فوربز کی ایشیائی 30 انڈر 30 میں پاکستان کے عبداللہ صدیقی شامل

20 اپريل 2021
— اسکرین شاٹ
— اسکرین شاٹ

پاکستان میں اپنی موسیقی سے سب کو چونکا دینے والے عبداللہ صدیقی کو امریکی جریدے فوربز نے اپنی 30 انڈر 30 فہرست کا حصہ بنالیا ہے۔

اس فہرست میں مختلف شعبہ جات میں 30 سال کی عمر تک کے ایسے افراد کو شامل کیا جاتا ہے جو مختلف شعبوں میں نمایاں خدمات کی وجہ سے لوگوں کی توجہ کا مرکز بن جاتے ہیں۔

فوربز کی جانب سے جاری کردہ فہرست میں 30 افراد کو شامل کیا گیا ہے، جن کی عمریں 30 سال یا اس سے کم ہیں اور انہوں نے انتہائی مختصر مدت میں نمایاں نام کمایا۔

ان میں سے ایک عبداللہ صدیقی بھی ہیں اور انہوں نے ہی ایک انسٹاگرام پوسٹ پر خود کو ملنے والے اس اعزاز کے بارے میں بتایا۔

2019 میں نیس کیفے بیسمنٹ کے سیزن 5 کے دوران اپنے Resistance سے شہرت پانے والے عبداللہ صدیقی نے انسٹاگرام پر لکھا 'فوربز 30 انڈر 30 میں شمولیت پر میں دنگ اور بہت شکرگزار ہوں، اس مقام تک پہنچانے میں مدد کرنے والے افراد کو میں شکریہ کہتا ہوں'۔

امریکی جریدے نے عبداللہ صدیقی کی پروفائل میں انہیں پروڈیوسر قرار دیتے ہوئے لکھا 'عبداللہ صدیقی 11 سال کی عمر سے انگلش زبان کی الیکٹرونک موسیقی پروڈیوس کررہے ہیں اور 16 سال کی عمر سے ایک انڈیپینڈنٹ آرٹسٹ کے طور پر اپنے ٹریک ریلیز کررہے ہیں'۔

پروفائل میں مزید بتایا گیا کہ لاہور سے تعلق رکھنے والے فنکار نیس کیفے بیسمنٹ میں شریک ہوئے، ایک ایسا پاکستانی شو جس میں گمنام فنکاروں کی موسیقی کو پیش کیا جاتا ہے، عبداللہ صدیقی نے پاکستان کے چند معروف گلوکاروں بشمول فواد خان، میشا شفیع، شمعون اسمعیل اور آئمہ بیگ کے لیے بھی میوزک پروڈیوس کیا ہے۔

عبداللہ صدیقی کی اس کامیابی ر متعدد معروف فنکاروں نے ان کو مبارکباد دی۔

مائیکل جیکسن کے کور پر ایک پرانے جرمن ریڈیو پر تجربات سے لے کر آئی فون اور آئی پیڈ کے ذیرعے موسیقی بنانے تک عبداللہ صدیقی کو اب موسیقی بناتے ایک دہائی کا عرصہ ہوگیا ہے اور ابھی ان کے سامنے بہت طویل راستہ ہے۔

تبصرے (0) بند ہیں