نئی دہلی : پی آئی اے کے دفتر پر حملہ

اپ ڈیٹ 14 جنوری 2016

ای میل

حملہ آوروں  نے دفتر میں داخل ہو کر توڑ پھوڑ کی — فوٹو:/ ڈان نیوز
حملہ آوروں نے دفتر میں داخل ہو کر توڑ پھوڑ کی — فوٹو:/ ڈان نیوز

نئی دہلی : ہندوستان کے دارالحکومت نئی دہلی میں پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز (پی آئی اے) کے دفتر پر مبینہ طور پر حملہ گیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق نئی دہلی میں پی آئی اے کے آفس پر حملے کے دوران عملے کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا گیا.

ہندوستانی نشریاتی ادارے زی نیوز کے مطابق 5 سے 6 حملہ آوروں نے پی آئی اے کے نئی دہلی میں براکھمبا روڈ پر واقع دفتر میں گھس کر ہنگامی آرائی کی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق حملہ ہندو انتہا پسند تنظیم بجرنگ دل نے کیا، تاہم فوری طور پر یہ نہیں بتایا گیا کہ ان افراد کو گرفتار کیا جا سکا یا وہ فرار ہو گئے۔

ڈان نیوز کے مطابق پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز (پی آئی اے) کے ترجمان دانیال عزیز کا کہنا تھا کہ 100 سے زائد شرپسندوں نے حملہ کیا، جنہوں نے دفتر میں موجود کمپیوٹرز اور کھڑکیاں توڑ دیں.

ترجمان پی آئی اے کا کہنا تھا کہ حملے کے فوری بعد پاکستانی سفارتخانے کو اطلاع کر دی گئی تھی.

انہوں نے بتایا کہ انتہا پسندوں نے دفتر پر حملے کے بعد دفتر کے باہر پاکستان کے خلاف نعرے بازی بھی کی.

ترجمان کے مطابق حملے کے باعث پی آئی اے دفتر میں ریزویشن سسٹم رک گیا۔

دوسری جانب نئی دہلی میں پاکستان ہائی کمیشن کے ترجمان نے بھی حملے کی تصدیق کی ۔

نئی دہلی میں پاکستانی ہائی کمیشن کے پریس اتاشی منظور میمن نے پاکستان کے سرکاری ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ حملہ آوروں کا تعلق ہندو انتہا پسند جماعت سے تھا، جنہوں نے دفتر میں داخل ہو کر توڑ پھوڑ کرنے کے علاوہ عملے کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا۔

ان کا کہنا تھا کہ ہندوستانی حکومت سے سیکیورٹی میں اضافے کا مطالبہ کیا گیا ہے.

حملے کے بعد چیئرمین پی آئی اے ناصر جعفر کا کہنا تھا کہ دفتر بند کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ حکومتی ہدایت کے تحت کیا جائے گا.

ناصر جعفر کا کہنا تھا کہ نئی دہلی کے لیے پروازیں جاری ہیں جبکہ عملہ تعینات رہے گا۔

خیال رہے کہ اکتوبر 2015 میں ہندو انتہا پسند تنظیم شیو سینا نے ہندوستانی کرکٹ بورڈ کے دفتر پر اُس وقت حملہ کر دیا تھا جب پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریار خان اور چیف ایگزیکیٹیو نجم سیٹھی کو ہندوستانی کرکٹ حکام سے ملاقات کے سلسلے میں وہاں جانا تھا.

شیو سینا کے کارکنوں نے ممبئی کے وانکھڈے اسٹیڈیم میں واقع بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ اِن انڈیا (بی سی سی آئی) کے ہیڈکوارٹر پر حملہ کیا تھا، جن کی جانب سے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریارخان سے وطن واپسی کا مطالبہ کیا گیا، بعد ازاں پی سی بی کے چیئرمین پاکستان واپس آ گئے تھے جبکہ دونوں ممالک میں دسمبر 2015 میں طے شدہ کرکٹ سیریز بھی نہ ہو سکی۔


آپ موبائل فون صارف ہیں؟ تو باخبر رہنے کیلئے ڈان نیوز کی فری انڈرائیڈ ایپ ڈاؤن لوڈ کریں