معروف اداکار، پروڈیوسر و ہدایت کار نبیل ظفر نے انکشاف کیا ہے کہ جب وہ مالی طور پر کمزور ہونے لگے تھے تب انہوں نے اُدھار پر مشہور کامیڈی ڈراما ’بُلبلے‘ بنایا، جسے انہوں نے 2009 میں چینل کو ڈیڑھ لاکھ روپے میں فروخت کیا۔

’بُلبلے‘ کو 2009 میں نشر کیا گیا تھا اور یہ ڈراما اتنا مقبول ہوا کہ یہ کئی سال تک مسلسل چلتا رہا اور پھر اس کے مزید سیزن بھی بنائے گئے۔

مذکورہ ڈرامے کی کہانی علی عمران جب کہ ہدایات رانا رضوان نے دی تھیں اور اس میں نبیل ظفر کے علاوہ عائشہ عمر، حنا دلپذیر اور محمود اسلم نے مرکزی کردار ادا کیے۔

ڈرامہ خاندانی کہانی اور خاندانی کامیڈی کی وجہ سے بہت مقبول ہوا اور یہ مسلسل کئی سال تک چلتا رہا اور اس کے ایک سے زائد سیزن بنائے گئے۔

حال ہی میں نبیل ظفر مزاحیہ پروگرام ’مذاق رات‘ میں شریک ہوئے، جہاں انہوں نے کیریئر سمیت دیگر معاملات پر بھی کھل کر بات کی۔

اداکار نے شادی اور محبت کے حوالے سے بات بھی کی اور انکشاف کیا کہ ان کی اہلیہ ان کی مداح تھیں، جو ان سے آٹوگراف مانگنے آئی تھیں اور وہیں سے ان کا سلسلہ شروع ہوا، انہوں نے آٹوگراف کے بجائے نکاح نامے پر دستخط کیے۔

انہوں نے بتایا کہ ان کی اور ان کی اہلیہ کی پہلی بار اسکاٹ لینڈ کے شہر گلاسگو کے ریلوے اسٹیشن پر ملاقات ہوئی تھی۔

پروگرام میں بات کرتے ہوئے نبیل ظفر نے اپنے مقبول ترین پاکستان ٹیلی وژن (پی ٹی وی) کے ڈرامے ’دھواں‘ کی یادیں بھی شیئر کیں اور بتایا کہ ان کی موت کا منظر دیکھ کر ان کی والدہ بھی افسردہ ہوگئی تھیں۔

ان کے مطابق دھواں ڈرامے میں ان کی موت کے منظر سے اس وقت پوری قوم مایوس ہوگئی تھی اور وہ پہلے ہی گھر میں بڑے بھائی کو بتا کر گئے تھے کہ ان کی موت کا منظر والدہ کو نہ دکھایا جائے۔

نبیل ظفر کا کہنا تھا کہ دھواں کی شوٹنگ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں منفی 5 سینٹی گریڈ کی سردیوں میں کی گئی تھی۔

سنجیدہ کرداروں کی وجہ سے شہرت حاصل کرنے کے بعد اچانک ’بُلبلے‘ جیسے کامیڈی ڈرامے بنانے کے سوال پر انہوں نے بتایا کہ دراصل 2009 تک ان کی مالی حالت کمزور ہو چکی تھی اور ان کے بچے بھی ہوچکے تھے، جن کی تعلیم اور دیگر اخراجات کے لیے وہ پریشان تھے۔

انہوں نے بتایا کہ بچوں کے اخراجات کے لیے پیسے بنانے کے چکر میں انہوں نے پہلے اپنا پروڈکشن ہاؤس بنایا اور پھر اُدھار پر ’بُلبلے‘ بنایا۔

نبیل ظفر کے مطابق انہوں نے ہدایت کار اور ڈراما لکھاری کو پہلے ہی بتا دیا تھا کہ ابھی ان کے پاس پیسے نہیں ہیں، وہ جیسے ہی ڈرامے کو فروخت کریں گے اور انہیں پیسے ملیں گے تو وہ انہیں پیسے دے دیں گے۔

انہوں نے بتایا کہ خرچہ بچانے کے لیے انہوں نے خود بھی ’بُلبلے‘ میں کردار ادا کیا اور انہوں نے اس وقت ڈرامے کو چینل کو ڈیڑھ لاکھ روپے میں فروخت کیا تھا۔

اگرچہ انہوں نے بتایا کہ انہوں نے ڈرامے کو ڈیڑھ لاکھ روپے میں فروخت کیا تھا، تاہم انہوں نے واضح نہیں کیا کہ انہوں نے ڈرامے کی کتنی اقساط مذکورہ رقم میں فروخت کی تھیں؟

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں