آزاد جموں و کشمیر میں 3 دن کے لیے ٹرانسپورٹ سروس بند

اپ ڈیٹ 21 مارچ 2020

ای میل

تین دن کے لیے آزاد جموں کشمیر میں کسی بھی پبلک ٹرانسپورٹ کو آنے ہا جانے کی اجازت نہیں ہو گی— فائل فوٹو: اے ایف پی
تین دن کے لیے آزاد جموں کشمیر میں کسی بھی پبلک ٹرانسپورٹ کو آنے ہا جانے کی اجازت نہیں ہو گی— فائل فوٹو: اے ایف پی

آزاد جموں و کشمیر حکومت نے کورونا وائرس کے سبب لگی ہوئی ہیلتھ ایمرجنسی کے تحت جمعہ کی رات سے صوبے بھر میں ٹرانسپورٹ سروس منسوخ کردی ہے۔

محکمہ داخلہ کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق آزاد جموں و کشمیر میں تین دن کے لیے کسی بھی پبلک ٹرانسپورٹ کو داخل یا باہر جانے کی اجازت نہیں ہو گی۔

مزید پڑھیں: کوئٹہ: کورونا وائرس کے باعث انٹرسٹی بس سروس اور پبلک ٹرانسپورٹ بند

حکومت نے اعلان کیا ہے کہ احکامات کی خلاف ورزی کرنے والوں کو قرار واقعی سزا دی جائے گی۔

ڈپٹی کمشنر مظفر آباد بدر منیر نے کہا کہ پابندی کا اطلاق مقامی پبلک ٹرانسپورٹ پر بھی ہو گا۔

ادھر وزیر صحت ڈاکٹر نجیب نقی کیانی نے کہا کہ چار مشتبہ مریضوں کے نمونے جمعرات کو نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ بھجوا دیے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: سندھ حکومت کا ریسٹورنٹس، شاپنگ مالز 15 روز کیلئے بند کرنے کا فیصلہ

مجموعی طور پر آزاد جموں و کشمیر میں 40 نمونے نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ بھیجے گئے تھے جس میں سے 23 کی رپورٹس موصول ہو چکی ہیں جن میں سے ایک شخص میں وائرس کی موجودگی کی تشخیص ہوئی۔

ڈاکٹر نجیب کیانی نے کہا کہ بقیہ 17 افراد کی رپورٹس کل تک موصول ہو جائیں گی۔

دوسری جانب وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر کی زیر سربراہی منعقدہ ریاستی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں میرپور میں اسکریننگ سخت کرنے کافیصلہ کیا گیا جہاں حال ہی میں 3 ہزار سے زائد لوگ بیرون ملک سے واپس لوٹے ہیں۔

مزید پڑھیں: کورونا وائرس: سندھ، پنجاب اور بلوچستان میں مزید کیسز سے ملک میں 495 افراد متاثر

وزیر اعظم آزاد جموں کشمیر نے سزائے موت پانے والے قیدیوں کے علاوہ بقیہ تمام قیدیوں کی سزا میں بھی دو ماہ کی کمی کردی ہے۔

یاد رہے کہ دنیا کی طرح پاکستان بھر میں کورونا وائرس انتہائی تیزی سے پھیل رہا ہے اور ملک میں اب تک وائرس کی زد میں آ کر 3 افراد ہلاک اور 495 متاثر ہو چکے ہیں۔