کوشش ہے ٹیسٹ میچ میں 200 فیصد پرفارم کروں، فواد عالم

اپ ڈیٹ دسمبر 11 2019

ای میل

فواد عالم نے کہا کہ ٹیسٹ کرکٹ کیلئے سری لنکن ٹیم کی پاکستان آمد سے دنیا میں اچھا پیغام جائے گا —فوٹو: عمران صدیقی
فواد عالم نے کہا کہ ٹیسٹ کرکٹ کیلئے سری لنکن ٹیم کی پاکستان آمد سے دنیا میں اچھا پیغام جائے گا —فوٹو: عمران صدیقی

دس سال بعد ٹیسٹ ٹیم کا حصہ بننے والے قومی ٹیم کے کھلاڑی فواد عالم کا کہنا ہے کہ ٹیسٹ میچ کھیلتے ہوئے میرے جذبات ڈیبیو والے ہوں گے، سری لنکا میں ڈیبیو کیا تھا اب بھی سری لنکا کے خلاف ہی کھیلوں گا۔

سری لنکا کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں قومی ٹیم میں سلیکٹ ہونے کے بعد کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے فواد عالم نے کہا کہ میں بہت خوش ہوں اور اپنے جذبات کو الفاظ میں بیان نہیں کرسکتا۔

انہوں نے کہا کہ کبھی کبھی ایسا ہوتا ہے کہ آپ پرفارم کرتے ہو اور سلیکٹ نہیں ہوپاتے تو ظاہر ہے افسوس ہوتا ہے، ہمارا سب کچھ کرکٹ ہی ہے، کرکٹ چھوڑنے کا سوچ نہیں سکتا۔

فواد عالم نے کہا کہ ہمارا کام صرف قومی کرکٹ ٹیم کو پرفارم کرکے دینا ہے، آپ جتنا پرفارم کرتے رہیں گے کبھی نہ کبھی تو دروازہ کھلے گا اور دروازہ کھلا ہے۔

مزید پڑھیں: سری لنکا کیخلاف ٹیسٹ اسکواڈ کا اعلان، فواد عالم کی 10سال بعد واپسی

ان کا کہنا تھا کہ جنہوں نے مجھے اتنا پیار دیا، مجھے سپورٹ کیا میں ان کا بہت مشکور ہوں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جب کوئی کھلاڑی کلب کا میچ یا ڈومیسٹک کھیل رہا ہوتا ہے تو اس پر پریشر ہوتا ہے، پرفارمنس کا پریشر ہوتا ہی ہوتا ہے، پرفارمنس کا پریشر ضرور ہوگا اتنے عرصے بعد کم بیک ہے لیکن اس پر قابو پانا ہے اور اپنا 100 فیصد دینا ہے۔

فواد عالم نے کہا کہ مجھے اللہ نے جو موقع دیا ہے میں اس پر مثبت سوچوں گا اور اس پر اپنی توجہ مرکوز کروں گا میری کوشش یہی ہے کہ میں اس پلیٹ فارم پر 200 فیصد پرفارم کروں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بہت سالوں بعد ٹیسٹ کرکٹ واپس آرہی ہے اور ہماری دعا ہے کہ پی سی بی کی بنگلہ دیش کے ساتھ ڈے نائٹ ٹیسٹ کروانے کی کوشش رنگ لائے۔

فواد عالم نے کہا کہ میرے لیے خوشی کی بات ہے کہ میرا نام رام پرکاش سے جوڑا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ٹیسٹ کرکٹ کے لیے سری لنکن ٹیم کی پاکستان آمد سے دنیا میں اچھا پیغام جائے گا، کوشش کروں گا انٹرنیشنل کرکٹ میں پرفارم کروں۔

ایک سوال کے جواب میں فواد عالم کا کہنا تھا کہ میری توجہ ٹیسٹ میچ پر مرکوز ہے، 10 سال کا عرصہ بہت ہے اس میں کتنے دن، کتنے گھنٹے، کتنے سیکنڈ کتنے منٹ ہوتے ہیں بس مشکل وقت ہوتا ہے تاہم اس دوران اچھی سوچ کے لوگوں میں بیٹھنا اہم ہے جو آپ کی حوصلہ افزائی کریں۔

یہ بھی پڑھیں: سری لنکا سے ٹیسٹ سیریز، فواد عالم کی قومی ٹیم میں شمولیت متوقع

فواد عالم نے کہا کہ میرے والد مجھے فائٹر کہتے ہیں کہ پریشان نہیں ہونا، گرنا نہیں ہے اس سے بھی میری بہت حوصلہ افزائی ہوئی۔

انضمام الحق کی جانب سے تنقید سے متعلق ایک سوال کے جواب میں فواد عالم نے کہا کہ انضمام الحق ہمارے لیجنڈ ہیں میں ان کے آس پاس بھی نہیں ہوں، یہ ان کا نظریہ ہے کہ انہوں نے کچھ اچھا دیکھا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ میری کوشش ہوگی کہ میں اپنا 100فیصد دوں کیونکہ اگر میں ان باتوں میں لگوں گا تو میرے لیے پریشانی ہوگی میں منفی سوچنے لگوں گا۔

بیٹنگ سے متعلق سوال پر فواد عالم نے کہا کہ ہمارا پہلا میچ راولپنڈی میں ہے یہ صورتحال پر انحصار کرتا ہے ہماری ٹیم کی کوشش ہے کہ اچھا پرفارم کریں۔

فواد عالم نے کہا کہ ٹیسٹ میچ کھیلتے ہوئے میرے جذبات ڈیبیو والے ہوں گے، سری لنکا میں ڈیبیو کیا تھا اب بھی سری لنکا کے خلاف ہی کھیلوں گا۔