آسٹریلوی باؤلر پر پابندی، پاکستان کے خلاف پہلے ٹیسٹ میچ سے باہر

اپ ڈیٹ 17 نومبر 2019

ای میل

گزشتہ 18 ماہ میں جیمز پٹینسن کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی تیسری مرتبہ خلاف ورزی کی گئی ہے— فائل فوٹو / اے پی
گزشتہ 18 ماہ میں جیمز پٹینسن کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی تیسری مرتبہ خلاف ورزی کی گئی ہے— فائل فوٹو / اے پی

کرکٹ آسٹریلیا نے ’غیر مناسب رویہ اختیار کرنے پر‘ فاسٹ باؤلر جیمز پٹینسن پر ایک میچ کی پابندی عائد کردی ہے جس کے سبب وہ پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان پہلے ٹیسٹ میچ میں شرکت نہیں کر سکیں گے۔۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' کے مطابق گزشتہ ہفتے کوئنز لینڈ کے خلاف وکٹوریہ کے شیفیلڈ شیلڈ کھیل کے دوران جیمز پٹینسن نے آسٹریلیا کرکٹ بورڈ کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی تھی۔

مزید پڑھیں: پاکستان کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے لیے آسٹریلین اسکواڈ کا اعلان

تاہم یہ واضح نہیں کیا گیا کہ انہوں نے مخالف ٹیم کے کھلاڑیوں کو کیا کہا لیکن گورننگ باڈی نے ان پر 'فیلڈنگ کے دوران کسی کھلاڑی کے ساتھ غیرمناسب رویہ' اختیار کرنے پر سزا دی۔

خیال رہے کہ گزشتہ 18 ماہ میں جیمز پٹینسن نے تیسری بار ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی ہے۔

سی اے کے سربراہ شان کیرول نے اعلامیے میں کہا کہ 'ہمارا فرض ہے کہ ہم اعلی معیار کے حامل رویوں کو برقرار رکھیں اور یہ کارروائی اس بات کا ثبوت ہے'۔

یہ بھی پڑھیں: آسٹریلیا کے فاسٹ باؤلر کمینز انجر کا شکار

اپنے جرم کا اعتراف کرنے والے جیمز پٹینسن نے کہا 'مجھ سے میچ کےدوران گرما گرمی میں غلطی ہوئی'۔

انہوں نے کہا کہ 'غلطی کا احساس فوراً ہی ہوگیا تھا، میں نے غلطی پر حریف اور امپائر دونوں سے فوری طور پر معافی بھی مانگی'۔

جیمز پٹینسن نے کہا کہ 'میں نے غلط کام کیا ہے لہٰذا مجھے سزا بھی قبول ہے، مجھے ٹیسٹ میچ سے محروم کیے جانے کا افسوس ہے لیکن معیارات کی پاسداری پر سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا اور غلطی مجھ سے ہوئی ہے'۔

سی اے نے کہا کہ ٹیسٹ اسکواڈ کے لیے کسی بھی متبادل کو طلب نہیں کیا جائے گا۔

مزید پڑھیں: آسٹریلیا کیخلاف ون ڈے سیریز کیلئے کامران اور جنید نظرانداز

خیال رہے کہ کیمرون بین کرافٹ اور جو برنز کو پاکستان کے خلاف سیریز کے لیے ٹیم میں شامل کیا گیا ہے جبکہ جیمز پیٹنسن، مچل اسٹارک، پیٹ کمنز اور جوش ہیزل وُڈ پر مشتمل باؤلنگ اٹیک کی معاونت کے لیے باؤلنگ آل راؤنڈر مائیکل نیسر کو اسکواڈ کا حصہ بنایا گیا تھا۔

یاد رہے کہ آسٹریلین اے ٹیم میں کیمرون بین کرافٹ کو شامل نہیں کیا گیا تھا لیکن نک میڈنسن ذہنی مسائل کے سبب ٹور میچ سے دستبردار ہو گئے تھے اور ان کی جگہ بین کرافٹ کو طلب کیا گیا۔