’کورونا وائرس سے حفاظت کیلئے پیاز، لہسن کا عرق موثر نہیں‘

اپ ڈیٹ 04 مارچ 2020

ای میل

مریض گوشت، سبزیاں اور پھل کھاسکتے ہیں—تصویر: شٹر اسٹاک
مریض گوشت، سبزیاں اور پھل کھاسکتے ہیں—تصویر: شٹر اسٹاک

لاہور: انسٹیٹوٹ آف پبلک ہیلتھ (آئی پی ایچ) پنجاب نے اعلان کیا ہے ایسے کوئی سائنسی شواہد موجود نہیں جو کورونا وائرس سے حفاظت یا اس کے علاج میں پیاز اور لہسن کا عرق موثر ہونے کو ثابت کرسکیں۔

تاہم متوازن غذا اور صحت و صفائی کی اچھی صورتحال اس وائرس سے محفوظ رکھ سکتی ہے۔

آئی پی ایچ کی ڈین پروفیسر زرفشاں طاہر اور صحت عامہ کے دیگر ماہرین نے یہ بات ادارے میں عوامی آگاہی کے لیے منعقدہ ایک سیمینار میں کہی۔

انہوں نے کہا کہ جو افراد نزلہ، زکام یا کھانسی میں مبتلا ہیں انہیں ماسک پہننے چاہئیں اور کھانستے یا چھینکتے ہوئے ٹشو پیپر کا استعمال کرنا چاہیئے تاکہ دوسرے اس سے محفوظ رہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ’پی ایس ایل کی وجہ سے کورونا کیسز چھپانے کی بات بالکل غلط ہے‘

انہوں نے بتایا کہ صحت مند شخص کے ماسک پہننے سے کورونا وائرس کو روکنے میں کوئی مدد نہیں ملے گی۔

ڈاکٹر زرفشاں کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس کوئی نئی بیماری نہیں بلکہ اس نے اپنی ہیئت تبدیل کی ہے لہٰذا ذاتی صحت و صفائی اور روک تھام کے اقدامات بآسانی اس وائرس سے محفوظ رکھ سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ باقاعدگی سے ہاتھ دھونا اور اچھی غذا کا استعمال انفیکشن کے خلاف قوت مدافعت میں اضافہ کرتا ہے۔

ڈاکٹر زرفشاں نے کہا کہ وائرس سے حفاظت کے لیے آئی پی ایچ نے ضروری ہدایات جاری کردیں ہیں اور آئی پی ایچ عوام تک صحت کا پیغام پہنچانے کے لیے ورچوئل یونیورسٹی کے میڈیا چینلز کا بھی استعمال کرے گا۔

مزید پڑھیں: کورونا وائرس سے جسم کے مختلف حصوں پر کیا اثرات مرتب ہوسکتے ہیں؟

اس موقع پر ڈاکٹر ہدیٰ نے کہا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کے لیے کوئی خصوصی غذا نہیں، مریض گوشت، سبزیاں اور پھل کھاسکتے ہیں سوشل میڈیا پر غلط معلومات پھیلی ہوئی ہیں کہ اس قسم کے مریضوں کے لیے گوشت مضر صحت ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کورونا وائرس کے علاج یا روک تھام میں پیاز یا لہسن کے مفید ہونے کا کوئی سائنسی ثبوت موجود نہیں، عوام کو کسی بھی میڈیا کے ذریعے پھیلی اس قسم کی قیاس آرائیوں یا غلط معلومات پر توجہ نہیں دینا چاہیے۔

ڈاکٹر ہدیٰ نے واضح کیا کہ ’اس وائرس کی کوئی مخصوص ویکسین یا دوا موجود نہیں‘۔

دریں اثنا ڈاکٹر سمیہ کا کہنا تھا کہ اس صورتحال میں وہمی باتوں کی حوصلہ شکنی کرنی چاہیے، انہوں نے واضح کیا کہ گوشت کے استعمال اور پالتو جانوروں یا پرندوں کی دیکھ بھال کا کورونا وائرس کے پھیلاؤ سے کوئی لینا دینا نہیں اور جو لوگ اس قسم کی افواہیں پھیلا رہے ہیں وہ عوام کا بھلا نہیں کررہے۔

یہ بھی پڑھیں: عالمی ادارہ صحت، کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے پاکستانی اقدامات کا معترف

ان کا مزید کہنا تھا عوام کورونا وائرس سے متعلق ہیلپ لائن 1166 پر رابطہ کر کے معلومات حاصل کرسکتے ہیں۔

صحت عامہ کے ماہرین نے عوام کو تجویز دی کہ عوامی مقامات سے گریز اور باقاعدگی سے ہاتھ دھو کر احتیاطی تدابیر اپنائیں اور پریشان نہ ہوں۔

انہوں نے کہا کہ نزلہ، زکام کھانسی اور سانس میں تکلیف پر فوراً ڈاکٹر کے پاس یا ہسپتال جائیں تا کہ تشخیص اور علاج ہوسکے۔


یہ خبر 4 مارچ 2020 کو ڈان اخبار میں شائع ہوئی۔