ملکی اقتصادی سفارتکاری کے فروغ کیلئے 'اکنامک آؤٹ ریچ اپیکس کمیٹی' کے قیام کا فیصلہ

23 ستمبر 2020

ای میل

اقتصادی سفارت کاری کا فروغ وقت کی اہم ضرورت ہے، وزیر اعظم عمران خان — فوٹو: پی آئی ڈی
اقتصادی سفارت کاری کا فروغ وقت کی اہم ضرورت ہے، وزیر اعظم عمران خان — فوٹو: پی آئی ڈی

وفاقی حکومت نے ملکی اقتصادی سفارت کاری کے فروغ کے لیے 'اکنامک آؤٹ ریچ اپیکس کمیٹی' کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی 'اے پی پی' کے مطابق وزیر اعظم عمران خان زیر صدارت اجلاس میں ملکی اقتصادی سفارت کاری کے فروغ کے حوالے سے اہم فیصلے کیے گئے۔

اجلاس میں ملکی اقتصادی سفارت کاری کے فروغ کے لیے 'اکنامک آؤٹ ریچ اپیکس کمیٹی' کے قیام کا فیصلہ کیا گیا۔

اقتصادی سفارت کاری کے فروغ کے حوالے سے معاون خصوصی ڈاکٹر معید یوسف کو فوکل پرسن بنایا گیا ہے۔

اجلاس میں متعلقہ وفاقی وزارتوں، صوبائی محکموں اور دیگر اداروں کے مابین روابط اور اہداف کے حصول کے لیے 'اکنامک آؤٹ ریچ کوآرڈینیشن گروپ' کے قیام کا بھی فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں ملکی اقتصادی سفارت کاری کے فروغ کے حوالے سے ملکی پوٹیشنل، درپیش چیلنجز اور ان پر قابو پانے کے حوالے سے روڈ میپ وزیر اعظم کو پیش کیا گیا۔

وزیر اعظم نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اقتصادی سفارت کاری کا فروغ وقت کی اہم ضرورت ہے، اس سے بیرونی ممالک سے نہ صرف دوطرفہ تعلقات مزید مستحکم ہوں گے بلکہ معاشی میدان میں موجود صلاحیت سے بھی بھرپور فائدہ اٹھایا جا سکے گا۔

انہوں نے ہدایت کی کہ بیرون ممالک میں تعینات پاکستانی سفارت خانے اقتصادی سفارت کاری کے فروغ پر بھرپور توجہ دیں۔

عمران خان نے چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ کو ہدایت کی کہ مختلف شعبوں میں دلچسپی کا اظہار کرنے والے بیرونی سرمایہ کاروں کو ہر ممکنہ سہولت کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔

اجلاس میں وفاقی وزرا محمد حماد اظہر، سینیٹر شبلی فراز، سید فخر امام، فواد احمد، مشیران ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، عبدالرزاق داؤد، معاونین خصوصی ڈاکٹر معید یوسف، ڈاکٹر فیصل سلطان، سید ذوالفقار عباس بخاری، چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ، سیکریٹری خارجہ و دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