• KHI: Maghrib 7:21pm Isha 8:47pm
  • LHR: Maghrib 7:05pm Isha 8:39pm
  • ISB: Maghrib 7:15pm Isha 8:52pm
  • KHI: Maghrib 7:21pm Isha 8:47pm
  • LHR: Maghrib 7:05pm Isha 8:39pm
  • ISB: Maghrib 7:15pm Isha 8:52pm

پاکستان میں پرفارمنس کرنے پر میکا سنگھ پر عائد پابندی ختم کردی گئی

شائع August 22, 2019

بھارتی فلم تنظیم فیڈریشن آف ویسٹرن انڈیا سنی ایمپلائز (ایف ڈبلیو آئی سی ای) نے رواں ماہ 15 اگست کو بھارتی بھنگڑا گلوکار میکا سنگھ پر پاکستان میں پرفارمنس کرنے پر بائیکاٹ کا اعلان کیا تھا۔

تنظیم نے میکا سنگھ کی جانب سے پاکستان میں پرفارمنس کرنے پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ گلوکار کے ساتھ کسی بھی قسم کے میوزک یا فلمی پروجیکٹ پر کام نہیں کیا جائے گا۔

تنظیم نے میکا سنگھ کی پاکستان میں پرفارمنس کو بھارت کے لیے شرمندگی قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ 'بھارت اور پاکستان کے درمیان جاری تنازع کے باوجود میکا سنگھ کا پاکستان میں پرفارم کرنا ان کے لیے باعث شرمندگی ہے'۔

تنظیم نے تمام پروڈیوسرز، میوزک ڈائریکٹرز، آل انڈیا ریڈیو، ایف ایم انڈیا، میوزک اور ریکارڈنگ کمپنیز، نیشنل ٹی وی اور سیٹلائٹ چینلز سے مطالبہ کیا کہ وہ بھی میکا سنگھ کے ساتھ کسی قسم کا کام نہ کریں۔

ساتھ ہی تنظیم نے بیان میں انتباہ جاری کیا تھا کہ جو بھی میکا سنگھ کے ساتھ کام کرنے کی کوشش کرے گا اس کا بائیکاٹ بھی کیا جاسکتا ہے۔

نظیم کی جانب سے بائیکاٹ کے اعلان کے بعد میکا سنگھ نے تین دن قبل ہی عوام سے پاکستان میں پرفارمنس کرنے پر معافی مانگتے ہوئے کہا تھا کہ ان کا بائیکاٹ نہ کیا جائے، ان سے غلطی ہوئی۔

میکا سنگھ نے عوام اور تنظیم سے معافی مانگتے ہوئے پاکستان میں پرفارمنس کرنے پر تنظیم کو 20 اگست کو اپنا مؤقف دینے کے لیے وقت مانگا تھا۔

تنظیم اور میکا سنگھ کے درمیان ملاقات اور مذاکرات ہونے کے بعد اب تنظیم نے گلوکار پر پابندی کا اعلان واپس لے لیا۔

میکا سنگھ نے اپنے ٹوئٹر پر تنظیم سے ملاقات کے بعد تنظیم کی جانب سے جاری کیے گئے اعلامیے کی کاپی شیئر کرتے ہوئے اعلان کیا کہ فیڈریشن آف ویسٹرن انڈیا سنی ایمپلائز نے ان پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا۔

میکا سنگھ نے عوام اور تنظیم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے لکھا کہ وہ پابندی کا اعلان واپس لیے جانے پر تنظیم کے مشکور ہیں۔

تنظیم کی جاب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا کہ میکا سنگھ نے تنظیم کے سامنے اپنا مؤقف پیش کیا، جس میں انہوں نے بتایا کہ انہوں نے پاکستان میں پرفارمنس کا معاہدہ دونوں ممالک میں حالیہ کشیدگی شروع ہونے سے قبل کر رکھا تھا۔

بیان کے مطابق میکا سنگھ نے بتایا کہ حالات کشیدہ ہونے کے دوران ہی انہیں پاکستان کا ویزا ملا جس وجہ سے وہ وہاں معاہدے کے تحت پرفارمنس کرنے چلے گئے۔

بیان میں بتایا گیا کہ میکا سنگھ نے پاکستان میں پرفارمنس کرنے کو اپنی غلطی قرار دیا اور وعدہ کیا کہ وہ آئندہ ایسی غلطی نہیں دہرائیں گے۔

فیڈریشن آف ویسٹرن انڈیا سنی ایمپلائز کے بیان میں بتایا گیا کہ میکا سنگھ کی جانب سے معافی مانگے جانے اور ان کی جانب سے ایسی غطلی دوبارہ نہ کرنے کی یقین دہانی کرائے جانے کے بعد تنظیم نے ان پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا۔

خیال رہے کہ بھارتی فلم تنظیم نے میکا سنگھ کے خلاف پابندی کا اعلان ایک ایسے وقت میں کیا جب میکا سنگھ کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پروائرل ہوئی جس میں انہیں حال ہی میں پاکستان کے صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں ایک تقریب میں پرفارم کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔

اطلاعات کے مطابق میکا سنگھ نے چند دن قبل کراچی اور لاہور میں پرفارمنس کی تھی اور انہوں نے ایک ایسے وقت میں پاکستان میں پرفارمنس کی جب کہ دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی چل رہی ہے اور پاکستان نے پڑوسی ملک کا ثقافتی بائیکاٹ بھی کر رکھا ہے۔

پاکستان نے بھارت کا ثقافتی بائیکاٹ رواں ماہ 5 اگست کو بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کیے جانے کے بعد کیا۔

کارٹون

کارٹون : 23 جولائی 2024
کارٹون : 22 جولائی 2024