کاٹ رہے ہیں، جب تک ایوان اور اس کے اراکین کی عزت نہیں ہوگی تو لوگ ہماری پگڑیاں اچھالیں گے اور گالیاں دیں گے۔'

خواجہ آصف نے کہا کہ 'فواد چوہدری خود اینکر رہے ہیں، رکارڈ نکالیں یہ خود لوگوں کے ساتھ کیا کرتے رہے ہیں، ایک دوسرے پر الزام لگاتے وقت بھول جاتے ہیں کہ کل ہم پر بھی الزام لگ سکتا ہے، ایک دوسرے کی عزت کرنے کی روایت ڈالے تاکہ کل یہاں کھڑے ہو کر خصوصی کمیٹی کی تشکیل کا مطالبہ نہ کرنا پڑے، ایوان کے ہر رکن کی عزت و تکریم ہونی چاہیے جبکہ ہمیں اپنے رویے درست کرنے کے لیے کمیٹی بنانی چاہیے۔'

انہوں نے اسپیکر سے درخواست کی کہ آپ ایسی روایات کو جنم دیں کہ آنے والا یاد کرے کہ اسد قیصر نے نئی روایات کو جنم دیا۔

لیگی رہنما نے امریکا اور ایران کے مسئلے پر بریفنگ کے لیے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو بلانے کا مطالبہ بھی کیا۔

ایف آئی اے الزام لگانے والوں کو پکڑے، زرتاج گل

وفاقی وزیر زرتاج گل کا اظہار خیال کرتے ہوئے کہنا تھا کہ 'جب آپ یہاں کھڑے ہو کر دوسروں کو نصیحتیں کرتے ہیں، خواتین کو گالیاں دیتے ہیں تب یہ یاد رکھنا چاہیے کہ کس طرح خواتین انتخابات میں حصہ لے کر یہاں بات کرتی ہیں اور اپنے حلقے کی نمائندگی کرتی ہیں۔'

انہوں نے کہا کہ 'اگر حقیقت میں کوئی ویڈیو ہے تو سامنے لائی جائے ورنہ ایف آئی اے الزام لگانے والوں کو پکڑے، آپ خواتین کی تذلیل پر خوش ہوتے ہیں، عزت سب کی برابر ہے۔'

اسپیکر نے زرتاج گل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ 'آپ تحریک لے کر آئیں ہم بحث کرائیں گے۔'

یہ بھی پڑھیں: فواد چوہدری نے مبشر لقمان کو تھپڑ رسید کردیا؟

واضح رہے کہ گزشتہ روز کو یہ اطلاعات سامنے آئی تھیں کہ فواد چوہدری نے لاہور میں شادی کی ایک تقریب کے دوران معروف اینکر پرسن مبشر لقمان کو تھپڑ رسید کردیا تھا۔

نجی ٹی وی چینل ’جیو‘ نے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا تھا کہ چوہدری فواد حسین نے مبشر لقمان کو لاہور میں صوبائی وزیر محسن لغاری کے بیٹے کے ولیمے کی تقریب میں تھپڑ رسید کیا۔

رپورٹ کے مطابق ولیمے کی تقریب میں چوہدری فواد حسین ساتھی سیاستدانوں سے بات چیت میں مصروف تھے کہ تقریب میں اینکر مبشر لقمان بھی پہنچے، جس پر وفاقی وزیر نے ان سے کچھ دن قبل یوٹیوب پر کیے جانے والے پروگرام سے متعلق سوالات کیے جس پر دونوں کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی۔

تقریب میں موجود عینی شاہدین نے بتایا کہ فواد چوہدری نے مبشر لقمان کو تھپڑ رسید کردیا تو ساتھی سیاستدانوں نے دونوں کو الگ کرکے معاملے کو ٹھنڈا کرنے کی کوشش کی اور بعد ازاں دونوں تقریب سے چلے گئے۔

جس کے بعد اب مبشر لقمان نے فواد چوہدری کے خلاف مقدمہ درج کروانے کا فیصلہ کرلیا۔

مبشر لقمان نے گزشتہ روز فواد چوہدری کے خلاف فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) درج کرنے کے لیے لاہور ماڈل ٹاؤن کے پولیس اسٹیشن میں درخواست دائر کردی تھی۔

خیال رہے کہ مبشر لقمان نے 4 جنوری کو اپنے یوٹیوب چینل پر ایک پروگرام کیا تھا جس میں ان کے ساتھ ٹی وی اینکر رائے ثاقب کھرل بھی نظر آئے تھے جنہوں نے کئی انکشافات کیے تھے۔

رائے ثاقب کھرل نے ہی ان کے پروگرام میں دعویٰ کیا تھا کہ آئندہ چند دن میں ٹک ٹاک اسٹار حریم شاہ، وفاقی وزیر فواد چوہدری سمیت حکمران جماعت کے دیگر اہم سیاستدانوں کی ویڈیوز لیک کریں گی۔

مذکورہ اینکر نے دعویٰ کیا تھا کہ حریم شاہ کے پاس فواد چوہدری کی غیر اخلاق ویڈیوز موجود ہیں، ساتھ ہی انہوں نے یہ انکشاف بھی کیا تھا کہ ٹک ٹاک اسٹار کے پاس ایک خاتون وزیر کی بھی نامناسب ویڈیو موجود ہے۔

یاد رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں جب وفاقی وزیر نے کسی اینکر کو تھپڑ رسید کیا ہو، اس سے قبل فواد چوہدری جون 2019 میں بھی معروف اینکر سمیع ابراہیم کو تھپڑ مارا تھا۔

کارٹون

کارٹون : 29 مئی 2024
کارٹون : 28 مئی 2024