کراچی کے حلقہ این اے-249 میں ضمنی انتخاب 29 اپریل کو ہوگا، الیکشن کمیشن

اپ ڈیٹ 11 مارچ 2021
شیڈول کے مطابق این اے-249 میں ضمنی انتخاب 29 اپریل کو ہو گا —فائل فوٹو: ریڈیو پاکستان
شیڈول کے مطابق این اے-249 میں ضمنی انتخاب 29 اپریل کو ہو گا —فائل فوٹو: ریڈیو پاکستان

الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے نو منتخب سینیٹر فیصل واڈا کے مستعفی ہونے کے بعد خالی ہونے والی قومی اسمبلی کی نشست پر ضمنی انتخاب کا شیڈول جاری کردیا۔

یاد رہے کہ فیصل واڈا نے 2018 کے عام انتخابات میں کراچی غربی ٹو کے حلقہ این اے-249 سے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کو محض 718 ووٹوں سے شکست دے کر کامیابی حاصل کی تھی۔

فیصل واڈا کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ اور الیکشن کمیشن میں دہری شہریت کا کیس دائر تھا، ان پر الزام تھا کہ عام انتخابات 2018 میں حصہ لینے کے لیے الیکشن کمیشن میں جمع کروائے گئے کاغذات نامزدگی کے وہ دوہری شہریت کے حامل تھے۔

یہ بھی پڑھیں: فیصل واڈا کو مستعفی ہونے کے باعث نااہل قرار نہیں دیا جاسکتا، اسلام آباد ہائیکورٹ

رپورٹ کے مطابق انہوں نے اپنے کاغذات نامزدگی 11 جون 2018 کو جمع کروائے، جو ایک ہفتے بعد 18 جون کو منظور ہوئے جبکہ اس کے 4 روز بعد انہوں نے کراچی میں امریکی قونصلیٹ میں اپنی شہریت کی تنسیخ کے لیے درخواست دی تھی۔

چنانچہ رپورٹس کے مطابق نااہلی کے خدشے کے پیش نظر سینیٹ انتخابات میں پی ٹی آئی کی جانب سے انہیں سندھ سے سینیٹر منتخب کروانے کے لیے ٹکٹ جاری کیا تھا۔

3 مارچ کو ہونے والے سینیٹ انتخابات میں اسلام آباد کی نشست کے لیے قومی اسمبلی میں اپنا ووٹ ڈالنے کے بعد فیصل واڈا اپنی نشست سے مستعفی ہوگئے تھے۔

مزید پڑھیں: فیصل واڈا کے سینیٹ انتخاب کے لیے منظور شدہ کاغذات نامزدگی چیلنج

اسی روز اسلام آباد ہائی کورٹ سے ان کی نااہلی کیس کا فیصلہ بھی جاری ہوگیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ فیصل واڈا کو مستعفی ہونے کے باعث نااہل قرار نہیں دیا جاسکتا البتہ الیکشن کمیشن میں جمع کرایا گیا ان کا بیان حلفی بظاہر جھوٹا ہے جس پر الیکشن کمیشن فیصلہ کرے۔

انتخابی شیڈول

چنانچہ الیکشن کمیشن نے فیصل واڈا کے استعفے سے خالی ہونے والی قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 249 کی نشست پر ضمنی انتخاب کا شیڈول جاری کر دیا۔

شیڈول کے مطابق این اے-249 میں ضمنی انتخاب 29 اپریل کو ہو گا جس کے لیے امیدوار 13 مارچ سے 17 مارچ تک کاغذات نامزدگی جمع کرا سکیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: فیصل واڈا نے جھوٹا بیان حلفی کیسے دیا، عدالت عالیہ

جس کے بعد 25 مارچ تک امیدواروں کے کاغذات کی اسکروٹنی کی جائے گی اور امیدوار 29 مارچ تک ریٹرننگ افسر کی فیصلوں کے خلاف ایپیلٹ ٹربیونل میں اپیلیں دائر کر سکیں گے۔

بعدازاں 6 اپریل کو امیدواروں کی حتمی فہرست جاری کی جائے گی، ضمنی انتخاب سے دستبردار ہونے والے امیدوار 7 اپریل تک کاغذات واپس لے سکیں گے اور 8 اپریل کو امیدواروں کو انتخابی نشانات الاٹ کردیے جائیں گے۔

خیال رہے کہ الیکشن کمیشن نے ڈسکہ میں 18 مارچ کو دوبارہ ضمنی انتخاب کا فیصلہ کیا تھا جس میں گزشتہ روز تبدیلی کر کے انتخاب 10 اپریل کو کروانے کا اعلان کیا گیا تھا۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں