کورونا وائرس سے پاکستان میں ہونے والی اموات

خیبرپختونخوا میں432،سندھ میں396، پنجاب میں381،بلوچستان میں41،اسلام آباد میں22،گلگت میں9،آزاد کشمیر میں 5 اموات ہوئی ہیں۔

اپ ڈیٹ مئ 29, 2020 10:07am

پاکستان میں کورونا وائرس کا پہلا کیس تو 26 فروری کو سامنے آیا تاہم اس وائرس سے ملک میں پہلے فرد کے انتقال کی تصدیق 18 مارچ کو ہوئی۔

مارچ 2020

18 مارچ کو خیبرپختونخوا کے وزیر صحت تیمور جھگڑا نے مردان میں پہلے شخص کی موت کی تصدیق کی جبکہ کچھ ہی دیر بعد انہوں نے وائرس سے مزید ایک اور شخص کے انتقال کرجانے کے بارے میں بتایا۔

یہ بھی پڑھیں: سندھ ، بلوچستان میں نماز کے اجتماعات پر پابندی

بعد ازاں 20 مارچ کو ملک کے سب سے بڑے شہر اور صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں وائرس سے ایک مریض کا انتقال ہوا تو اس طرح تعداد 3 تک جا پہنچی۔

22 مارچ کو خیبرپختونخوا میں ہی ایک اور مریض کے انتقال کی خبر سامنے آئی تو کچھ ہی دیر بعد گلگت بلتستان میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کا علاج کرنے والا ڈاکٹر اسی عالمی وبا کا شکار ہوکر جان کی بازی ہار گیا، اس طرح اموات کی تعداد 5 تک پہنچ گئی۔

اگلے ہی دن یعنی 23 مارچ کو بلوچستان حکومت کی جانب سے صوبے میں کورونا وائرس کے پہلے مریض کے دم توڑ جانے کی تصدیق کی گئی۔

جس کے بعد 24 مارچ کو پنجاب میں بھی کورونا وائرس سے پہلی موت سامنے آئی اور یہ موت ملک میں مقامی سطح پر منتقل ہونے والے پہلے کیس کی تھی۔

علاوہ ازیں 25 مارچ کو بھی ملک میں ایک اور موت کی تصدیق ہوئی اور راولپنڈی میں 50 سالہ خاتون دم توڑ گئیں۔

26 مارچ کو لاہور کے نجی ہسپتال میں ایک مریض جان کی بازی ہار گیا جس کے بعد صوبے میں کورونا وائرس سے 3 اور ملک میں مجموعی طور پر 9 اموات ہوگئیں۔

27 مارچ کو لاہور میں ایک اور مریض کورونا وائرس کے باعث دم توڑ گیا جس کے بعد صوبے میں اموات کی تعداد 4 ہوگئی، اسی روز فیصل آباد میں بھی 22 سالہ نوجوان کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی گئی جس کے بعد صوبے میں 5 اور ملک بھر میں اس وبا سے اموات 11 تک پہنچ گئیں۔

28 مارچ کو صوبہ خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ کے مشیر برائے اطلاعات اجمل وزیر نے ایک خاتون کی موت کی تصدیق کی جس کے بعد ملک میں اموات کی مجموعی تعداد 12 ہوئی۔

29 مارچ کو ملک میں 5 اموات کی تصدیق ہوئی، وزیرصحت سندھ نے صوبے میں کورونا وائرس سے متاثرہ 2 افراد کے انتقال کی تصدیق کی، دوسری طرف خیبر پختونخوا میں محکمہ صحت کے عہدیدار نے ایک 78 سالہ شخص کی موت کی تصدیق کی جبکہ بعد ازاں پنجاب اور گلگت بلتستان میں ایک، ایک موت ہوئی۔

اس بارے میں یہ بھی بتایا گیا کہ گلگت بلتستان سے فوت ہونے والا فرد ایک میڈیکل اسٹافر تھا اور وہ کورونا وائرس کی وجہ سے انتقال کرگیا، جس کے ساتھ ہی مجموعی اموات 17 تک پہنچ گئیں۔

30 مارچ ملک کی تاریخ میں اموات کے حساب سے کافی برا دن ثابت ہوا اور ایک روز میں 7 افراد زندگی کی بازی ہار گئے، جس کے بعد اموات 24 تک پہنچیں۔

ماہ مارچ کے آخری روز بھی 2 افراد اس وائرس کے باعث انتقال کرگئے اور اموات کی تعداد 26 ہوگئی۔

اپریل 2020

رواں ماہ اپریل میں وائرس سے ہونے والی اموات میں بہت زیادہ تیزی سے اضافہ ہوا اور ابھی تک کوئی بھی دن ایسا نہیں گزرا جس دن کسی شخص کا وائرس سے انتقال نہ ہوا ہو۔

یکم اپریل کو ملک میں 5 افراد اس وائرس کے باعث انتقال کرگئے جس سے مجموعی تعداد 31 ہوگئی۔

اگلے ہی روز یعنی 2 اپریل کو سندھ میں 2 اور خیبرپختونخوا میں ایک موت کی تصدیق ہوئی جس کے ساتھ ہی اموات کی مجموعی تعداد 34 تک جا پہنچی۔

3 اپریل کو گلگت بلتستان میں ایک مریض کے انتقال کی تصدیق ہوئی، بعد ازاں سندھ میں 3، خیبرپختونخوا میں 2 موت کی تصدیق ہوئی اور اموات 40 ہوگئیں۔

4 اپریل کو ملک میں مزید 4 افراد کورونا وائرس کا شکار ہو کر زندگی کی بازی ہار گئے۔

5 اپریل کو سندھ میں مزید ایک شخص وائرس کا شکار ہو کر چل بسا جس کے بعد خیبر پختونخوا حکام نے مزید 2 اموات کی تصدیق کی اور ملک میں اموات کی مجموعی تعداد 47 ہوگئی۔

6 اپریل کو پنجاب میں 3، سندھ میں 2 جبکہ اسلام آباد میں پہلی موت کی تصدیق کی گئی جس کے بعد مجموعی اموات کی تعداد 53 تک پہنچ گئی۔

7 اپریل کو سندھ، خیبرپختونخوا، بلوچستان اور پنجاب میں ایک ایک فرد انتقال کرگیا جس کے بعد مجموعی اموات 57 ہوگئیں۔

8 اپریل کو سندھ میں 2، خیبرپختونخوا میں ایک اور پنجاب میں بھی ایک مریض دم توڑ گیا جس کے ساتھ ہی ملک میں اموات 61 تک پہنچ گئیں۔

9 اپریل کو خیبرپختونخوا میں 24 گھنٹوں کے دوران پہلے 2 اور بعد ازاں رات گئے مزید 2 اموات کی تصدیق کی گئی جبکہ سندھ اور پنجاب میں ایک، ایک فرد انتقال کرگیا جس کے بعد پاکستان میں مجموعی اموات 67 ہوگئیں۔

10 اپریل کو خیبرپختونخوا میں 3، سندھ اور پنجاب میں ایک، ایک متاثرہ فرد جان کی بازی ہار گیا اور ان نئی 5 اموات کے ساتھ ہی وفات پانے والوں کی تعداد ** 72** تک پہنچ گئی۔

11 اپریل پاکستان میں اموات کے حساب سے ہلاکت خیز دن میں سے ایک تھا اور سندھ اور خیبرپختونخوا میں 6،6 اموات جبکہ پنجاب میں 2 اموات کے بعد مجموعی اموات کی تعداد 86 ہوگئی۔

12 اپریل کو سندھ میں 2، پنجاب میں 2 اور خیبرپختونخوا میں 3 اموات رپورٹ ہوئی جس سے ملک کی مجموعی اموات 93 تک پہنچ گئیں۔

ماہ اپریل کے 13ویں روز سندھ، پنجاب اور خیبرپختونخوا میں ایک، ایک موت رپورٹ ہوئی جس کے بعد مجموعی تعداد 96 ہوگئی۔

14 اپریل کو سندھ اور پنجاب میں میں کورونا وائرس کا شکار مزید 4، 4 افراد انتقال کرگئے جبکہ خیبرپختونخوا میں 3 لوگوں کی موت سے 11 نئی اموات سامنے آئی اور مجموعی اموات 107 تک پہنچ گئیں۔

15 اپریل کو سندھ میں 6 اور خیبرپختونخوا میں مزید 4 اموات ہوئیں جس کے بعد ملک میں اموات کی تعداد 117 ہوگئی۔

