قائد اعظم کے فرمودات پر عمل کر کے ہی کامیاب قوم بنا جاسکتا ہے، صدر مملکت

اپ ڈیٹ 11 ستمبر 2020

ای میل

صدر مملکت نے وزیراعلیٰ اور گورنر سندھ کے ہمراہ مزار قائد پر حاضری دی اور پھولوں کی چادر چڑھائی—تصویر: ڈان نیوز
صدر مملکت نے وزیراعلیٰ اور گورنر سندھ کے ہمراہ مزار قائد پر حاضری دی اور پھولوں کی چادر چڑھائی—تصویر: ڈان نیوز

بانی پاکستان کی 72ویں برسی کے موقع پر صدر مملکت عارف علوی نے عوام سے کہا ہے کہ قائد اعظم محمد علی کے فرمودات پر عمل پیرا ہو کر ہی ہم ایک کامیاب قوم بن سکتے ہیں۔

ریڈیو پاکستان کی رپورٹ کے مطابق مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد آج مزار قائد پر حاضری دیں گے اور پھول چڑھائیں گے۔

اس کے علاوہ بہت سے تعلیمی اداروں کے ساتھ ساتھ سیاسی، سماجی اور ثقافتی تنظیموں نے بھی اس دن کی یاد میں متعدد پروگرامز کا انعقاد کیا۔

یہ بھی پڑھیں:بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کا 72 واں یوم وفات

گورنر سندھ عمران اسمٰعیل اور وزیراعلیٰ مراد علی شاہ کے ہمراہ مزار قائد پر پھولوں کی چادر چڑھانے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صدر مملکت کا کہنا تھا کہ جس طرح سے ہماری قوم نے کورونا وائرس کو شکست دی ہے یہ ہمارے عزم کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ پاکستان کے لیے اچھی کامیابی ہے، تاریخ میں پہلی مرتبہ ملک کو ان ممالک کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے جس سے دیگر اقوام سیکھ سکتی ہے'۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ اگر ہم سب مل کر وہ قوم تعمیر کریں کہ جس کا قائد اعظم نے تصور کیا تھا تو ہمارے پیچھے رہ جانے کی کوئی وجہ باقی نہیں رہے گی۔

دوسری جانب وزیر تعلیم شفقت محمود نے بھی کراچی میں مزار قائد پر حاضری دی اور پر پھول چڑھائے۔

صدر مملکت کے بعد وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ ہمیں قائد اعظم کے اصولوں کے لیے اپنے عزم کی توثیق کرنے کی ضرورت ہے۔

مراد علی شاہ کا مزید کہنا تھا کہ 'ہمیں ملک میں جمہوریت اور جمہوری اداروں کو مضبوط بنانے کے لیے سخت محنت کرنا ہوگی اور پاکستان کو ایسی جگہ بنانا ہوگا جہاں لوگ بانی پاکستان کے تصور کے مطابق آزادی اور عزت سے رہ سکیں'۔

ایک ویڈیو پیغام میں گورنر سندھ نے کہا کہ ہمارے لیے بہت ضروری ہے کہ ہم بانی پاکستان کے آزاد مملکت کے تصور کی تجدید کریں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے یہ پاکستان ایک آزاد مملکت بنایا تھا جہاں انصاف ہوگا، جو ذات اور مذہب کو سب چیزوں سے بلند ہو کر انسانیت کے لیے ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں ایک 'آئیڈل ملک بنانے کے لیے کام کرتے رہیں گے اور قائد اعظم بے انتہا بیماری کے باوجود اس ملک کے لیے انتھک محنت کرتے رہے اور پھر انہوں نے پاکستان کی صورت میں ایک آزاد ملک ہمیں دیا'۔

اس کے علاوہ سینیٹر فیصل جاوید خان نے کہا کہ قائد اعظم ایک 'انقلابی اور اصلاح پسند' شخصیت تھے۔

اپنے ٹوئٹر پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ 'ان (قائداعظم) کی ہمت، عزم، دیانتداری اور ثابت قدمی نے ہمیں دکھایا کہ ناانصافی کا سامنا کرتے ہوئے ہمیں کس طرح سچائی، انصاف کی جدو جہد کبھی ترک نہیں کرنی چاہیے۔

علاوہ ازیں آسٹریلوی ہائی کمشنر ڈاکٹر جیوفرے شا نے بھی مزار قائد پر حاضری دی۔

ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں انہوں نے لکھا کہ 'خواتین کے حقوق، جمہوریت اور مذہبی آزادی کے چیمیئن ہونے کی حیثیت سے جناح ہمیشہ قائد اعظم رہیں گے جن سے نہ صرف پاکستان میں بلکہ پوری دنیا میں لاکھوں متاثر ہیں'۔