• KHI: Maghrib 7:24pm Isha 8:51pm
  • LHR: Maghrib 7:09pm Isha 8:45pm
  • ISB: Maghrib 7:19pm Isha 9:00pm
  • KHI: Maghrib 7:24pm Isha 8:51pm
  • LHR: Maghrib 7:09pm Isha 8:45pm
  • ISB: Maghrib 7:19pm Isha 9:00pm

سارک کی وزرائے صحت ویڈیو کانفرنس کیلئے پاکستان کی تجویز کی حمایت

شائع April 3, 2020
ایسالا رووان ویراکون پاکستان کی جانب سے وزرائے صحت کی ویڈیو کانفرنس کی تجویز کو سراہا—فائل فوٹو: اے ایف پی
ایسالا رووان ویراکون پاکستان کی جانب سے وزرائے صحت کی ویڈیو کانفرنس کی تجویز کو سراہا—فائل فوٹو: اے ایف پی

اسلام آباد: جنوبی ایشیا کی تنظیم برائے علاقائی تعاون (سارک) کے سیکریٹری جنرل ایسالا رووان ویراکون نے کووِڈ 19 عالمی وبا پر 98 رکن ممالک کے وزرائے صحت کی ویڈیو کانفرنس کے سلسلسے میں پاکستان کی پیش کردہ تجویز کی حمایت کردی۔

دفتر خارجہ کے جاری کردہ بیان میں بتایا گیا کہ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اور سارک کے سیکریٹری جنرل کے درمیان ٹیلی فونک گفتگو ہوئی جس میں ایسالا رووان ویراکون نے پاکستان کی جانب سے وزرائے صحت کی ویڈیو کانفرنس کی تجویز کو سراہا۔

اس موقع پر سارک کے سیکریٹری جنرل اور وزیر خارجہ نے کورونا وائرس کی عالمی وبا سے لڑنے کے لیے مشترکہ کوششوں کی ضرورت پر اتفاق کیا۔

یہ بھی پڑھیں: سارک کے تحت کورونا فنڈ کا طریقہ کار تاحال توجہ طلب ہے، پاکستان

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کی 15 تاریخ کو بھارت نے کورونا وائرس کے حوالے سے سارک سربراہان کی ویڈیو کانفرنس کی میزبانی کی تھی اور اس وقت سے ہی پاکستان سارک کے وزرائے صحت کے اجلاس کی تجویز پر زور دے رہا تھا۔

اس سلسلے میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارت اور افغانستان کے سوا دیگر تمام ممالک کے ہم منصبوں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا تھا۔

اس کے علاوہ پاکستان نے کووِڈ 19 کے لیے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی تجویز پر قائم کردہ سارک فنڈ کے استعمال کے حوالے سے وضاحت بھی مانگی تھی اور یہ مطالبہ کیا تھا کہ اسے سارک کے سیکریٹری جنرل کے اختیار میں ہونا چاہیے۔

مزید پڑھیں: سارک ممالک کی کووڈ-19 پر ویڈیو کانفرنس، ظفر مرزا کا خطاب

خیال رہے کہ پاکستان کے سوا خطے کے دیگر تمام ممالک اس فنڈ کے لیے وعدے کرچکے ہیں جو مجموعی طور پر ایک کروڑ 88 لاکھ ڈالر کی رقم بنتی ہے۔

دفتر خارجہ کے بیان میں کہا گیا کہ ’وزیر خارجہ نے اس بات کو بھی دہرایا کہ مجوزہ سارک کووڈ19 ایمرجنسی فنڈ سارک کے جنرل سیکریٹری کے اختیار میں ہونا چاہیے اور اس فنڈ کو استعمال کرنے کا طریقہ کار رکن مالک کی مشاورت سے طے کیا جانا چاہیے‘۔

خیال رہے کہ سری لنکا سے تعلق رکھنے والے سفارتکار ایسالا رووان ویراکون نے گزشتہ ماہ سارک کے 14ویں سیکریٹری جنرل کا منصب سنبھالا تھا اس کے بعد سے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا ان کے ساتھ یہ پہلا ٹیلیفونک رابطہ تھا۔

یہ بھی پڑھیں: کورونا وائرس: پاکستان، مالدیپ کے مابین سارک کانفرنس بلانے پر تبادلہ خیال

وزیر خارجہ نے انہیں پاکستان کی مکمل حمایت کی یقین دہانی کروائی اور اس امید کا اظہار کیا کہ ان کے دور میں سارک تنظیم متحرک اور آگے بڑھے گی۔

دفتر خارجہ کے بیان میں کہا گیا کہ ’وزیرخارجہ نے معاشی نمو کو تیز کرنے کے مشترکہ ہدف کا ادراک کرنے اور جنوبی ایشیا کے عوام کی بہبود کے فروغ کے لیے پاکستان کی جانب سے سارک سیکریٹریز اور رکن ممالک کے ساتھ مکمل کر کام کرنے کا عزم دہرایا‘۔


یہ خبر 3 اپریل 2020 کو ڈان اخبار میں شائع ہوئی۔

کارٹون

کارٹون : 14 جولائی 2024
کارٹون : 11 جولائی 2024