اگلے روز یعنی 16 اپریل کو پنجاب میں 7، سندھ میں 4، خیبرپختونخوا میں 3، بلوچستان میں 3 اموات کی تصدیق کے بعد ایک روز میں 17 اموات ریکارڈ کی گئیں جبکہ مجموعی تعداد 134 تک پہنچ گئی۔

17 اپریل کو خیبرپختونخوا میں 5، سندھ اور پنجاب میں 2، 2 اموات سامنے آنے سے ملک میں وفات بانے والوں کی مجموعی تعداد 143 ہوئی۔

18 اپریل کو سندھ میں ایک اور پنجاب میں 4 اموات رپورٹ ہوئیں جس کے بعد ملک میں اموات 148 تک پہنچیں۔

19 اپریل کو خیبرپختونخوا میں 10، سندھ میں 8، پنجاب اور اسلام آباد میں ایک، ایک موت کے بعد ملک میں ایک ہی روز میں 20 اموات سامنے آئیں، جس کے بعد مجموعی تعداد 168 تک پہنچ گئی۔

اپریل کے دوسرے عشرے کے آخری دن یعنی 20 تاریخ کو اب تک کی ایک روز کی سب سے زیادہ 24 اموات ریکارڈ کی گئیں۔

ان 24 اموات میں سے خیبرپختونخوا میں 14، سندھ میں 5، پنجاب میں 3، اسلام آباد اور بلوچستان میں ایک، ایک موت ہوئی جس کے بعد مجموعی تعداد 192 ہوگئی۔

21 اپریل کو بھی خیبرپختونخوا میں 6، پنجاب میں 6، سندھ میں 5 اموات کے ساتھ ہی ملک میں اموات کی تعداد 209 تک جاپہنچی۔

22 اپریل کو پنجاب میں 5، سندھ اور خیبرپختونخوا میں 3، 3 اموات کی تصدیق کی گئی ہے، جس کے بعد اموات کی تعداد 220 تک پہنچ گئی۔

23 اپریل کو پنجاب میں 9، سندھ میں 4، خیبرپختونخوا اور بلوچستان میں 2، 2 اموات کی تصدیق کی گئی، جس سے اموات کی مجموعی تعداد 237 ہوگئی۔

24 اپریل کو خیبرپختونخوا میں 4، پنجاب میں 3، سندھ اوربلوچستان میں 2، 2 اموات کے بعد ایک روز میں مزید 11 افراد کے انتقال کرجانے سے تعداد 248 تک جا پہنچی۔

25 اپریل کو خیبرپختونخوا میں 4، پنجاب میں 13، سندھ میں 3 کے بعد ایک روز میں 20 اموات کے بعد مجموعی تعداد 268 تک پہنچ گئی۔

اپریل کی 26 تاریخ کو اس وائرس کو 2 ماہ مکمل ہوئے اور اس روز سندھ میں 3، بلوچستان میں 3، خیبرپختونخوا میں 5 اموات سے ایک روز میں 11 نئی اموات سامنے آئیں اور مجموعی تعداد 279 ہوگئیں۔

27 اپریل کو خٰبرپختونخوا میں 6، سندھ میں 4، پنجاب میں 3 اور بلوچستان میں ایک موت کی تصدیق سے مجموعی تعداد 293 تک پہنچ گئی۔

28 اپریل کو ملک میں ریکارڈ 29 اموات ہوئیں اور پنجاب میں 11، خیبرپختونخوا میں 10، سندھ میں 7 اور اسلام آباد میں ایک موت کے بعد مجموعی اموات کی تعداد 322 تک پہنچ گئیں۔

بدھ 29 اپریل کو خیبرپختونخوا میں 8، سندھ میں 8 اور پنجاب میں 5 اموات کے ساتھ ملک میں مجموعی تعداد 343 تک جاپہنچی۔

اپریل کے آخری روز ملک میں اموات کی تعداد میں تو ریکارڈ 42 کا اضافہ ہوا تاہم اس میں 15 اموات کو گزشتہ کیسز سے خیبرپختونخوا میں ایڈجسٹ کیا گیا، یوں ملک میں ایک روز میں خیبرپختونخوا میں 24، سندھ میں 12 اور پنجاب میں 6 اموات بڑھنے سے مجموعی تعداد 385 تک پہنچ گئی۔

مئی 2020

یکم مئی کو خیبرپختونخوا میں 15، سندھ میں 6 اور بلوچستان میں 2 اموات ریکارڈ کی گئی جس کے بعد ملک میں 23 نئی اموات کے ساتھ مجموعی تعداد 408 ہوگئی۔

