سری لنکا کیخلاف 4سنچریاں، پاکستانی بلے بازوں نے تاریخ رقم کردی

اپ ڈیٹ 22 دسمبر 2019

ای میل

شان مسعود، عابد علی، اظہر علی اور بابر اعظم نے سنچریاں اسکور کی— تصاویر: اے پی/ اے ایف پی
شان مسعود، عابد علی، اظہر علی اور بابر اعظم نے سنچریاں اسکور کی— تصاویر: اے پی/ اے ایف پی

پاکستان نے سری لنکا کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ میں چار بلے بازوں کی سنچریوں کی بدولت ٹیسٹ کرکٹ میں نئی تاریخ رقم کردی۔

کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں کھیلے جا رہے سیریز کے دوسرے ٹیسٹ میچ میں پاکستانی ٹیم پہلی اننگز میں 191رنز پر ڈھیر ہو گئی تھی۔

اس کے جواب میں سری لنکن ٹیم نے اپنی پہلی اننگز میں 271رنز بنا کر 80رنز کی برتری حاصل کی تھی جس کے بعد پاکستانی ٹیم مشکلات کا شکار نظر آتی تھی لیکن پاکستانی بلے بازوں نے توقعات کے برخلاف تمام تر خدشات کو غلط ثابت کردیا۔

پاکستان کی جانب سے اوپنرز شان مسعود اور عابد علی نے شاندار سنچریاں اسکور کر کے ٹیم کی پوزیشن کو مستحکم کیا جس کے بعد کپتان اظہر علی اور بابر اعظم نے بھی بیٹنگ کے لیے سازگار وکٹ سے فائدہ اٹھاتے ہوئے سنچریاں اسکور کیں۔

اس کے ساتھ ہی میچ میں پاکستان کے ابتدائی چار بلے بازوں شان مسعود، عابد علی، اظہر علی اور بابر اعظم نے سنچریاں بنا کر نئی تاریخ رقم کردی۔

یہ کرکٹ کی تقریباً ڈیڑھ سو سال طویل تاریخ میں محض دوسرا موقع ہے کہ کسی ٹیم کے ابتدائی چاروں بلے بازوں نے سنچری اسکور کی ہو جبکہ پاکستان کرکٹ میں ایسا پہلی بار ہوا ہے۔

یہ کارنامہ سب سے پہلے بھارتی ٹیم نے 2007 میں بنگلہ دیش کے خلاف انجام دیا تھا جس کے بعد سے کوئی اور ٹیم یہ کارنامہ انجام نہیں دے سکی تھی تاہم پاکستان نے 12سال بعد دوبارہ یہ کارنامہ انجام دے دیا۔

بھارت کی جانب سے مذکورہ میچ میں دنیش کارتھک، وسیم جعفر، راہول ڈراوڈ اور سچن ٹنڈولکر نے سنچریاں اسکور کی تھیں۔