نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ: سندھ کی کے پی کو شکست، سدرن کی سینٹرل پنجاب کے خلاف فتح

اپ ڈیٹ 14 اکتوبر 2020

ای میل

دانش عزیر نے 42 گیندوں پر 72 رنز بنائے—فوٹو:پی سی بی
دانش عزیر نے 42 گیندوں پر 72 رنز بنائے—فوٹو:پی سی بی

نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں سندھ کی ٹیم نے دانش عزیز کی شان دار بیٹنگ کی بدولت ٹورنامنٹ کی ایک مضبوط ٹیم خیبرپختونخوا کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد 2 وکٹوں سے شکست دی جبکہ سدرن پنجاب کی ٹیم نے سینٹرل پنجاب کو 3 رنز سے ہرا دیا۔

راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلے گئے پہلے میچ میں سندھ کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر خیبرپختونخوا کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی اور باؤلرز نے اس فیصلے کو درست ثابت کردیا۔

سہیل خان نے گزشتہ میچ کے ہیرو فخر زمان کو صفر پر آؤٹ کرکے خیبرپختونخوا کے لیے خطرے کی گھنٹی بجادی جبکہ انور علی نے 14 کے اسکورپر دوسری وکٹ بھی حاصل کی جب کپتان محمد رضوان نے 12 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

صاحبزادہ فرحان نے 19 رنز بنائے اور افتخار احمد نے 14 رنز بنا کر ان کا ساتھ دیا، جس کے بعد شعیب ملک بھی جلد ہی پویلین لوٹے۔

سندھ کے باولرز نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا، محمد حارث کو 5 رنز پر آؤٹ کیا تاہم مصدق احمد نے 25 اور عثمان شنواری نے آؤٹ ہوئے بغیر 36 رنز بنا کر اپنی ٹیم کا اسکور 138 تک پہنچایا۔

شاہین شاہ آفریدی 14 اور ارشد اقبال بغیر کوئی رن بنائے آؤٹ ہوگئے۔

خیبر پختونخوا نے مقررہ اوورز میں 9 وکٹوں پر 138 رنز بنائے جبکہ سندھ کی جانب سے سہیل خان، حسان خان اور محمد حسنین نے 2،2 وکٹیں حاصل کیں۔

سندھ کی ٹیم ایک آسان ہدف کے تعاقب میں بدترین مشکلات سے دوچار رہی اور ابتدائی 7 کھلاڑی صرف 34 رنز پر آؤٹ ہوئے۔

خیبر پختونخوا کے باؤلرز اور فیلڈرز نے شان دار کھیل کا مظاہرہ ضرور کیا لیکن سنسنی خیز مقابلے کے بعد ٹیم کو شکست ہوئی۔

سندھ کے بلے باز خرم منظور 13، شرجیل خان صفر، اسد شفیق ایک، اعظم خان 5 اور سرفراز احمد 13 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ سہیل خان اور حسان خان صفر پر پویلین لوٹ گئے۔

دانش عزیز نے ایک ایسے وقت میں سندھ کی نیا پار لگانے کی ذمہ داری لی جب دیگر بلے باز انتہائی غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے مسلسل آؤٹ ہو رہے تھے۔

انور علی نے 33 رنز بنا کر ان کا بھرپور ساتھ دیا تاہم وہ 111 رنز پر مصدق احمد کی گیند پر محمد رضوان کو کیچ دے بیٹھے۔

محمد رضوان نے انور علی کا انتہائی شان دار کیچ لیا جس کو ٹورنامنٹ کے بہترین کیچ سے تعبیر کیا جارہا ہے۔

دانش عزیز نے47 گیندوں پر نہ صرف 72 رنز کی اننگز کھیلی بلکہ میچ کی آخری گیند پر چھکا لگا کر ٹیم کو ایک اہم کامیابی دلائی۔

سندھ کو جیت کے لیے آخری تین گیندوں میں 15 اور آخری گیند پر 5 رنز درکار تھے لیکن دانش عزیر نے افتخار احمد کی آخری گیند پر چھکا لگا کر ٹیم کا اسکور 140 تک پہنچایا۔

سندھ کی ٹیم نے 20 اوورز کے اختتام پر 8 وکٹوں پر 140 رنز بنا کر 2 وکٹوں سے کامیاب حاصل کی۔

دانش عزیز کو شان دار بیٹنگ پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

سدرن پنجاب کی سینٹرل پنجاب کو 3 رنز سے شکست

نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ کا 24واں میچ سدرن پنجاب اور سینٹرل پنجاب کے درمیان کھیلا گیا۔

سینٹرل پنجاب کے کپتان بابر اعظم نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا تو سدرن کے بلے بازوں نے جارحانہ انداز اپنایا۔

کپتان شان مسعود نے مسلسل ناکامیوں کے بعد بالآخر نصف سنچری بنائی اور پہلی وکٹ کی شراکت میں 54 رنز کا اضافہ کیا تاہم زین عباس 16 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

سدرن پنجاب کا اسکور 104 پر پہنچا تھا تو شان مسعود کی 50 رنز کی اننگز ظفر گوہر کے ہاتھوں اختتام کو پہنچی۔

صہیب مقصود نے جارحانہ انداز میں 3 چھکوں کی مدد سے 12 گیندوں پر 25 رنز کا اضافہ کیا اور 137 رنز کے مجموعے پر ظفر گوہر کی وکٹ بن گئے۔

حسین طلعت اور خوشدل شاہ نے ایک مرتبہ پھر شان دار شراکت قائم کی اور سینٹرل پنجاب کے باؤلرز کو مزید کوئی وکٹ حاصل کرنے کا موقع فراہم نہیں کیا۔

دونوں بلے بازوں نے آؤٹ ہوئے بغیر بالترتیب 59 اور 47 رنز کی اننگز کھیل کر مقررہ اوورز میں ٹیم کا اسکور 3 وکٹوں پر 205 رنز تک پہنچایا۔

ظفر گوہر نے 2 وکٹیں حاصل کیں اور ایک کھلاڑی کو احمد بشیر نے آؤٹ کیا۔

سینٹرل پنجاب کے کپتان بابر اعظم صفر پر عامر یامین کی گیند پر آؤٹ ہوئے تاہم کامران اکمل نے 32 رنز کی اننگز کھیلی اور عبداللہ شفیق نے 13 رنز بنا کر ان کا مختصر ساتھ دیا۔

محمد اخلاق نے 30 رنز بنائے اور اسکور 98 رنز تک پہنچایا، رضوان حسین 29 اور قاسم اکرم 21 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تو ٹیم کا اسکور 6 وکٹوں پر 156 رنز تھا۔

قومی ٹیم کے آل راونڈر فہیم اشرف نے 19 گیندوں پر 3 چوکوں اور 5 چھکوں کی مدد سے نصف سنچری مکمل کرکے سینٹرل پنجاب کو کامیابی کی امید دلائی۔

فہیم اشرف نے 54 رنز بنا کر ٹیم کو ہدف کے قریب پہنچایا اور 194 کے اسکور پر محمد عمران کی گیند پر آؤٹ ہوئے، جس کے بعد ظفر گوہر اور عثمان قادر نے ٹیم کو فتح دلانے کی انتھک کوشش کی لیکن اسکور 202 رنز تک ہی پہنچا سکے۔

اس طرح سدرن پنجاب نے میچ 3 وکٹوں سے جیت لیا۔