موڈیز نے پاکستان کی کریڈٹ ریٹنگ کی تصدیق کردی

اپ ڈیٹ 09 اگست 2020

ای میل

موڈیز نے پاکستان کی بی 3 کریڈٹ ریٹنگ کی مستحکم منظرنامے کے ساتھ تصدیق کی ہے — فائل فوٹو: اے ایف پی
موڈیز نے پاکستان کی بی 3 کریڈٹ ریٹنگ کی مستحکم منظرنامے کے ساتھ تصدیق کی ہے — فائل فوٹو: اے ایف پی

اسلام آباد: موڈیز نے ہفتے کے روز کمی کے جائزے کے طور پر پاکستان کی بی تھری کریڈٹ ریٹنگ کی مستحکم منظرنامے کے ساتھ تصدیق کی ہے۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق ایجنسی نے تھرڈ پاکستان انٹرنیشنل سکوک کمپنی لمیٹڈ کے لیے بھی بی تھری غیر ملکی کرنسی کی سینئر غیرمحفوظ شدہ درجہ بندی کی تصدیق کی ہے جبکہ یہاں موصول پریس بیان کے مطابق متعلقہ ادائیگیوں کی ذمے داری موڈیز کے خیال میں حکومت پاکستان کی براہ راست ذمہ داریوں میں شامل ہے۔

مزید پڑھیں: کورونا وائرس: موڈیز نے پاکستان کی ترقی کی شرح سے متعلق نئی پیش گوئی کردی

تنزلی کے لیے جائزے کی اہم وجہ پاکستان کا یہ بیان بنا جس کے مطابق پاکستان جی 20 ڈیٹ سروس معطلی اقدام (ڈی ایس ایس آئی) میں حصہ لینے کی کوشش کرے گا جس کے ساتھ ہی یہ سوال کھڑا ہوا کہ ملک نجی شعبے کے قرض دہندگان سے مطالبہ کر سکتا ہے کہ وہ پاکستانی قرضوں کے ساتھ اسی طرح کا سلوک کریں۔

بیان میں کہا گیا کہ اگرچہ موڈیز کا یہ ماننا ہے کہ ڈی ایس ایس آئی پر جاری عمل درآمد سے نجی قرض دہندگان کو خطرات لاحق ہیں لیکن اس جائزے سے نتیجہ اخذ کرنے اور درجہ بندی کی تصدیق اس بات کی عکاسی کرتی ہے کہ پاکستان کی اس مرحلے پر موجودہ بی تھری کی درجہ بندی میں مناسب عکاسی ہوتی ہے۔

ایجنسی نے کہا کہ یہ واضح نہیں ہے کہ نجی قرض دہندگان کے سرکاری شعبے کے قرض دہندگان کے ساتھ تقابلی سلوک کرنے کے لیے پاکستان اور دیگر شریک حکومتوں پر کیا اثر و رسوخ لاگو ہوتا ہے۔

ریٹنگ ایجنسی نے اپنے بیان میں کہا کہ تاہم متعدد عناصر یہ تجویز کرتے ہیں کہ وسیع پیمانے پر نجی شعبے کی شمولیت کا امکان کم ہو گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: موڈیز نے پاکستانی معیشت سےمتعلق مزید پیشگوئی کردی

جاری بیان میں مزید کہا گیا کہ اس بارے میں پیشرفت پر گفتگو کی غیرموجودگی بھی شامل ہے کہ ڈی ایس ایس آئی میں عام طور پر نجی شعبے کی شمولیت (PSI) کو کس طرح متاثر کیا جائے گا، جی 20 کے اشاریے کہ پی ایس آئی کو قرض لینے والی حکومت کی حمایت کی ضرورت ہوگی، حکومت پاکستان کا یہ دعویٰ جاری ہے کہ پی ایس آئی پر غور نہیں کیا جاتا اور ڈی ایس ایس آئی حکومت کے تحت نجی شعبے کے قرض دہندگان کے لیے قرضوں کی ادائیگی کے کچھ ثبوت موجود ہیں۔

موڈیز نے کہا کہ کچھ خاص صورتوں میں خطرات اس امکان کے ساتھ موجود ہیں کہ ڈی ایس ایس آئی کو نجی شعبے کے قرض دہندگان کے ساتھ بھی نافذ کیا جاتا ہے تاکہ وہ قرض کی خدمت میں امداد فراہم کرسکیں اور ایسا کرنے میں نقصان اٹھانا پڑے۔