فرحت اللہ بابر کا اسپیکر قومی اسمبلی سے علی وزیر کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کا مطالبہ

اپ ڈیٹ 12 جون 2022
فرحت اللہ بابر کا یہ پیغام قومی اسمبلی میں بجٹ اجلاس کے بعد سامنے آیا — فائل فوٹو: رائٹرز
فرحت اللہ بابر کا یہ پیغام قومی اسمبلی میں بجٹ اجلاس کے بعد سامنے آیا — فائل فوٹو: رائٹرز

اپنے پیش رو کی طرح اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف بھی آزاد رکن قومی اسمبلی علی وزیر کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے میں ہچکچاہٹ کا شکار ہیں، ان کے اس عمل پر ان کی اپنی جماعت پیپلز پارٹی کے سیکریٹری جنرل مجبوراً مسئلے پر عوام میں گئے اور بالواسطہ احتجاج ریکارڈ کروایا۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے سیکریٹری جنرل فرحت اللہ بابر نے گزشتہ روز ایک ٹوئٹ میں کہا کہ ’میں اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف سے سختی سے مطالبہ کرتا ہوں کہ علی وزیر کے پروڈکشن آرڈرز جاری کیے جائیں‘۔

فرحت اللہ بابر کا یہ پیغام قومی اسمبلی میں بجٹ اجلاس کے بعد سامنے آیا۔

انہوں نے کہا کہ ’بطور اپوزیشن رہنما ہم نے ہمیشہ یہ مطالبہ کیا ہے، بلاول بھٹو زرداری نے اس وقت کے اسپیکر قومی اسمبلی کو بھی خط لکھا تھا جس کے بعد کوئی وضاحت، کوئی ایسی وجوہات نہیں بتائی گئیں جس کی بنا پر پروڈکشن آرڈر جاری کرنے سے رکا جائے‘۔

یہ بھی پڑھیں: گرفتار رکن قومی اسمبلی علی وزیر ایک اور مقدمے میں قید

فرحت اللہ بابر نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ میں جاری کردہ پیغام میں اسپیکر قومی اسمبلی کو اس وقت کی یاد دہانی کروائی جب پیپلز پارٹی، سابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے خلاف رکن قومی اسمبلی علی وزیر کے پروڈکشن آرڈر جاری نہ پر احتجاج کر رہی تھی۔

علی وزیر مبینہ ریاست مخالف تقاریر کے معاملے پر 17 ماہ سے کراچی کی جیل میں ہیں۔

علی وزیر جنوبی وزیرستان کے قبائلی ضلع کے حلقہ این اے 50 سے آزاد امیدوار کے طور پر منتخب ہوئے تھے، تاہم انہوں نے سپریم کورٹ کی مداخلت پر اپریل میں سابق وزیر اعظم عمران خان کے خلاف عدم اعتماد کی قرارداد پر ووٹنگ کے دوران قومی اسمبلی کے اہم اجلاس میں شرکت کی تھی۔

یہ بات دلچسپ ہے کہ علی وزیر اس وقت ٹریژری بنچوں پر ہیں اور انہوں نے اسپیکر کے طور پر راجا پرویز اشرف کی نامزدگی کی حمایت بھی کی ہے۔

مزید پڑھیں: کراچی: رکن قومی اسمبلی علی وزیر سمیت 10 افراد پر غداری کے کیس میں فرد جرم عائد

رکن قومی اسمبلی نے شہباز شریف کے وزیر اعظم منتخب ہونے کے بعد اجلاس کے دوران ایک تقریر بھی کی تھی جس میں انہوں نے ریاستی اداروں کی پالیسیوں پر ایک بار پھر تنقید کی تھی۔

سپریم کورٹ کی مداخلت پر پاکستان تحریک انصاف کے سابق اسپیکر اسد قیصر کو عمران خان کے خلاف عدم اعتماد کی قرارداد پر مجوزہ ووٹنگ سے دو دن قبل یکم اپریل کو علی وزیر کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے پڑے تھے۔

پشتون تحفظ موومنٹ کے حمایت یافتہ رکن قومی اسمبلی علی وزیر کراچی کے سہراب گوٹھ تھانے میں درج مختلف الزامات کے تحت زیر حراست ہیں۔

ضرور پڑھیں

تبصرے (0) بند ہیں