جونی ڈیپ نے قتل و دوسروں سے ’ریپ‘ کروانے کی دھمکیاں دیں، امبر ہرڈ

اپ ڈیٹ 20 جولائ 2020
سابق شوہر نے سیاہ فام مرد حضرات سے ریپ کروانے کی دھمکیاں دیں، اداکارہ—فوٹو: رائٹرز
سابق شوہر نے سیاہ فام مرد حضرات سے ریپ کروانے کی دھمکیاں دیں، اداکارہ—فوٹو: رائٹرز

معروف اداکارہ امبر ہرڈ نے لندن کی ہائی کورٹ میں اپنے سابق شوہر جونی ڈیپ کے خلاف بیان دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ انہیں سابق شوہر قتل اور دوسرے مرد حضرات سے ’ریپ‘ کروانے کی دھمکیاں بھی دیتے رہے ہیں۔

خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق امبر ہرڈ 20 جولائی کو اپنا بیان ریکارڈ کروانے کے لیے لندن کی ہائی کورٹ پہنچیں۔

اس سے قبل ان کے سابق شوہر جونی ڈیپ نے مذکورہ عدالت میں اپنے بیانات ریکارڈ کروائے تھے، جس میں انہوں نے امبر ہرڈ کی جانب سے تشدد کے لگائے گئے تمام الزامات کو مسترد کرتےہوئے سابق بیوی پر کئی الزامات لگائے تھے۔

یہ کیس اگرچہ براہ راست امبر ہرڈ اور جونی ڈیپ کے درمیان نہیں ہے، تاہم اس کیس کا مرکزی نقطہ دونوں کے تعلقات، شادی اور دونوں میں تشدد کی وجہ سے طلاق ہیں۔

یہ کیس جونی ڈیپ کی جانب سے برطانوی اخبار دی سن کے خلاف 2018 میں دائر کیا گیا تھا۔

اداکار نے اپریل 2018 میں برطانوی اخبار 'دی سن‘ کے خلاف جھوٹا مضمون لکھنے پر لندن کی عدالت میں مقدمہ دائر کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: ’بیوی پر تشدد کرنے والا‘ لکھنے پر جونی ڈیپ کا برطانوی اخبار پر مقدمہ

’دی سن‘ نے اپنے مضمون میں جونی ڈیپ کو ’بیوی پر تشدد کرنے والا‘ شخص قرار دیتے ہوئے لکھا تھا کہ کس طرح جونی ڈیپ نے اپنی اہلیہ کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا۔

مضمون میں جہاں جونی ڈیپ کو بیوی پر تشدد کرنے والے شخص کے طور پر پیش کیا گیا، وہیں ان کی سابق اہلیہ امبر ہرڈ کو ایک مظلوم خاتون کے طور پر بھی پیش کیا گیا تھا۔

مذکورہ کیس میں جونی ڈیپ اپنے بیانات مکمل کرواچکے—فوٹو: اے پی
مذکورہ کیس میں جونی ڈیپ اپنے بیانات مکمل کرواچکے—فوٹو: اے پی

اخبار کی جانب سے مضمون شائع کیے جانے کے بعد جونی ڈیپ نے اخبار کے خلاف برطانوی عدالت میں مقدمہ دائر کرتے ہوئے اخبار کے خلاف 2 لاکھ یورو ہرجانے کا دعویٰ دائر کیا تھا۔

اسی کیس کو خارج کروانے کے لیے دی سن نے عدالت میں درخواست بھی دائر کی تھی مگر عدالت نے اخبار کی درخواست مسترد کردی تھی۔

مذکورہ کیس میں جونی ڈیپ کی حمایت میں متعدد خواتین نے بھی بیانات ریکارڈ کرواتے ہوئے عدالت کو بتایا تھا کہ انہوں نے کبھی بھی اداکار کو تشدد کرتے نہیں دیکھا۔

مزید پڑھیں: برطانوی اخبار جونی ڈیپ کے دائر مقدمے کو ختم کرانے کا خواہاں

اسی کیس کی پہلی سماعت میں 7 جولائی کو جونی ڈیپ نے ایک بار پھر سابق بیوی امبر ہرڈ پر تشدد کے تمام الزامات کو مسترد کرتے ہوئے عدالت کو بتایا تھا کہ ان سے نصف عمر چھوٹی اداکارہ نے ایجنڈا کے تحت ان سے شادی کرکے دولت اور شہرت بٹوری۔

اداکار نے امبر ہرڈ پر تشدد کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ الٹا انہیں سابق بیوی تشدد کا نشانہ بناتی تھی۔

امبر ہرڈ اور جونی ڈیپ نے 2015 میں شادی کی تھی، دونوں میں 2017 میں طلاق ہوگئی تھی—فائل فوٹو: اے ایف پی
امبر ہرڈ اور جونی ڈیپ نے 2015 میں شادی کی تھی، دونوں میں 2017 میں طلاق ہوگئی تھی—فائل فوٹو: اے ایف پی

سات جولائی کے بعد جونی ڈیپ نے 14 جولائی تک اپنے بیانات اور قسم نامے مکمل کیے اور انہوں نے ہر سماعت میں امبر ہرڈ پر تشدد کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ سابق بیوی ان پر تشدد کرتی رہی ہیں۔

سماعتوں کے دوران عدالت کو آگاہ کیا گیا کہ جونی ڈیپ نے امبر ہرڈ کو 2013 سے 2016 تک مختلف ممالک اور مواقع پر کم از کم 14 بار تشدد کا نشانہ بنایا

