اداکار محسن عباس کی عبوری ضمانت میں 16 اگست تک توسیع

اپ ڈیٹ 05 اگست 2019

ای میل

اداکار کی اہلیہ نے امانت میں خیانت اور سنگین نتائج کی دھمکیوں کا مقدمہ درج کروا رکھا ہے — فائل فوٹو
اداکار کی اہلیہ نے امانت میں خیانت اور سنگین نتائج کی دھمکیوں کا مقدمہ درج کروا رکھا ہے — فائل فوٹو

لاہور کی سیشن عدالت نے امانت میں خیانت اور سنگین نتائج کی دھمکیوں کے مقدمے میں نامزد اداکار محسن عباس کی عبوری ضمانت میں 16 اگست تک توسیع کرتے ہوئے پولیس کو محسن عباس کی گرفتاری سے روک دیا۔

ایڈیشنل سیشن جج تجمل شہزاد نے محسن عباس کی درخواست ضمانت پر سماعت کی، اس موقع پر اداکار وکیل کے ہمراہ سیشن عدالت میں پیش ہوئے۔

دوران سماعت محسن عباس کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ پولیس کی تفتیش جاری ہے، اداکار پولیس سے مکمل تعاون کر رہے ہیں لہٰذا ان کے موکل کی عبوری ضمانت میں توسیع کی جائے۔

عدالت نے پولیس کو جلد تفتیش مکمل کر کے رپورٹ جمع کروانے کی ہدایت کرتے ہوئے اداکار محسن عباس کی عبوری ضمانت میں 16 اگست تک توسیع کر دی۔

خیال رہے کہ محسن عباس کی اہلیہ فاطمہ سہیل نے ان کے خلاف تھانہ ڈیفنس میں امانت میں خیانت اور سنگین نتائج کی دھمکیوں کا مقدمہ درج کروا رکھا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: محسن عباس حیدر کی اہلیہ کا شوہر پر تشدد کرنے اور دھوکہ دینے کا الزام

فاطمہ سہیل نے رواں ماہ 20 جولائی کو اپنے شوہر پر گھریلو تشدد اور شادی شدہ ہونے کے باوجود افیئرز چلانے کا الزام عائد کیا تھا، جس کے بعد لاہور کے ڈیفنس پولیس اسٹیشن میں اداکار کے خلاف ایف آئی آر درج کرلی گئی تھی۔

ایڈیشنل سیشن جج نے 24 جولائی کو محسن عباس کی 50 ہزار روپے کے ضمانتی مچلکوں کے عوض عبوری ضمانت منظور کرتے ہوئے پولیس حکام کو 5 اگست تک اداکار کو گرفتار نہ کرنے کی ہدایت جاری کی تھی۔

اہلیہ کی جانب سے سوشل میڈیا پر الزام لگانے کے بعد محسن عباس حیدر نے 21 جولائی کو ایک پریس کانفرنس میں خود پر لگے تمام الزامات کو بے بنیاد قرار دیا تھا۔

محسن عباس حیدر نے کہا تھا کہ 'وہ جو کچھ کہہ رہی ہیں وہ جھوٹ ہے، میں نے ان کو چھوا بھی نہیں، یہ ٹھیک ہے کہ ماضی میں غصے کے حوالے سے مجھے مسائل رہے ہیں، مگر اب میں بدل چکا ہوں'۔