2 مئی کو خیبرپختونخوا میں 11، پنجاب میں 9، سندھ میں 4، بلوچستان میں 3 نئی اموات کے ساتھ ملک میں 27 اموات سامنے آئیں اور اس طرح مجموعی اموات کی تعداد 435 تک پہنچ گئی۔

3 مئی کو خیبرپختونخوا میں8، پنجاب میں 6، سندھ میں 8، بلوچستان میں 2 اموات ہوئیں جس کے بعد ایک روز میں 24 اموات کے بعد ملک میں یہ تعداد 459 تک ہوگئی۔

مئی کی 4 تاریخ کو پنجاب میں 15، سندھ میں 7، خیبرپختونخوا میں مزید 5 اموات کے بعد 27 اموات ایک روز میں سامنے آئیں اور مجموعی تعداد 486 تک پہنچ گئی۔

5 مئی کو سندھ میں 11، خیبرپختونخوا میں 9 اور پنجاب میں 8 اموات سے ساتھ ہی ایک روز میں 28 اموات سامنے آئیں جس کے بعد مجموعی تعداد 514 تک پہنچ گئی۔

6مئی کو پنجاب میں 12، سندھ میں 9، خیبرپختونخوا میں 9 اور بلوچستان میں ایک موت کے ساتھ 31 اموات سامنے آئیں، جس کے بعد مجموعی طور پر کورونا سے انتقال کرنے والوں کی تعداد 545 ہوگئی۔

7 مئی کو پنجاب میں 26، سندھ میں 14، خیبرپختونخوا میں 6 اور بلوچستان میں 2 اموات سے کُل 48 لوگوں کا انتقال ہوا جو ایک روز میں اب تک کی سب سے زیادہ تعداد ہے، جس کے بعد ملک میں مجموعی طور پر اموات کی تعداد 593 ہوگئی۔

8 مئی کو خیبرپختونخوا میں 12، سندھ میں 5 اور پنجاب میں ایک موت کے بعد 18 نئی اموات ہوئی اور مجموعی اموات کی تعداد 611 تک جا پہنچی۔

9 مئی کو خیبرپختونخوا میں 13، پنجاب میں 8 اور سندھ میں 4 اموات کے اضافے سے ایک روز میں 25 اموات ریکارڈ کی گئیں، جس کے بعد ملک میں وائرس سے جاں بحق افراد کی مجموعی تعداد 636 ہوگئی۔

10 مئی کو خیبرپختونخوا 11، سندھ 9، بلوچستان 2 جبکہ پنجاب، اسلام آباد اور گلگت میں ایک، ایک فرد کے انتقال کے بعد ایک روز میں 25 اموات ہوئی جبکہ مجموعی اموات 661 تک پہنچ گئیں۔

11 مئی کو خیبرپختونخوا میں 12، سندھ میں 11، پنجاب میں 5، بلوچستان اور اسلام آباد میں ایک، ایک موت کی تصدیق سے 30 اموات کا ایک ہی روز میں اضافہ ہوا، جس سے مجموعی اموات 691 ہوگئیں۔

12 مئی کو سندھ میں 18، پنجاب میں 14، خیبرپختونخوا میں 10 اور آزادکشمیر میں پہلی موت کے ساتھ ایک روز میں 43 اموات کا اضافہ ہوا جس سے اموات کی مجموعی تعداد 734 ہوگئی۔

13 مئی کو سندھ میں 16، خیبرپختونخوا میں 8 اور پنجاب میں 3 اموات کے اضافے سے ایک روز میں 27 اموات سامنے آئیں جس کے بعد ملک میں مجموعی اموات 761 تک پہنچ گئیں۔

مئی کی 14تاریخ کو سندھ، پنجاب اور خیبرپختونخوا میں 9، 9 اموات ہوئی جبکہ بلوچستان میں 3 لوگ لقمہ اجل بنے، اس طرح ایک روز میں مزید 30 اموات سے مجموعی تعداد 791 ہوگئی۔

15 مئی کو سندھ میں 12، پنجاب میں 11، خیبرپختونخوا میں 7، بلوچستان اور اسلام آباد میں ایک، ایک موت سے ایک روز میں 32 اموات کا اضافہ ہوا اور مجموعی تعداد 823 تک جاپہنچی۔