سماعتوں کے دوران عدالت کو یہ بھی آگاہ کیا گیا تھا کہ جونی ڈیپ سے شادی کے ابتدائی ایام میں ہی امبر ہرڈ نے کاریں اور سائنسی آلات بنانے والی نجی کمپنی ٹیسلا کے مالک ایلون مسک سے ناجائز تعلقات استوار کرلیے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: برطانوی اخبار کی جونی ڈیپ کا مقدمہ خارج کروانے کی درخواست مسترد

عدالت کو بتایا گیا کہ امبر ہرڈ نے ایلون مسک کے علاوہ ایک اور ساتھی اداکار جیمز فرانکو سے بھی شادی کے فوری بعد ہی تعلقات استوار کرلیے تھے۔

جونی ڈیپ کی جانب سے بیانات مکمل کیے جانے کے بعد 20 جولائی کو امبر ہرڈ نے پہلی بار اپنے بیانات ریکارڈ کروائے اور وہ کم از کم مزید تین دن تک اپنے بیانات ریکارڈ کروائیں گی۔

رائٹرز کے مطابق امبر ہرڈ نے عدالت میں اپنے بیانات ریکارڈ کرواتے ہوئے دعویٰ کیا کہ متعدد بار جونی ڈیپ نے انہیں اس قدر شدید تشدد کا نشانہ بنایا کہ انہیں لگتا تھا کہ وہ مر جائیں گی۔

امبر ہرڈ نے جونی ڈیپ پر تشدد کا الزام لگایا تھا—فوٹو: ڈیلی ایکسپریس یوکے
امبر ہرڈ نے جونی ڈیپ پر تشدد کا الزام لگایا تھا—فوٹو: ڈیلی ایکسپریس یوکے

اداکارہ نے عدالت میں اپنے تحریری بیان میں الزامات عائد کیے کہ جونی ڈیپ نے انہیں متعدد بار قتل کرنے کی دھمکیاں بھی دیں اور انہیں اس قدر تشدد کا نشانہ بنایا جاتا تھا کہ وہ بے حال ہوجاتی تھیں۔

اداکارہ نے اپنے بیان میں کہا کہ انہیں جونی ڈیپ بدترین جسمانی تشدد کا نشانہ بناتے تھے اور انہیں کہتے تھے کہ ان کے تعلقات اس وقت ہی ختم ہوسکتے ہیں جب امبر ہرڈ کی موت ہوگی۔

اداکارہ نے الزام عائد کیا کہ سابق شوہر ان کے چہرے پر تشدد کرتے تھے، انہیں سر پر بھاری چیزیں مارتے تھے، انہیں گھسیٹتے تھے، ان کے سر کے بالوں کو نوچتے تھے اور ان کے جسم پر وزنی چیزوں سے حملہ کرتے تھے۔

اسی حوالے سے برطانوی اخبار ڈیلی میل نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ امبر ہرڈ نے اپنے بیان میں جونی ڈیپ پر سنگین الزامات لگاتے ہوئے ان پر ’ریپ‘ کی دھمکیوں کے الزامات بھی لگائے۔

مزید پڑھیں: امبر ہرڈ نے ایجنڈا کے تحت مجھ سے شادی کرکے دولت و شہرت بٹوری، جونی ڈیپ

امبر ہرڈ کے مطابق جونی ڈیپ نے انہیں متعدد بار دوسرے مرد حضرات سے ’ گینگ ریپ‘ کروانے کی دھمکیاں بھی دیں۔

امبر ہرڈ 20 جولائی کو فیس ماسک کے بغیر عدالت پہنچیں—فوٹو: اسپلاش نیوز
امبر ہرڈ 20 جولائی کو فیس ماسک کے بغیر عدالت پہنچیں—فوٹو: اسپلاش نیوز

اداکارہ نے ایک واقعے کو یاد کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ایک طیارے میں سفر کے دوران سابق شوہر نے انہیں دھمکی دی کہ فلائٹ سے اترتے ہی وہ لوگوں کو بلائیں گے جو امبر ہرڈ کا ’ریپ‘ کریں گے۔

اداکارہ نے الزام عائد کیا کہ جونی ڈیپ انہیں ان کی ٹانگیں تڑوانے کی دھمکیاں دینے سمیت ان کے چہرے کو بری طرح زخمی کرنے کی دھمکیاں بھی دیتے تھے تاکہ بعد میں کوئی بھی اداکارہ کی خوبصورتی دیکھ کر ان سے پیار نہ کرے۔

اسی کیس میں امبر ہرڈ مزید بیانات ریکارڈ کروائیں گی، جس کے بعد دیگر کچھ افراد کے بیانات بھی ریکارڈ کیے جائیں گے۔

خیال کیا جا رہا ہے کہ لندن کی عدالت جولائی کے آخر تک سماعتیں مکمل کرنے کے بعد فیصلے پر غور کرے گی۔

57 سالہ جونی ڈیپ اور 34 سالہ امبر ہرڈ کے درمیان 2011 میں تعلقات استوار ہوئے تھے اور دونوں نے فروری 2015 میں شادی کی تھی۔

شادی کے محض 15 ماہ بعد ہی امبر ہرڈ نے شوہر پر تشدد کا الزام لگاتے ہوئے مئی 2016 میں طلاق کے لیے عدالت سے رجوع کیا تھا اور دونوں کے درمیان 2017 کے اوائل میں طلاق ہوگئی تھی۔

اداکارہ اپنی وکیل اور بہن سمیت ٹیم کی دیگر ارکان کے ساتھ عدالت پہنچیں—فوٹو: لندن نیوز پکچر
اداکارہ اپنی وکیل اور بہن سمیت ٹیم کی دیگر ارکان کے ساتھ عدالت پہنچیں—فوٹو: لندن نیوز پکچر

تبصرے (0) بند ہیں