اسٹاک ایکسچینج میں ریکارڈ تیزی، انڈیکس 1500 پوائنٹس کے اضافے کے بعد 66 ہزار کی بُلند ترین سطح پر

اپ ڈیٹ 08 دسمبر 2023
گزشتہ روز کے ایس ای-100 انڈیکس تاریخ میں پہلی بار 64 ہزار کی نئی بُلند ترین سطح پر پہنچ گیا تھا — فائل فوٹو: آن لائن
گزشتہ روز کے ایس ای-100 انڈیکس تاریخ میں پہلی بار 64 ہزار کی نئی بُلند ترین سطح پر پہنچ گیا تھا — فائل فوٹو: آن لائن

پاکستان اسٹاک ایکسچینج (پی ایس ایکس) میں ریکارڈ تیزی کا سلسلہ جاری ہے اور 1500 پوائنٹس سے زائد کے اضافے کے بعد تاریخ میں پہلی بار 66 ہزار کی نئی بُلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔

پی ایس ایکس ویب سائٹ کے مطابق تقریباً 12 بج کر 15 منٹ پر کے ایس ای-100 انڈیکس 1436 پوائنٹس یا 2.22 فیصد بڑھ کر 66 ہزار 155 تک پہنچ گیا، جو گزشتہ روز 64 ہزار 718 پوائنٹس پر بند ہوا تھا۔

دن بھر اضافے کا مثبت رجحان جاری رہا اور انڈیکس 1505.56 پوائنٹس یا 2.33 فیصد اضافے کے بعد 66ہزار 223.63 پوائنٹس پر بند ہوا۔

عارف حبیب لمیٹیڈ میں ریسرچ کے سربراہ طاہر عباس نے ڈان ڈاٹ کام کو بتایا کہ مارکیٹ میں مقامی لیکویڈیٹی کی بھرمار ہے۔

کراچی میں قائم بروکریج فرم ٹاپ لائن سیکیورٹیز کے چیف ایگزیکٹیو محمد سہیل نے آج اضافے کی وجہ تیل کی گرتی ہوئی قیمتوں اور مسلسل غیر ملکی خریداری کو قرار دیا۔

انہوں نے نوٹ کیا کہ سرمایہ کاروں کو اقتصادی پالیسیوں کے حوالے سے نیا اعتماد حاصل ہوا ہے اور وہ کم قیمتوں کا فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز (7 دسمبر) پی ایس ایکس بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 800 پوائنٹس اضافے کے بعد تاریخ میں پہلی بار 64 ہزار کی نئی بُلند ترین سطح پر پہنچ گیا تھا۔

6 دسمبر کو بھی پی ایس ایکس میں تاریخی سنگ میل عبور کرنے کا سلسلہ جاری رہا، اور بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس تاریخ میں پہلی بار 63 ہزار کی نئی بُلند ترین سطح پر پہنچ گیا تھا۔

اس سے قبل 4 دسمبر کو 100 انڈیکس 802 پوائنٹس یا 1.3 فیصد اضافے کے بعد 62 ہزار 493 پوائنٹس پر پہنچ گیا تھا۔

اسی طرح یکم دسمبر کو کے ایس ای-100ا نڈیکس 1160 پوائنٹس اضافے کے بعد 61 ہزار 691 پوائنٹس پر بند ہوا تھا۔

اس سے قبل 28 نومبر کو کے ایس ای-100 انڈیکس 919 پوائنٹس اضافے کے بعد تاریخ میں پہلی بار 60 ہزار کی نفسیاتی حد بھی عبور کر گیا تھا۔

24 نومبر کو بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 59 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کرنے کے بعد 187 پوائنٹس اضافے کے ساتھ بند ہوا تھا۔

22 نومبر کو کے ایس ای-100 انڈیکس 827 پوائنٹس اضافے کے بعد 58 ہزار کی بلند ترین سطح عبور کر گیا تھا۔

اسی طرح 16 نومبر کو کے ایس ای-100 انڈیکس 418 پوائنٹس اضافے کے بعد 57 ہزار کی نئی بُلند ترین سطح پر پہنچ گیا تھا۔

13 نومبر کو بینچ مارک کے ایس ای-100 انڈیکس 1132 پوائنٹس اضافے کے بعد 56 ہزار کی نئی بلند ترین سطح عبور کرگیا تھا، اس سے قبل 10 نومبر کو 55 ہزار، 8 نومبر کو 54 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کر گیا تھا۔

3 نومبر کو صدر مملکت اور چیف الیکشن کمشنر کے درمیان عام انتخابات کی تاریخ پر اتفاق ہونے کے بعد پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں ساڑھے 6 سال بعد انڈیکس 53 ہزار پوائنٹس کی حد عبور کر گیا تھا۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں