'میرا جانے کا وقت اب آگیا ہے'

23 نومبر 2020

ای میل

انڈرٹیکر — فوٹو بشکریہ ڈبلیو ڈبلیو ای
انڈرٹیکر — فوٹو بشکریہ ڈبلیو ڈبلیو ای

ڈبلیو ڈبلیو ای کے لیجنڈ ریسلر انڈر ٹیکر نے 3 دہائیوں کے کیرئیر کے بعد ریسلنگ کی دنیا کو خیرباد کہہ دیا ہے۔

ویسے تو انڈرٹیکر نے رواں سال اپریل میں ریسل مینیا میں اے جے اسٹائلز کے ساتھ مقابلے کے بعد سے ہی ڈبلیو ڈبلیو ای سے دوری اختیار کرلی تھی۔

مگر اب باضابطہ طور پر ریسلنگ سے دوری کا اعلان ہوا ہے۔

ڈبلیو ڈبلیو ای کے ایونٹ سروائیور سیریز کے اختتام پر انڈرٹیکر کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے اس کمپنی کے متعدد ریسلرز اکٹھے ہوئے۔

انڈر ٹیکر نے 1990 میں سروائیور سیریز سے ہی ڈبلیو ڈبلیو ای میں اپنے کیرئیر کا آغاز کیا تھا اور ریٹائرمنٹ کے لیے بھی انہوں نے اسی ایونٹ کا انتخاب کیا۔

انڈر ٹیکر آخری بار الوداع کہنے کے لیے رنگ میں آئے اور اس موقع پر انہوں نے کہا ' 30 طویل برسوں تک میں رنگ کی جانب آہستگی سے آیا اور لوگوں کو بار بار سلایا، اب میرے جانے کا وقت آگیا ہے، اب وقت آگیا ہے کہ انڈر ٹیکر کو سکون پہنچادیا جائے'۔

A photo posted by Instagram (@instagram) on

انڈر ٹیکر کا اصل نام مارک کالوے ہے اور کچھ دیر بعد بات کرنے کے بعد اہوں نے اپنا مخصوص پواز بنایا، اس موقع پر ان کے اولین منیجر پال بیرئیر کا ہولوگرام بھی ان کے سامنے بنایا گیا۔

رواں سال جون میں ہی انڈرٹیکر نے ریسلنگ سے علیحدگی کا عندیہ ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ اب ان کے اندر رنگ میں واپسی کی کوئی خواہش نہیں۔

ڈبلیو ڈبلیو ای ٹی وی پر نشر ہونے والی ایک ڈاکو مینٹری میں انہوں نے ڈھکے چھپے الفاظ میں ریٹائرمنٹ کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اب میرے لیے کچھ فتح کرنے کے لیے باقی نہیں رہا۔

انہوں نے ریسل مینیا میں اے جے اسٹائلز کے خلاف میچ پر بھی بات کی، جس میں انہوں نے اپنے حریف کو 'زندہ دفن' کردیا تھا اور موٹرسائیکل پر بیٹھ کر چلے گئے تھے۔

انڈر ٹیکر نے کہا 'وہ ایک بہترین لمحہ تھا، ضروری نہیں آپ ہمیشہ ایسے لمحات کو حاصل کرسکیں، اگر ایک کیرئیر کا کوئی مثالی اختتام ہوسکتا ہے، تو یہ وہی لمحہ تھا'۔

انہوں نے کہا 'اب وقت ہے کہ کاؤ بوائے صحیح معنوں مٰں چلا جائے، میں رنگ کے اندر کی بجائے اس سے باہر اس سے زیادہ بہتر کام کرسکتا ہوں، اب میں اس مقام پر ہوں جہاں اسے قبول کرسکتا ہوں'۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ ایک آخری میچ کے لیے واپس آنے کا سوچ سکتے ہیں، مگر اس کا فیصلہ وقت کرے گا۔

انڈر ٹیکر نے اپنے ریسلنگ کیرئیر کے دوران کئی بار ورلڈ ہیوی ویٹ چیمپئن شپ اپنے نام کی، 6 بار ٹیگ ٹیم ٹائٹل اور رائل رمبل کے فاتح بھی رہے۔

انہوں نے اپنے کیرئیر کا آغاز 1987 میں ورلڈ کلاس چیمپئن شپ ریسلنگ سے کیا اور 1990 کی دہائی میں ٹیڈ ڈائی بیس کی ملین ڈالر ٹیم کا حصہ بن کر ڈبلیو ڈبلیو ای میں آگئے۔

انڈر ٹیکر نے ہی 1992 میں سرائیوور سیریز میں پہلی بار ڈبلیو ڈبلیو ای میں کاسکیٹ میچ میں شمولیت اختیار کی، 1996 میں پہلی بار زندہ دفن کرنے والے میچ اور 1997 میں پہلے ہیل ان اے سیل میچ کا بھی حصہ بنے۔

بہت زیادہ مقبولیت کے باوجود انہوں نے جان سینا یا دی راک کی طرح فلمی دنیا کا رخ نہیں کیا۔

ایک انٹرویو میں انہوں نے بتایا تھا کہ انہیں مواقع ملے تھے مگر انہوں نے اس کے خلاف فیصلہ کیا۔

انہوں نے کہا 'وہ دنیا میرے لیے نہیں تھی، ریسلنگ اور ڈبلیو ڈبلیو ای میرا جذبہ ہیں، وہ جگہ جہاں میں اپنی شخصیت کو اجاگر کرسکتا تھا'۔

اتوار کو انڈرٹیکر نے ایک ٹوئٹ میں اس ڈاکو مینٹری کا ایک کلپ شیئر کرتے ہوئے لکھا تھا 'آپ اس وقت تک طویل راستے کو سراہ نہیں سکتے جب تک آخر تک نہ پہنچ جائیں'۔

ویسے انڈر ٹیکر کی ریٹائرمنٹ کی افواہیں کئی برسوں سے سامنے آرہی تھیں، خصوصاً 2017 میں رومن رینز سے ریسل مینیا میں شکست کے بعد سمجھا جارہا تھا کہ وہ ریسلنگ کو خیرباد کہہ چکے ہیں۔

مگر اگلے سال ریسل مینیا کے لیے وہ پھر واپس آئے تھے۔