کوہ پیما سرباز خان، شہروز کاشف کا ایک اور کارنامہ، نیپال کی مکالو چوٹی سر کرلی

28 مئ 2022
شہروز کاشف نے 11 سال کی عمر میں 3 ہزار 885 میٹر بلند مکڑا کی چوٹی سرکی تھی— فوٹو: فیس بک/ الپائن کلپ
شہروز کاشف نے 11 سال کی عمر میں 3 ہزار 885 میٹر بلند مکڑا کی چوٹی سرکی تھی— فوٹو: فیس بک/ الپائن کلپ

گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے پاکستانی کوہ پیما سرباز خان اور لاہور سے تعلق رکھنے والے شہروز کاشف نے نیپال کی 8 ہزار میٹر طویل اور دنیا کی پانچویں اونچی چوٹی ماؤنٹ مکالو سر کرلی۔

الپائن کلب پاکستان کے سیکریٹری قرار حیدری کا کہنا ہے کہ 20 سالہ شہروز کاشف ماؤنٹ مکالو کی بلند چوٹی پر پہنچ گئے ہیں، جس کی کل اونچائی 8 ہزار 485 میٹرز ہے۔

مزید پڑھیں: پاکستانی کوہ پیماؤں کا ایک اور اعزاز، ایورسٹ، چوتھی بلند ترین چوٹی سر کرلی

شہروز کاشف دنیا کے پہلے کوہ پیما بن چکے ہیں جنہوں نے پانچویں بلند ترین چوٹی سر کی ہے، انہوں نے 23 دنوں میں تین آٹھ ہزار کا فاصلہ طے کیا ہے۔

شہروز کاشف کی کامیابیاں

  • شہروز کاشف نے 11 سال کی عمر میں 3 ہزار 885 میٹر بلند مکڑا کی چوٹی سرکی۔
  • 12 سال کی عمر میں 4 ہزار 80 کلو میٹر بلند موسیٰ کا مصلیٰ چوٹی سر کی۔
  • 12 سال کی عمر میں ہی 4 ہزار 600 کلو میٹر بلند کیمبرا کی چوٹی سر کی۔
  • 13 سال کی عمر میں منگلک سر شمشال کی 6 ہزار 50 کلو میٹر بلند چوٹی سر کی۔
  • 14 سال کی عمر میں شہروز کاشف کے ٹو گندوگورو لا کے ٹو کیمپ کی 5ہزار 585 کلو میٹر بلندی پر پہنچے۔
  • 15 سال کی عمر میں انہوں نے 5 ہزار 890 میٹر خردوپن پاس کی بلندی سر کی۔
  • 17 سال کی عمر میں انہوں نے 8 ہزار 47 میٹر طویل براڈ پیک کا ہدف مکمل کیا۔
  • 18 سال انپوں نے کوہسار گنگ الپائن اسٹائل کی 6 ہزار 50 میٹر کی بلندی سر کی۔
  • 19 سال کی عمر میں انہوں نے 8 ہزار 849 میٹر طویل ماؤنٹ ایورسٹ کی چوٹی سر کی۔
  • 19 سال میں ہی شہروز کاشف کے ٹو کی 8 ہزار 611 میٹر بلندی پر پہنچے۔
  • 19 سال میں انہوں مناسلو کی 8 ہزار 163 میٹر لمبی چوٹی سر کی۔
  • 20 سال کی عمر میں انہوں نے 8 ہزار 586 میٹر طویل کنگچنجنگا کی بلند چوٹی سر کی۔
  • 20 سال کی عمر میں 8 ہزار 516 میٹر لوتسے کی بلندی سر کی اور
  • 20 سال کی عمر میں ہی 8 ہزار 463 میٹر طویل مکالو کی بلندی سر کی ہے۔

الپائن کلب پاکستان کے مطابق سرباز خان شہروز کاشف سے ایک منٹ پیچھے رہے اور دونوں کوہ پیماؤں نے مقامی وقت کے مطابق 8 بجے ماؤنٹ مکالو کی چوٹی پر پہنچ کر پاکستان کا پرچم بلند کیا۔

مزید پڑھیں: نامور کوہ پیما علی رضا سدپارہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے

سرباز خان اب دنیا کے 11 کوہ پیماؤں میں سے ایک اور پہلے پاکستانی ہیں جنہوں نے 14 ایسے پہاڑ سر کیے ہیں جن کی بلندی 8 ہزار سے زائد ہے۔

سرباز خان کا ہدف 8 ہزار میٹر سے بلند دنیا کی تمام تر چوٹیوں کو سر کرنا ہے۔

حال ہی میں سر کی گئی چوٹی کے بارے میں بات کرتے ہوئے مہم کے منتظم سعد منور کا کہنا تھا کہ کوہ پیماؤں نے سیپلمنٹری آکسیجن کے استعمال کے بغیر اپنے معمول کے انداز میں چڑھائی سر کی ہے۔

تاہم ان کا کہنا تھا کہ لیجنڈری کوہ پیما علی رضا سد پارہ کے انتقال کے پیشِ نظر یہ جشن اسراف کے ساتھ نہیں منایا جائے گا۔

مزید پڑھیں: نامور کوہ پیما علی رضا سدپارہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے

انہوں نے کہا کہ ’ ہم اپنی کامیابی علی رضا سد پارہ کے نام کرنا چاہیں گے، حال میں ہونے والی تمام کامیابیاں سینئر کوہ پیماؤں کی بدولت ہی ممکن ہوسکی ہیں‘۔

ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے اس وقت میں شمع جلائی جب اندھیرے کے سوا کچھ نہیں تھا، اور آج اس شمع کی روشنی ہر طرف پھیل گئی ہے۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں