آرمی چیف کی اقوام متحدہ کے ملٹری ایڈوائزر سے ملاقات، علاقائی سلامتی کی صورتحال پر تبادلہ خیال

اپ ڈیٹ 02 اکتوبر 2022
<p>آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نیویارک میں ملاقات کے بعد جنرل بیرامے سے سووینئر وصول کرتے ہوئے— فوٹو: آئی ایس پی آر</p>

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نیویارک میں ملاقات کے بعد جنرل بیرامے سے سووینئر وصول کرتے ہوئے— فوٹو: آئی ایس پی آر

چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے دورۂ امریکا کے دوران اقوام متحدہ کے ملٹری ایڈوائزر جنرل بیرامے ڈیوپ سے ملاقات کی اور مختلف امور سمیت علاقائی سلامتی کی مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق ملاقات کے دوران باہمی دلچسپی کے امور کے ساتھ ملک میں سیلاب سے پیدا ہونے والی قدرتی آفت پر بھی بات چیت کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا دورۂ امریکا، اہم ملاقاتیں متوقع

آرمی چیف نے اقوام متحدہ کے بنیادی اقدار کے فروغ اور بحران کے دوران فوری ردعمل میں جنرل بیرامے ڈیوپ کے کردار کو سراہا، جن کا تعلق سینیگال سے ہے۔

—فوٹو: آئی ایس پی آر
—فوٹو: آئی ایس پی آر

اقوام متحدہ کے ملٹری ایڈوائزر جنرل بیرامے ڈیوپ نے موسمیاتی تبدیلیوں کے باعث پاکستان میں جاری سیلاب سے ہونے والی تباہی پر دکھ کا اظہار کیا اور متاثرین کے اہل خانہ سے دلی تعزیت کی، اور سیلاب متاثرین کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

آئی ایس پی آر کا مزید کہنا تھا کہ جنرل بیرامے نے اقوام متحدہ کے امن مشن اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں غیر معمولی کامیابیوں میں پاکستان کی کوششوں کا اعتراف کیا۔

خیال رہے کہ 2 اکتوبر کی ڈان اخبار کی رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ تقریباً ایک ہفتہ طویل دورے پر امریکا پہنچ گئے، جس کے دوران وہ بائیڈن انتظامیہ کے سینئر حکام سے ملاقاتیں بھی کریں گے۔

جب صحافیوں سے آرمی چیف کے دورے کے بارے میں پاکستان کے سفیر سردار مسعود خان سے معلومات مانگی گئی تو انہوں نے کہا کہ 'ہاں، وہ یہاں ہیں'۔

مزید پڑھیں: امریکا، پاکستان کا آرمی چیف کے دورۂ واشنگٹن کے آپشنز پر غور

تاہم پاکستانی سفیر نے آرمی چیف کے سفر کے پروگرام کو شیئر کرنے سے گریز کیا تھا۔

پاکستانی حکام امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن سے ملاقات کرنے کی بھی کوشش کر رہے ہیں، تاہم ذرائع نے بتایا کہ 'اس کا امکان بہت ہے لیکن ابھی تک اس کی تصدیق نہیں ہوئی'۔

بدھ کو آرمی چیف مختلف تھنک ٹینکس کے ارکان اور پاکستان کے امور میں دلچسپی رکھنے والے دیگر اسکالرز سے ملاقات کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں: آرمی چیف کی امریکی سینٹ کام کے کمانڈر سے ملاقات

یاد رہے کہ ان کا امریکا کا آخری سرکاری دورہ 2019 میں ہوا تھا، جب وہ سابق وزیر اعظم عمران خان کے ہمراہ واشنگٹن کے تین روزہ دورے پر گئے تھے۔

واضح رہے کہ 16 اگست کو ڈان اخبار کی رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ امریکا اور پاکستانی حکام چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کے اگست کے آخر یا ستمبر کے اوائل میں امریکا کا دورہ کرنے کے لیے مختلف آپشنز پر غور کر رہے ہیں۔

تبصرے (0) بند ہیں