نیویارک : امریکی ٹینس ایسوسی ایشن نے ٹینس اسٹار سیرینا ولیمز پر 17 ہزار ڈالر کا جرمانہ عائد کردیا ۔

خبر ایجنسی اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق سیرینا ولیمز پر گزشتہ روز کھیلے گئے یو ایس اوپن فائنل میں تین مرتبہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے پر جرمانہ عائد کیا گیا۔

سیرینا ولیمز یو ایس اوپن فائنلز میں جاپانی کھلاڑی نوآمی اوساکا کے مد مقابل تھیں، میچ کے دوران کوچنگ لینے، ریکٹ توڑنے اور امپائر کارلس راموس سے بدزبانی کرنے اور انہیں جھوٹا کہنے پر ان پر جرمانہ لگایا گیا۔

سابق ٹینس چیمپئن کو امپائر سے کوچنگ لینے پر چار ہزار ڈالر ، ریکٹ توڑنے پر 3 ہزار ڈالر اور امپائر سے بدزبانی پر 10 ہزار ڈالر جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔

گزشتہ روز امریکی شہر نیویارک کے آتھرایش اسٹیڈیم میں کھیلے گئے اس میچ میں جاپان کی ناؤمی اوساکا نے ابتدا سے ہی امریکی اسٹار کھلاڑی کو اپنے دباؤ میں رکھا تھا۔

ناؤمی اوساکا نے سیرینا ولیمز کو 2-6 اور 4-6 سے شکست دے کر ٹائٹل اپنے نام کیا تھا۔

مزید پڑھیں : یو ایس اوپن کے فائنل میں شکست، سیرینا ولیمز نے ریکٹ توڑ دیا

امپائر نے سیرینا ولیمز پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے دورانِ میچ اپنے کوچ سے کوچنگ (اشارے میں) لی ہے، جس کے بعد ان کے خلاف ریکٹ کے غلط استعمال کا الزام عائد کیا گیا اور ان کی حریف کھلاڑی کو ایک پوائنٹ دیا گیا تھا۔

تاہم میچ کے بعد پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا کہ ان کے کوچ نے انہیں کوئی اشارہ نہیں دیا تھا، اگر ایسا کوئی اشارہ دیا بھی ہوگا تو اس میں یہ پیغام ہوگا کہ ’تم بہت اچھا کھیل رہی ہو‘۔

واضح رہے کہ سیرینا ولیمز نے اپنا آخری یو ایس اوپن ٹائٹل 2014 میں جیتا تھا، اور اس کے بعد سے اب تک یہ ان کا پہلا فائنل مقابلہ تھا، جبکہ وہ اس سے قبل 6 مرتبہ یہ ٹائٹل اپنے نام کرچکی ہیں۔

یو ایس اوپن 2018 کی فاتح جاپانی کھلاڑی ناؤمی اوساکا کا یہ پہلا گرینڈ سلام ٹائٹل ہے۔