آج کے شو کے بعد ہم 'پی ڈی ایم' کے لانگ مارچ کو خوش آمدید کہتے ہیں، شیخ رشید

اپ ڈیٹ 19 جنوری 2021

ای میل

شیخ رشید نے پی ڈی ایم کے احتجاج کو ناکام قرار دیا — فوٹو: ڈان نیوز
شیخ رشید نے پی ڈی ایم کے احتجاج کو ناکام قرار دیا — فوٹو: ڈان نیوز

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن کمیشن کے باہر 3 ہزار لوگ جمع ہوئے۔

اسلام آباد میں الیکشن کمیشن کے باہر پی ڈی ایم کے احتجاج کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ انہیں اجازت دی گئی تھی کہ ریڈ زون میں جتنے لوگ لاسکتے ہو لاؤ جس کا نتیجہ یہ نکلا کہ 3 ہزار لوگ جمع ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں: آج بھی 2018 کے الیکشن مسترد کرنے کے مؤقف پر قائم ہیں، مولانا فضل الرحمٰن

ان کا کہنا تھا کہ جس اسمبلی پر مولانا فضل الرحمٰن جھوٹ، فراڈ اور لعنت بھیج رہے تھے، اسمبلی میں اس کا لیڈر عمر کوٹ چارٹر جہاز میں سیٹ جیتنے پر جشن منانے گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کتنا بڑا تضاد، قوم سے کتنا بڑا دھوکا اور فراڈ ہے، ان کے لانگ مارچ تک مزید 600 کیمروں کا انتظام کرنے لگے ہیں ورنہ انہی کے 1800 کیمرے ٹھیک کروائے ہیں۔

وفاقی وزیر داخلہ نے بتایا کہ سرحد، گجرانوالہ، منڈی بہاالدین اور دیگر علاقوں سے لوگ آئے، ویگنیں، بسیں، ڈی ایس این جیز زیادہ تھیں، لیڈر بڑے تھے، جھنڈے زیادہ تھے لیکن کارکن نہیں تھے، کارکنوں نے السلام علیکم کہا۔

مولانا فضل الرحمٰن کو مخاطب کرکے انہوں نے کہا کہ میں دینی طلبہ کے ساتھ ہوں، یہ چاہتے ہیں کہ طلبہ گن اٹھائیں، جب طلبہ نے گن اٹھائی تھی اس وقت آپ مشرف کے ساتھ تھے۔

انہوں نے کہا کہ جب دینی طلبہ نے گن اٹھائی ہوئی تھی تو خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ اکرم خان درانی تھے اور مولانا فضل الرحمٰن جس اجلاس میں جنرل پرویز مشرف اور جنرل نثار ہوتے تھے، وہاں میں بھی ہوتا تھا، اس وقت آپ کو دینی طلبہ یاد نہیں آتے تھے، آج آپ کا درد سیریس ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ آج قوم نے آپ کے ساتھ جو کیا ہے آپ اسی کے قابل ہیں کیونکہ آج صرف 3 ہزار لوگ نکلے تھے۔

مزید پڑھیں: پی ڈی ایم کا الیکشن کمیشن کے باہر احتجاج، فارن فنڈنگ کیس نمٹانے کا مطالبہ

وفاقی وزیر نے کہا کہ ختم نبوت پر سب سے زیادہ جیل میں نے کاٹی ہے، اگر مجھ سے زیادہ کسی نے جیل کاٹی ہے تو سامنے آئے۔

اپنے گزشتہ بیان کی وضاحت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں نے دینی طلبہ کی بات نہیں کی، بچوں کی بات کی تھی اور آج صادق آباد سے بچوں کی دو سوزوکیاں گئی ہیں اور میں تمام مدرسوں اور علما کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے ذمہ داری کا ثبوت دیا۔

ان کا کہنا تھا یہ اقتدار کے بھوکوں کا جمعہ بازار لگا تھا جہاں براڈ شیٹ اور الیکشن کمیشن پر بات ہوئی، مریم نواز سے کہوں گا کہ آپ براڈ شیٹ کا فیصلہ پڑھیں، آپ کا کیس خراب ہے اور آپ پر پاناما ٹو ہونے جارہا ہے، پڑھے بغیر اپنے لیے سیاسی مسئلے کھڑے کرنے کے مترادف ہے۔

شیخ رشید نے کہا کہ آج کے شو کے بعد ہم آپ کے لانگ مارچ کو خوش آمدید کہتے ہیں، جو آپ کا آخری سیاسی کارڈ ہوگا، میں نے کہا آپ استعفے نہیں دیں گے، نہیں دیا، میں نے کہا آپ ضمنی انتخابات میں حصہ لیں گے اور مولانا فضل الرحمٰن کے دو لوگ انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آج محمود اچکزئی نے جو تقریر کی ہے اگر ایسی تقریریں ہوئیں تو شاید حالات ہمارے بس سے باہر ہو جائیں، پھر اللہ تعالیٰ مولانا فضل الرحمن کے حال پر رحم کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ میں مولانا فضل الرحمٰن کو بتانا چاہتا ہوں کہ پچھلی دفعہ بھی آپ کے ساتھ ہاتھ ہوا اور اب بھی ہاتھ ہونے جا رہا ہے کیونکہ بلاول وہاں جشن منا رہا ہے۔