پاکستان کی شام میں ایرانی قونصل خانے پر اسرائیلی میزائل حملے کی مذمت

02 اپريل 2024
ترجما دفتر خارجہ ممتاز زہرہ بلوچ— فائل فوٹو: ڈان نیوز
ترجما دفتر خارجہ ممتاز زہرہ بلوچ— فائل فوٹو: ڈان نیوز

پاکستان نے شام کے دارالحکومت دمشق میں ایرانی سفارت خانے کے قونصلر سیکشن پر اسرائیلی حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے اسرائیل کو ایسے عمل سے روکنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ ممتاز زہرہ بلوچ نے اپنے بیان میں کہا کہ پاکستان متاثرین کے اہل خانہ، ایرانی عوام اور ایران کی حکومت کے ساتھ تعزیت میں برابر کے شریک ہے۔

ترجمان کا مزید کہنا ہے کہ حملہ شام کی خودمختاری کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی قوانین اور اقوام متحدہ کے چارٹر کی خلاف ورزی ہے۔

اس میں اس امر پر بھی زور دیا گیا کہ 1961 کے سفارتی تعلقات کے ویانا کنونشن کے تحت سفارت کاروں یا سفارتی سہولیات کے خلاف حملے بھی غیر قانونی ہیں۔

ترجمان کے مطابق پاکستان اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے مطالبہ کرتا ہے کہ اسرائیل کو خطے میں اس کی مہم جوئی اور اس کے پڑوسیوں پر حملہ کرنے اور غیر ملکی سفارتی تنصیبات کو نشانہ بنانے کے غیر قانونی اقدامات سے روکے۔

واضح رہے کہ اسرائیل کی جانب سے شام میں ایرانی قونصل خانے پر میزائل حملے میں ایرانی پاسداران انقلاب کے لیڈر سمیت 5 افراد شہید ہوگئے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے ’رائٹرز‘ کی خبر کے مطابق شام کے دارالحکومت دمشق میں اسرائیل نے ایران کے قونصل خانہ کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں اس کی عمارت مہندم ہوگئی۔

شامی اور ایرانی میڈیا نے قونصل خانے پر حملے کی تصدیق کی تھی۔

لبنانی سیکیورٹی ذرائع نے رائٹرز سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مرنے والوں میں محمد رضا زاہدی بھی شامل ہیں جو ایرانی پاسداران انقلاب (آئی آر جی سی) کے ایک سینئر کمانڈر تھے۔

ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن نے کہا کہ اسرائیلی حملے میں متعدد ایرانی سفارت کار مارے گئے ہیں۔

شام کے دارالحکومت کے ضلع میزے میں جائے وقوع پر موجود رائٹرز کے نمائندے نے قونصل خانے کی عمارت کے ملبے سے دھواں اٹھتے دیکھا جب کہ منہدم عمارت کے سامنے ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے گاڑیاں کھڑی تھیں اور ملبے کے سامنے موجود کھمبے پرایرانی پرچم لہرا رہا تھا۔

شام کے وزرائے داخلہ اور خارجہ دونوں نے جائے وقوع کا دورہ کیا۔

غزہ میں 6 ماہ سے جاری جنگ کے دوران کئی مرتبہ ایرانی اہداف کو نشانہ بنانے والے اسرائیل نے معمول کے مطابق اس واقعے پر رد عمل دینے سے انکار کیا۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان نے کہا کہ ہم غیر ملکی میڈیا میں چلنے والی رپورٹس پر تبصرہ نہیں کرتے۔

ایرانی خبر رساں ایجنسی تسنیم نے رپورٹ کیا کہ اسرائیلی حملے میں 5 افراد مارے گئے، شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا نے مرنے والوں اور زخمیوں کی تعداد نہیں بتائی۔

7 اکتوبر کو اسرائیل میں ایرانی حمایت یافتہ فلسطینی دھڑے حماس کے حملے کے بعد سے اسرائیل نے شام میں لبنان میں موجود ایرانی حمایت یافتہ ملیشیا حزب اللہ اور ایرانی گارڈز کے خلاف فضائی حملے تیز کر دیے ہیں جب کہ یہ دونوں فورسز صدر بشار الاسد کی حکومت کے حامی ہیں۔

تبصرے (0) بند ہیں