16 مئی کو سندھ میں 13، پنجاب میں 11،خیبرپختونخوا میں 14،بلوچستان میں 5 اموات کا اضافہ ہوا جس کے ساتھ ہی اموات کی مجموعی تعداد 866 ہوگئی۔

17 مئی کو سندھ میں 9، پنجاب میں 7، خیبرپختونخوا میں 13 اور بلوچستان میں ایک موت کے بعد کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کی مجموعی تعداد 896 ہوگئی۔

18 مئی کو خیبرپختونخوا میں 16، پنجاب میں 8، سندھ میں 3 اور بلوچستان میں 1 موت کے بعد ایک روز میں 28 اموات سامنے آئیں اور اس کے ساتھ ہی مجموعی تعداد 924 تک پہنچ گئی۔

مئی کی 19 تاریخ کو بھی پاکستان میں اموات کا سلسلہ جاری رہا اور سندھ میں 19، پنجاب میں 13، خیبرپختونخوا میں 11، اسلام آباد میں 2 اموات کے بعد ایک روز میں 45 اموات کا اضافہ ہوا اور ملک میں مجموعی اموات 969 تک پہنچ گئیں۔

20 مئی کو ملک میں 40 مزید اموات کی تصدیق ہوئی، جس میں سندھ اور پنجاب میں 17، 17 اموات ریکارڈ کی گئیں جبکہ خیبرپختونخوا میں 6 اموات ہوئیں، اس طرح ملک میں مجموعی اموات کی تعداد 1009 تک پہنچ گئی۔

21 مئی کو سندھ میں 20، خیبرپختونخوا میں 14، پنجاب میں 7، بلوچستان اور اسلام آباد میں ایک، ایک موت کے بعد ایک روز میں 43 اموات ہوئیں اور مجموعی تعداد 1052 ہوگئی۔

22 مئی کو سندھ میں 4، پنجاب میں 13، اسلام آباد میں 2، خیبرپختونخوا میں 16 افراد کی موت کے ساتھ 35 اموات ہوئیں جس کے بعد کورونا سے انتقال کرنے والوں کی مجموعی تعداد 1087 ہوگئی۔

23 مئی کو سندھ میں 14، پنجاب میں 14، خیبرپختونخوا میں 8 اموات کے ساتھ 36 اموات ہوئیں جس کے بعد ملک میں کورونا سے انتقال کرنے والے افراد کی مجموعی تعداد 1123 ہوگئی۔

24 مئی کو پاکستان میں مزید 33 افراد اس وائرس سے لقمہ اجل بنے جس میں سندھ میں 13، خیبرپختونخوا میں 9، پنجاب میں 8، اسلام آباد میں 2 اور بلوچستان میں ایک مریض کا انتقال شامل تھا، یوں ملک میں مجموعی اموات 1156 تک پہنچ گئیں۔

25 مئی کو خیبرپختونخوا میں 10، پنجاب میں 5، گلگت بلتستان میں 3، سندھ اور اسلام آباد میں 2،2 جبکہ بلوچستان اور اسلام آباد میں ایک، ایک فرد کا انتقال ہوا، اس طرح مزید 24 اموات سے یہ تعداد 1180 تک پہنچ گئی۔

26 مئی کو ملک میں 30 اموات سامنے آئیں جس میں پنجاب میں 15، خیبرپختونخوا میں 8، سندھ میں 5، اسلام آباد اور گلگت میں ایک، ایک موت ہوئی، یوں اموات کی مجموعی تعداد 1210 تک جاپہنچی۔

27 مئی کو پنجاب میں 10، خیبرپختونخوا میں 9، سندھ میں 6، آزاد کشمیر میں 2، اسلام آباد اور گلگت میں ایک ایک موت کی تصدیق ہوئی، اس طرح ایک روز میں مزید 29 اموات سے مجموعی تعداد 1239 تک پہنچ گئی۔

28 مئی کو پنجاب میں 19، سندھ میں 16، خیبرپختونخوا میں 7، اسلام آباد اور آزاد کشمیر میں ایک، ایک موت کے ساتھ ایک روز میں 44 اموات ہوئی اور مجموعی تعداد 1283 تک پہنچ گئی۔

ملک میں اموات کی صورتحال کچھ اس طرح ہے۔


مرتب کردہ: محمد بلال خان

ہیڈر تصویر: بشکریہ نیویارک ٹائمز