'ہوٹل روانڈا' کے ہیرو پر فرد جرم عائد، الزام ثابت ہونے کی صورت میں عمر قید کا خدشہ

16 ستمبر 2020

ای میل

پال روسیسا باگینا پر دہشت گردی، قتل میں ملوث ہونے اور غیرمنظم مسلح گروہ کی تشکیل سمیت 13 فرد جرم عائد کی گئیں— فائل فوٹو: اے پی
پال روسیسا باگینا پر دہشت گردی، قتل میں ملوث ہونے اور غیرمنظم مسلح گروہ کی تشکیل سمیت 13 فرد جرم عائد کی گئیں— فائل فوٹو: اے پی

1994 میں روانڈا میں ہونے والی نسل کشی پر مبنی ہولی وڈ فلم کے اصل زندگی کے کردار پال روسیسا باگینا کی 'دہشت گردی' کے الزامات میں گرفتاری کے بعد ان پر 13 فرد جرم عائد کردی گئی جس کے باعث انہیں 25 برس سے لے کر عمر قید کی سزا ہونے کا خدشہ ہے۔

خیال رہے کہ 31 اگست کو سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر روانڈا کے انویسٹی گیشن بیورو کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ پال روسیسا باگینا 'بین الاقوامی تعاون' سے گرفتار کیے جانے کے بعد سے ان کی تحویل میں ہیں۔

بیان میں کہا گیا تھا کہ 66 سالہ پال روسیسا باگینا پر 'انتہاپسند دہشت گرد، مسلح تنظیموں کے بانی، لیڈر اور اسپانسر' ہونے کے الزامات ہیں۔

— فوٹو:روانڈا انویسٹی گیشن بیورو
— فوٹو:روانڈا انویسٹی گیشن بیورو

بعدازاں روسیسا باگینا کی لے پالک بیٹی کیرین کانیمبا نے اے پی کو بتایا تھا کہ انہوں نے والد کی گرفتاری سے ایک ہفتہ پہلے اس وقت بات کی تھی جب وہ دبئی جانے والے تھے لیکن وہ ان کے دورے کی نوعیت سے آگاہ نہیں تھیں۔

مزید پڑھیں: 'ہوٹل روانڈا' فلم کے ہیرو دہشت گردی کے الزامات میں گرفتار

تاہم وہ اس دعوے کی حمایت میں شواہد نہیں فراہم کرسکی تھیں کہ پال روسیسا باگینا کو اغوا کیا گیا تھا۔

علاوہ ازیں ہوٹل روانڈا روسیسا باگینا فاؤنڈیشن کی ترجمان کِٹی کرتھ نے کہا تھا کہ پال روسیسا باگینا کی گرفتاری کی ویڈیو ڈراما معلوم ہوتی ہے۔

تاہم کیگالی حکام پال روسیسیا باگینا کے اغوا کے اس دعوے کو مسترد کرتے ہیں۔

برطانوی خبررساں ادارے 'رائٹرز' کی رپورٹ کے مطابق 14 ستمبر کو کیگالی کی عدالت میں پال روسیسا باگینا پر دہشت گردی، قتل میں ملوث ہونے اور غیرمنظم مسلح گروہ کی تشکیل سمیت 13 فرد جرم عائد کی گئیں۔

روانڈا پروسیکیوشن اتھارٹی کے ترجمان نے فاسٹن نکوسی نے رائٹرز کو فون پر بتایا کہ کچھ جرائم کے لیے پال روسیسا باگینا کو 25 برس اور یہاں تک کہ کچھ میں عمر قید کی سزا بھی ہوسکتی ہے۔

تاہم پال روسیسا باگینا نے الزامات کا جواب دینے سے انکار کیا اور کہا کہ وہ ہر فرد جرم کے خلا اپیل کرنا چاہہتے ہیں اور عدالت ان کی درخواست ضمانت پر جمعرات (17 ستمبر ) کو فیصلہ سنائے گی۔

یہ بھی پڑھیں: صدر پال کگامے نے 'ہوٹل روانڈا' کے ہیرو کے اغوا کا دعویٰ مسترد کردیا

مذکورہ کیس کی وجہ سے روانڈا کے صدر پال کگامے پر تنقید کی جارہی ہے کہ وہ مخالف آوازوں کو دبانا چاہتے ہیں تاہم فاسٹن نکوسی نے کہا کہ پروسیکیوشن ضمانت دے گی کہ روسیسا باگینا کا منصفانہ ٹرائل ہو۔

انہوں نے کہا کہ یہ سیاسی مقدمہ نہیں ہے، آپ لوگوں کو قتل کرکے، جائیدادیں لوٹ کر انہیں یرغمال بنا کر اپنی آزادی اظہار اور سیاسی حقوق کا استعمال نہیں کرسکتے۔

دوسری جانب پال روسیسا باگینا کے اہلخانہ نے بین الاقوامی ٹرائل کا مطالبہ کیا ہے اور حکومت پر ان کی مرضی کی قانونی نمائندگی دینے سے انکار کا الزام بھی عائد کیا ہے۔

اس حوالے سے فاسٹن نکوسی کا کہنا ہے کہ روسیسا باگینا نے 2 وکلا کا انتخاب کیا تھا جنہوں نے پیر کے روز عدالت میں ان کی نمائندگی کی تھی۔

ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ پال روسیسا باگینا کو اہلیہ اور بچوں سے بات چیت کی اجازت دی گئی ہے جو امریکا میں مقیم ہیں۔

خیال رہے کہ پال روسیسا باگینا کے اہلخانہ کا دعویٰ ہے کہ روانڈا کی حکومت نے انہیں دبئی سے گرفتار کیا جہاں وہ ایک دورے پر تھے اس حوالے سے پروسیکیوشن اتھارٹی کے ترجمان نے کہا کہ انہیں روانڈا کی سرزمین پر کیگالی انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے گرفتار کیا گیا تھا تاہم انہوں نے کہا کہ وہ نہیں جانتے کہ پال روسیسا باگینا روانڈا کیسے آئے لیکن وہ یہاں پائے گئے اور گرفتار ہوئے۔

خیال رہے کہ پال روسیسا باگینا 1996 سے بیلجیئم میں مقیم تھے اور اس کے بعد ٹیکساس چلے گئے تھے۔

پال روسیسا باگینا اس وقت زیادہ مشہور ہوئے تھے جب ہوٹل روانڈا نامی فلم میں 1994 میں ہونے والی نسل کشی میں سیکڑوں افراد کو اپنے ہوٹل میں پناہ دینے کی کوششوں کو بیان کیا تھا۔

نسل کشی میں توتسی اقلیت سے تعلق رکھنے والے 8 لاکھ افراد مارے گئے تھے۔

ان افراد کو ہوتو انتہاپسندوں نے قتل کیا تھا جنہیں صدر پال کگامے اور ان کے توتسی اکثریتی روانڈا پیٹریاٹک فرنٹ (آر پی ایف) نے ایسا کرنے پر مجبور کیا تھا۔

مزید پڑھیں:'ہوٹل روانڈا' فلم کے ہیرو کی بیٹی نے والد کی گرفتاری کو 'اغوا' قرار دے دیا

بعدازاں انہوں نے ایک اپوزیشن پارٹی بھی شروع کی تھی جس کا ایک مسلح ونگ جمہوریہ کانگو میں موجود تھا۔

2011 میں پال روسیسا باگینا پر روانڈ میں بغاوت کی فنڈنگ کا الزام عائد کیا گیا تھا لیکن ان پر مزید کوئی الزام نہیں تھا۔

اس وقت انہوں نے اسے مسترد کیا تھا اور اپنے خلاف مذموم مہم قرار دیا تھا۔

پال روسیسا باگینا 1996 میں ہونے والے قاتلانہ حملے کے بعد سے روانڈا میں نہیں رہتے اور انہیں نسل کشی کے دوران لوگوں کو بچانے کی کوششوں کے اعتراف میں انسانی حقوق کے کئی اعزازت سے نوازا جاچکا ہے جن میں 2005 میں دیا گیا امریکی پریذیڈنشل میڈل آف فریڈم شامل ہے۔

انہیں امریکی پریذیڈنشل میڈل آف فریڈم سے بھی نوازا گیا تھا—فوٹو: واشنگٹن پوسٹ
انہیں امریکی پریذیڈنشل میڈل آف فریڈم سے بھی نوازا گیا تھا—فوٹو: واشنگٹن پوسٹ

خیال رہے کہ 2004 میں ریلیز ہونے والی فلم 'ہوٹل روانڈا' میں پال روسیسا باگینا کی کہانی بیان کی گئی ہے کہ کس طریقے سے متوسط طبقے سے تعلق رکھنے والے ہوتو قبیلے کے شخص نے ایک توتسی سے شادی کی تھی۔

اس فلم میں دکھایا گیا تھا کہ انہوں نے کیگالی کے ملی کولنز ہوٹل میں پناہ لینے والے تقریبا 12 سو افراد کو محفوظ طریقے سے فرار ہونے کے لیے ملٹری حکام کو رضامند کرنے لیے رشوت دی تھی اور اپنا اثر و رسوخ استعمال کیا تھا۔

فلم ہوٹل روانڈا میں ڈان چیڈل نے پال روسیسا باگینا کا کردار ادا کیا تھا اور اس فلم نے مختلف ایوارڈز بھی حاصل کیے تھے۔

تاہم روانڈا میں نسل کشی میں بچ جانے والے گروہ ایبوکا نے ماضی میں کہا تھا کہ پال روسیسا باگینا نے 100 روز تک جاری رہنے والے قتل عام میں اپنے کردار کو بڑھا چڑھا کر پیش کیا تھا۔