کورونا وائرس: ملک میں کیسز میں 719 اور اموات میں 7 کا اضافہ

اپ ڈیٹ 19 اکتوبر 2020

ای میل

ملک میں کورونا وائرس کی مجموعی صورتحال بہتر ہے—فائل فوٹو: اے ایف پی
ملک میں کورونا وائرس کی مجموعی صورتحال بہتر ہے—فائل فوٹو: اے ایف پی

دنیا بھر کا نقشہ تبدیل کرکے رکھ دینے والی عالمی وبا کے پاکستان میں بھی نئے کیسز اور اموات کا سلسلہ جاری ہے اور گزشتہ چند روز میں اس میں اضافہ ہوا ہے جبکہ موسم کی بدلتی صورتحال کے باعث اس کی دوسری لہر کا خدشہ بھی ظاہر کیا گیا ہے۔

ملک میں اگرچہ کورونا وائرس کی مجموع صورتحال بہتر ہے تاہم کچھ مقامات پر کیسز میں اضافے کے بعد ایک مرتبہ پھر اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے۔

پاکستان میں اس عالمی وبا کے مجموعی کیسز کی تعداد 3 لاکھ 23 ہزار 738 ہے جس میں سے 3 لاکھ 7 ہزار 409 صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ 6 ہزار 661 کا انتقال ہوا ہے۔

آج 19 اکتوبر کی شام تک ملک میں کورونا وائرس کے مزید 719 مریضوں اور 7 اموات کی تصدیق ہوئی جبکہ 340 افراد شفایاب بھی ہوگئے۔

ان مجموعی کیسز میں 128 کیسز اور 3 اموات سندھ، 47 کیسز خیبرپختونخوا اور 19 کیسز بلوچستان کے گزشتہ روز کے تھے جو آج رپورٹ ہوئے۔

اگر اس وائرس کی بات کریں تو اس کا پہلا کیس 26 فروری 2020 کو کراچی میں رپورٹ ہوا تھا جس کے بعد یہ پورے ملک میں پھیل گیا۔

ابتدا میں اس وائرس کے کیسز کی تعداد کم تھی تاہم بعد ازاں اس میں اضافہ ہونا شروع ہوا اور مئی اور جون میں کافی کیسز رپورٹ ہوئے۔

جون میں تو صورتحال یہاں تک پہنچ گئی تھی کہ یومیہ 6 ہزار سے زائد کیسز اور 100 سے زائد اموات رپورٹ ہونے لگی تھیں، مزید یہ ہسپتالوں پر دباؤ بڑھنے کی اطلاعات بھی سامنے آئیں تھیں۔

تاہم جولائی میں وائرس کے کیسز میں کمی آنے کا سلسلہ شروع ہوا جو اگست میں کچھ بہتر ہوا اور پھر ستمبر میں اس میں مزید بہتری دیکھی جارہی ہے۔

اسی صورتحال کو دیکھتے ہوئے ملک میں 6 ماہ سے بند تعلیمی اداروں کو بھی 15 ستمبر سے مرحلہ وار کھولنے کا فیصلہ کیا گیا تاہم گزشتہ کچھ روز سے کیسز میں اضافہ رپورٹ ہوا ہے جس کے بعد کچھ مقامات پر اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے۔

سندھ

وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ نے کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بیان میں وبا سے مزید 286 کیسز اور 2 مریضوں کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی۔

اس اضافے کے بعد صوبے میں وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد ایک لاکھ 42 ہزار 134 اور اموات 2583 ہوگئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ چوبیس گھنٹے کے دوران سندھ میں کورونا سے مزید 471 مریض صحتیاب ہوئے جس کے بعد یہاں شفا پانے والے افراد کی تعداد ایک لاکھ 35 ہزار 296 ہوگئی ہے۔

پنجاب

ملک میں آبادی کے حساب سے سب سے بڑے صوبے پنجاب میں کورونا وائرس کے مزید 93 مریضوں کی تصدیق ہوئی۔

سرکاری پورٹل کے مطابق صوبے میں ان نئے مریضوں کے بعد کیسز کی مجموعی تعداد ایک لاکھ ایک ہزار ایک ہزار 652 ہوگئی۔

اسلام آباد

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں کورونا وائرس مزید 73 افراد کو متاثر کیا جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی۔

ان نئے مریضوں کے بعد وفاقی دارالحکومت میں کیسز کی مجموعی تعداد 18 ہزار 69 تک پہنچ گئی۔

گلگت بلتستان

ملک کے کم متاثرہ علاقوں میں سے ایک گلگت بلتستان میں کورونا کی عالمی وبا کے 12 نئے کیسز کی تصدیق ہوئی۔

سرکاری پورٹل کے مطابق ان 12 نئے مریضوں نے کیسز کی مجموعی تعداد کو 4 ہزار 59 تک پہنچا دیا۔

آزاد کشمیر

پاکستان کے سب سے کم متاثر حصے آزاد کشمیر میں کورونا وائرس کے 61 نئے مریضوں او 1 موت کی تصدیق ہوئی۔

آزاد کشمیر میں ان نئے مریضوں کے بعد کیسز کی مجموعی تعداد 3 ہزار 498 ہوگئی۔

اس کے علاوہ اموات میں ایک کے اضافے سے وہاں مجموعی تعداد 82 تک پہنچ گئی۔

صحتیاب افراد

ملک میں صحتیاب افراد کی تعداد میں بھی اضافہ دیکھا جارہا ہے اور گزشتہ 24 گھنٹوں میں 340 مریض شفایاب ہوگئے۔

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق مزید 340 مریضوں کے صحتیاب ہونے کے بعد مجموعی تعداد 3 لاکھ 7 ہزار 409 تک پہنچ گئی۔

مجموعی صورتحال

ملک میں عالمی وبا کے کیسز، اموات اور صحتیاب افراد کی تعداد میں اضافے کے بعد اگر مجموعی صورتحال پر نظر ڈالیں تو وہ کچھ اس طرح ہے:

مصدقہ کیسز: 323738

اموات: 6661

صحت یاب:307409

فعال کیسز: 9668

ملک میں اس وائرس سے سب سے زیادہ متاثر صوبے سندھ اور پنجاب ہیں، صوبہ سندھ میں متاثرین کی مجموعی تعداد ایک لاکھ 42 ہزار 134 ہے جبکہ پنجاب میں یہ تعداد ایک لاکھ ایک ہزار 652 تک پہنچ چکی ہے۔

صوبہ خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس سے 38 ہزار 645 افراد متاثر ہوچکے ہیں جبکہ صوبہ بلوچستان میں وبا میں مبتلا ہونے والوں کی تعداد 15 ہزار 688 ہے۔

علاوہ ازیں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 18 ہزار 69، گلگت بلتستان میں 4ہزار 59 اور آزاد کشمیر میں 3 ہزار 498 افراد عالمی وبا کا شکار ہوچکے ہیں۔

ملک میں کورونا سے اموات کی تعداد:

سندھ: 2583

پنجاب: 2298

خیبرپختونخوا: 1265

بلوچستان: 148

اسلام آباد: 195

گلگت بلتستان: 90

آزاد کشمیر: 82