بھارت: بل ادا نہ کرنے پر ہسپتال انتظامیہ نے عمر رسیدہ شخص کو باندھ دیا

اپ ڈیٹ 08 جون 2020

ای میل

معاملے کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد تفتیش کا حکم دے دیا گیا—فوٹو: دی ہندو
معاملے کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد تفتیش کا حکم دے دیا گیا—فوٹو: دی ہندو

بھارتی ریاست مدھیا پردیش کے ضلع شاجاپور کے ایک نجی ہسپتال انتظامیہ نے بل ادا نہ کرپانے پر 80 سالہ بزرگ کو رسیوں میں جکڑ کر ہسپتال کے بستر سے باندھ دیا۔

نجی ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے بزرگ شخص کو رسیوں اور زنجیروں سے باندھنے کی ویڈیو گزشتہ روز سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد ضلعی انتظامیہ اور ریاست کے وزیر اعلیٰ نے نوٹس لیتے ہوئے معاملے کی تفتیش کا حکم دے دیا۔

بھارتی اخبار دی ہندو کے مطابق وائرل ہونے والی ویڈیو میں 80 سالہ بزرگ شخص کو نجی ہسپتال کے بستر سے باندھے ہوئے دیکھا جاسکتا تھا۔

ویڈیو میں ہسپتال کے بستر سے بندھے ہوئے بزرگ شخص کی شناخت ریاست کے ضلع راج گڑھ کے رہائشی کے طور پر ہوئی، جنہیں پیٹ میں تکلیف کے باعث مذکورہ ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: بھارتی ہسپتال میں کووڈ مریضوں کے ساتھ لاشوں کی ویڈیو وائرل

بزرگ شخص کو پیٹ میں درد کی شکایت کے بعد شاجاپور کے نجی ہسپتال داخل کرایا گیا، جہاں ان کے اہل خانہ نے ابتدائی طور پر ہسپتال میں 6 ہزار روپے کی رقم ایڈوانس کے طور پر جمع کروائی۔

بزرگ شخص کی بیٹی نے دعویٰ کیا کہ دوران علاج انہوں نے ہسپتال انتظامیہ کو مزید 5 ہزار روپے بھی ادا کیے اور جب ان کے والد کی صحت بہتر ہوئی تو انہوں نے انتظامیہ کو بولا کہ ان کے پاس علاج کے لیے مزید پیسے نہیں، اس لیے انہیں اجازت دی جائے۔

بزرگ شخص کی بیٹی نے دعویٰ کیا کہ ہسپتال انتظامیہ نے انہیں ڈسچارج فائل دیے بغیر 1127 روپے مزید جمع کروانے کو کہا اور ان کی جانب سے انکار کے بعد ان کے والد کو پکڑ کر بستر کے ساتھ باندھ دیا گیا۔

مذکورہ شخص کے بستر سے باندھنے کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد کئی سیاستدانوں اور سماجی رہنماؤں نے ہسپتال انتظامیہ کے عمل کو غیر انسانی قرار دیتے ہوئے ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔

ویڈیو وائرل ہونے کے بعد ریاست کے وزیر اعلیٰ شوراج سنگھ چوہان نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے محکمہ صحت کے حکام کو ہدایت کی کہ ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔

وزیر اعلیٰ کی ہدایت پر ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر (ڈی ایچ او) کی سربراہی میں تفتیشی کمیٹی بناکر معاملے کی تفتیش کا بھی آغاز کردیا گیا۔

مزید پڑھیں: بھارت: ہسپتال میں عقائد کی بنیاد پر کورونا مریضوں کے الگ وارڈز کا انکشاف

آخری اطلاعات کے مطابق ہسپتال میں باندھے جانے والے بزرگ شخص کو بعد ازاں ڈسچارج کردیا گیا تھا اور وہ طبیعت بہتر ہونے کے بعد آبائی گاؤں جا چکے تھے اور اب تفتیشی ٹیم ان کے گاؤں جاکر ان کا بیان ریکارڈ کرنے سمیت معاملے کی مزید تتفتیش کرے گی۔

بزرگ شخص کو پیسے ادا نہ کرنے کی وجہ سے ہسپتال کے بستر سے باندھنے کا واقعہ ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب کہ بھارت میں کورونا وائرس کی وجہ سے ہسپتالوں میں مریضوں کا رش بڑھ گیا ہے اور ہسپتالوں نے فیسوں میں بھی اضافہ کر رکھا ہے۔

بھارت کورونا وائرس کے مریضوں کے حوالے سے جنوبی ایشیائی خطے میں سب سے بڑا متاثرہ ملک ہے، جہاں 8 جون کی دوپہر تک کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 2 لاکھ 59 ہزار کے قریب جا پہنچی تھی۔

بھارت میں کورونا کے باعث 8 جون کی دوپہر تک ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر 7 ہزار 200 سے زائد ہوچکی تھی۔