نواز شریف کا بھرپور انداز میں 'عدلیہ بچاؤ تحریک' چلانے کا اعلان

30 مئ 2019

ای میل

ہم سب نے مل کر اس عدلیہ بچاؤ تحریک کو چلانا ہے، نواز شریف کا رہنماؤں کو پیغام — فائل فوٹو
ہم سب نے مل کر اس عدلیہ بچاؤ تحریک کو چلانا ہے، نواز شریف کا رہنماؤں کو پیغام — فائل فوٹو

سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف نے ملک میں بھرپور انداز میں 'عدلیہ بچاؤ تحریک' چلانے کا اعلان کر دیا۔

کوٹ لکھپت جیل میں ملاقات کے لیے آنے والے پارٹی رہنماؤں کو نواز شریف نے واضح پیغام دیتے ہوئے کہا کہ عدلیہ پر شب خون مارنے کی اجازت نہیں دیں گے اور جو اس عدلیہ بچاؤ تحریک میں شامل نہیں ہوا قوم اسے کبھی معاف نہیں کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ 'عمران خان کی اپنی کوئی عزت نہیں لیکن ملک کی بہت عزت ہے، وہ ایک ایک ڈالر کے لیے دنیا سے بھیک مانگ رہے ہیں اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کے لیے منت ترلے کر رہے ہیں جبکہ مودی خود چل کر میرے پاس آئے تھے۔'

ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے قومی غیرت کا جنازہ نکال دیا ہے لیکن اب بس ہو گئی ہے، اب کوئی اور نہیں صرف ووٹ کو عزت دو کا ہی بیانیہ چلے گا۔

نواز شریف نے رہنماؤں سے کہا کہ وہ باہر جا کر 'ووٹ کو عزت دو کا پہرہ دو' کا نواز شریف کا پیغام گلی گلی جاکر پہنچائیں، جس طرح حکومت نے میڈیا کو یرغمال بنایا اور ججز کے خلاف ریفرنس لا رہی ہے اب خاموش نہیں بیٹھیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: سینئر ججز کے خلاف ریفرنسز کی سماعت 14 جون کو مقرر

انہوں نے کہا کہ قید و بند کی صعوبتیں ان کا عزم متزلزل نہیں کر سکتیں، مجھے پتہ ہے میری سزا بڑھ جائے گی لیکن اس کی فکر نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حکمرانوں نے معیشت کا برا حال کر دیا ہے، ڈالر اوپر اور روپیہ نیچے جارہا ہے، اسٹاک مارکیٹ میں مندی کا رجحان ہے، حکومت نے متوسط طبقے سمیت غریب شخص کو مہنگائی کی چکی میں پیس دیا ہے، ان غریبوں کی آواز بننا ہو گا ورنہ قوم ہمیں معاف نہیں کرے گی۔

مسلم لیگ (ن) کے قائد کا کہنا تھا کہ اتنے پاک صاف کردار کے حامل ججز کی ٹارگٹ کلنگ ہو رہی ہے، ہم سب نے مل کر اس عدلیہ بچاؤ تحریک کو چلانا ہے جس کے لیے سیاسی جماعتیں، وکلا، سول سوسائٹی مل کر اپنا لائحہ عمل تیار کریں۔

(ن) لیگ کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس طلب

بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے بتایا کہ 'قائد کی ہدایت پر جمعہ کی صبح پارلیمانی قیادت عدلیہ پر حکومتی حملے کی جوابی حکمت عملی تیار کرے گی۔

مزید پڑھیں: سینئر ججز کے خلاف حکومتی ریفرنس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل احتجاجاً مستعفی

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کا پیغام ہے کہ عدلیہ کی آزادی، تحفظ اور دفاع کے لیے ڈٹ جائیں جبکہ عدلیہ پر حکومتی حملے ناکام بنانے میں کسی کمزوری کا مظاہرہ نہ کیا جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ 'پہلے بھی نواز شریف جان ہتھیلی پر رکھ کر عدلیہ کے تحفظ اور بحالی کے لیے میدان عمل میں نکلے تھے، ان کے حکم پر پارٹی، کارکنان اور قوم لبیک کہتے ہوئے پھر میدان عمل میں نکلیں گے۔'

مریم اورنگزیب نے کہا کہ 'جعلی حکومت کا عدلیہ پر حملہ آمرانہ سوچ ہے، سوچی سمجھی سازش کے تحت پارلیمان سمیت تمام اداروں کو مفلوج کیا جا رہا ہے، جس حکومت اور وزیر اعظم کے جھوٹوں کا حجم اس قدر زیادہ ہو کہ 38 ترجمان کرائے کے بھرتی کر لیے اس نالائق اعظم کی وجہ سے ذلت کا سونامی آیا ہوا ہے۔