• KHI: Maghrib 7:21pm Isha 8:46pm
  • LHR: Maghrib 7:04pm Isha 8:38pm
  • ISB: Maghrib 7:14pm Isha 8:51pm
  • KHI: Maghrib 7:21pm Isha 8:46pm
  • LHR: Maghrib 7:04pm Isha 8:38pm
  • ISB: Maghrib 7:14pm Isha 8:51pm

ملکی مفاد، عوامی دلچسپی کیلئے اشتہار دینا حکومت کا استحقاق ہے، مریم اورنگزیب

شائع June 6, 2022
مریم اورنگزیب نے کہا کہ وہ اخبار میں اشتہار دینے کا دفاع کر سکتی ہیں —تصویر: ڈان نیوز
مریم اورنگزیب نے کہا کہ وہ اخبار میں اشتہار دینے کا دفاع کر سکتی ہیں —تصویر: ڈان نیوز

وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان کا یہ استحقاق ہے کہ ملکی مفاد، عوام کی دلچسپی کے لیے جو اشتہار حکومت بہتر سمجھتی ہے وہ دے سکتی ہے اور اس کا دفاع کرنا بھی میں جانتی ہوں۔

اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت پر تنقید اور پاک ۔ ترک دوستی کے 75 سال مکمل ہونے پر جو اشتہارات شائع کرائے گئے اس کے خلاف عدالت میں درخواست دائر کردی گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ پی ٹی آئی کی انا اور ضد یہ ہے، دو ممالک کے درمیان دوستی کو جشن منایا جارہا ہے جس کے سرمایہ کاروں کو انہوں نے ناراض کردیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: وزیراعظم کے دورۂ ترکی سے متعلق اخبارات میں اشتہارات پر تنقید

انہوں نے کہا کہ صرف شہباز شریف کے حسد اور انا میں آپ نے ترک کمپنیوں کو نیب کی جیلوں میں ڈالا اور آج وزیر اعظم وہاں گئے کہ ان کا پھیلایا ہوا گند صاف کریں اور ان کی لگائی آگ بجھائیں۔

بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمارے سر اس وقت شرم سے جھک گئے جب انہوں (ترکی) نے 4 سال کی داستانیں سنائیں کہ کس طرح سرمایہ کاروں سے سیاسی انتقام کے لیے بدلہ لیا گیا، ملکی مفاد کو انگوٹھیوں اور گھڑیوں میں بیچا گیا۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ اشتہار کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں لے جاکر کیا پیغام دیا گیا کہ پاکستان تحریک انصاف، پاک ۔ ترک دوستی کے خلاف ہے؟

ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کی 75 سال کی دوستی کا جشن منانے کے لیے یہ اشتہار دیا گیا۔

مزید پڑھیں: وزیراعظم کے دورۂ ترکی سے متعلق اشتہار کے خلاف دائر درخواست خارج

ساتھ ہی ان کا کہنا تھا کہ ترکی میں جو اس کا جشن منایا گیا، لوگو متعارف کرائے گئے اور جس طرح انہوں نے وزیر اعظم شہباز شریف کا استقبال کیا اسی کو تو دیکھ کر ذہنی حالت خراب ہے۔

انہوں نے کہا کہ جن کا ملکی مفاد گھڑی اور توشہ خانہ سے شروع ہو کر 5 قیراط کی انگوٹھی پر ختم ہو انہیں ملکی مفاد کا کیا پتا کہ دوسرے ممالک کی سرمایہ کاری سے کیا فائدہ ہوتا ہے۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ میرا، حکومت پاکستان کا یہ استحقاق ہے کہ ملکی مفاد، عوام کی دلچسپی کے لیے جو اشتہار حکومت بہتر سمجھتی ہے وہ دے سکتی ہے اور اس کا دفاع کرنا بھی میں جانتی ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ جھوٹوں نے ایک فگر دیا کہ ایک ارب 75 کروڑ کے اشتہارات دے دیے گئے، آپ کو شرم بھی نہیں آتی، ملک کے ساتھ کیا کر گئے ہیں اور صبح دوپہر شام جھوٹ بولتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: سوشل میڈیا قواعد: حکومت یا کوئی اور تنقید سے بالاتر نہیں، اسلام آباد ہائی کورٹ

انہوں نے کہا کہ یہ لوگ 4 سال میں 3 ارب 29 کروڑ روپے کے پی ٹی آئی کے جھنڈوں والے اشتہارات دے کر گئے جس کی ادائیگی بھی نہیں کی گئی اور وہ واجبات اب ہم ادا کر رہے ہیں۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ 100 دن بعد انہوں نے یہ اشتہار چھاپا کہ 'ہم مصروف تھے'، کس چیز میں مصروف تھے ذرا بتائیں؟ کیوں کہ ملک کی ترقی، معیشت ٹھیک کرنے میں تو آپ مصروف نہیں تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ فرح گوگی صاحبہ عمران خان اور بشریٰ بی بی کے لیے ہر منصوبے، تبادلے، تعیناتی اور ڈیل سے پیسے بٹورنے میں مصروف تھیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ 100 روز والا اشتہار دینے والے آج پاک ۔ ترک دوستی کی 75ویں سالگرہ کا اشتہار آج اسلام آباد ہائی کورٹ میں لے گئے اور وہاں سے بھی جواب مل گیا۔

پس منظر

خیال رہے کہ 31 مئی کو وزیراعظم شہباز شریف کے ترکی کے 3 روزہ دورے پر روانہ ہونے پر اس مناسبت سے ملک کے مؤقر روزناموں کے صفحہ اول پر دورۂ ترکی سے متعلق اشتہارات شائع ہوئے تھے۔

تاہم ملک میں جاری مہنگائی کی لہر اور معیشت کی ڈانواں ڈول صورتحال کے تناظر میں حکومت کی جانب سے اشتہارات کی اشاعت نے عوام کی سخت تنقید کو جنم دیا تھا۔

اس کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں دائر درخواست میں پی ٹی آئی رہنما علی نواز اعوان نے غیر ملکی دوروں پر پبلک فنڈز کے استعمال کو چیلنج کیا تھا۔

تبصرے (1) بند ہیں

سید اختر عباس زیدی Jun 07, 2022 03:37pm
تمام استحقاق حکمرانوں کے ہی ہیں ؟ قوم کا بھی کوئ حق ہے کہ نہیں!

کارٹون

کارٹون : 24 جولائی 2024
کارٹون : 23 جولائی 2024