آسٹریلیا،شادی کی تقریب میں شریک 37 مہمان کورونا وائرس کا شکار

22 مارچ 2020

ای میل

— شٹر اسٹاک فوٹو
— شٹر اسٹاک فوٹو

اسکاٹ میگس اور ایما میٹ کالف گزشتہ ہفتے مالدیپ میں ہنی مون کے لیے موجود تھے جب انہیں ایک میسج ملا کہ ان کی شادی میں شریک 2 مہمانوں مین کورونا وائرس کی تصدیق ہوگی ہے۔

اور یہ تو صرف آغاز تھا۔

21 مارچ تک آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے اس جوڑے کی شادی 6 مارچ کو ہوئی اور اس میں شریک 37 مہمانوں میں نئے نوول کورونا وائرس سے ہونے والی بیماری کووڈ 19 کی تشخیص ہوچکی ہے۔

سڈنی مارننگ ہیرالڈ سے بات کرتے ہوئے اس جوڑے نے بتایا کہ اس خبر نے ان کی دنیا کو 'اندھیر' کردیا ہے۔

37 سالہ اسکاٹ میگس نے بتایا ' ہم نے کبھی اس کا تصور نہیں کیا تھا'۔

نوبیاہتا جوڑے میں بھی اس وائرس کا ٹیسٹ مالدیپ سے سڈنی واپس پہنچنے پر ہوا مگر وہ اس سے محفوظ قرار پائے۔

اسکاٹ میگس کا کہنا تھا 'یہ ناقابل یقین ہے، ہم پوری رات لوگوں سے گلے ملتے رہے، میرے پاس وضاحت کے لیے الفاظ نہیں، یقین کرنا بھی مشکل ہے'۔

آسٹریلیا میں اب تک کورونا وائرس کے 13 سو سے زائد کیسز کی تصدیق ہوچکی ہے، 7 مریض ہلک اور 88 صحت یاب ہوچکے ہیں۔

آسٹریلیا کے وزیراعظم اسکاٹ موریسن نے جمعے کو غیرملکیوں کے لیے ملک کی سرحد بند کردی جبکہ رواں ہفتے سو سے زائد افراد پر مشتمل غیرضروری اجتماع پر بھی پابندی عائد کی گئی۔

تاہم اسکاٹ میگس اور ان کی اہلیہ کا کہنا تھا کہ جس وقت ان کی شادی ہوئی، اس وقت تک اس طرح کی پابندیوں کا اطلاق نہیں ہووا تھا۔

اسکاٹ میگس کے مطابق ' چند دنوں میں آسٹریلیا بالکل بدل کر رہ گیا ہے، جب ہماری شادی ہوئی تو کوئی سفری یا اجتماع پر پابندیاں نہیں تھیں اور ہمیں اب جو معلومات حاصل ہے، اس کا علم پہلے ہوتا، تو ہم کبھی لوگوں کو خطرے میں نہیں ڈالتے'۔

تاہم اب 37 افراد کی بیماری کی خبر پھیلنے پر اس جوڑے اور شادی میں شریک دیگر افراد کو آن لائن بہت زیادہ نفرت کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

دولہا نے یاہو نیوز کو بتایا 'جب پہلی بار ہمیں اس کا علم ہوا تو سکتے میں آگئے تھے اور اپنے دوستوں کے تحفظ کے خواہشمند تھے، مگر عناصر ہمارے کنٹرول سے باہر تھے، ہماری شادی صفحہ اول کی نیوز بن جائے گی، اس کا ہم نے کبھی تصور بھی نہیں کیا تھا'۔

ایما میٹ نے بتایا کہ لوگ ہم پر غیرذمہ داری اور وائرس پھیلانے کا الزام عائد کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا 'مجھے توقع پے کہ لوگ ایک دوسرے سے کچھ اچھا سلوک کریں گے اس وقت جب لوگ مشکلات کا سامنا کررہے ہیں، شرمندہ کرنا وہ آخری چیز ہوسکتی ہے جس کی ہمیں ضرورت ہوگی'۔

شادی میں شرکت کرنے والے بیشتر مہمان اس وقت آئسولین میں ہیں جن میں خاندان کے بزرگ افراد بھی شامل ہیں۔

اسی طرح تقریب میں شرکت کرنے والے ایک آسٹریلین سینیٹر اور 30 ہفتے کی حاملہ خاتون اور اس کے شوہر میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